Sunday, Aug 25th

Last update12:39:09 AM GMT

پھول بیچنے والے پاکستانی کی حالت نازک ہے

روم۔ 15 جنوری 2013 ۔۔۔۔ ہفتے کی رات کو بریشیا کے نواح Bedizzoleمیں ایک پھول بیچنے والے پاکستانی کو ریسٹورنٹ کے ایک گاہک نے اس لیے مارا پیٹا ہے کیونکہ اس نے اپنے پھول بیچنے کے لیے گاہک کو تنگ کیا تھا ۔ پاکستانی کی عمر 50 سال ہے اور پولیس نے اس کے نام کے پہلے حروف  H.O.Jلکھے ہیں ۔ واقع کے مطابق ریسٹورنٹ کا گاہک جو کہ ایک رومانیا کا شہری ہے ، کھانے کے بعد ریسٹورنٹ Due Cigniسے نکلا اور اس نے کافی شراب پی رکھی تھا اور نشے میں تھا ۔ پاکستانی نے ریسٹورنٹ کی پارکنگ میں اس گاہک کو اپنے پھول خریدنے کے لیے کہا اور اسکے بعد گاہک نے اسے مارنا شروع کردیا ۔ پاکستانی زمین پر گر گیا اور اسکے ناک  اور سر سے خون نکلنا شروع ہو گیا ۔ اسکے بعد رومانیا کے شہری نے مزید ٹانگوں اور مکوں سے اتنا مارا کہ پاکستانی بیہوش ہو گیا ۔ اسی اثنا میں ریسٹورنٹ کے گاہک باہر آگئے اور انہوں نے رومانین کو دور کرتے ہوئے پولیس اور ایمبولینس کو بلالیا ۔ رومانین دور سے بھی ہوا میں گالی گلوچ کرتا رہا ۔ ایمبولینس نے ابتدائی طبعی امداد کے بعد پاکستانی کو ہسپتال شفٹ کر دیا اور پولیس نے رپورٹ بنانے کے بعد رومانین کو گرفتار کر لیا ۔ پاکستانی Rezzatoمیں آباد ہے اور اٹلی میں ریگولر پرمیسو دی سوجورنو کے ساتھ رہ رہا ہے ، اسکے رشتہ دار اور دوست بھی پھول بیچنے یا عارضی کام کرتے ہوئے وقت گزار رہے ہیں ۔ پولیس نے بتایا کہ  ریسٹورنٹ کے دوسرے گاہکوں کی گواہی کے مطابق پاکستانی نے رومانین کو پھول بیچنے کے لیے بالکل تنگ نہیں کیا تھا ۔ عام طور پر یہ لوگ کام نہ  ہونے کیوجہ سے اور گزارہ کرنے کے لیے ریسٹورنٹ اور باروں میں جا کر گاہکوں کو پھول خریدنے کی دعوت دیتے ہیں اور انکی نہ کرنے پر دوسرے ٹیبل پر چلے جاتے ہیں ۔ پولیس نے بتایا کہ رومانیہ کا شہری او بی عمر 34 سال Sant'Angelo Lodigianoہے اور کنسٹرکشن کی فرم میں مزدوری کرتا ہے اور اٹلی میں ریگولر طریقے سے آباد ہے ۔ ہسپتال میں پاکستانی . H.O.J.کی حالت نازک ہے کیونکہ اسکے دماغ کے اندر خون بہہ رہا ہے اور اسکے سر کی ہڈی بھی ٹوٹ گئی ہے ۔ ڈاکٹروں نے اسکی حالت تشویش ناک قرار دیتے ہوئے رومانین کو جیل میں بند رکھنے کی رپورٹ دی ہے ۔ ہم تمام پاکستانی . H.O.J.کی صحت یابی کے لیے خدائے باری تعالی کے حضور دعا کرتے ہیں ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com