Sunday, Oct 13th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

قومی خبریں

روم میں عید میلادالنبی کا جلوس

روم۔ 27 جنوری 2013 ۔۔۔۔ آج صبح روم کے ساحلی قصبے لوینیو میں پاکستانی کمونٹی کی جانب سے عید میلادالنبی کا جلوس نکالا گیا ، اس میں روم کے علاوہ مارکے، امیلیا رومانیا، لومبردیا اور انگلینڈ سے عاشقان رسولۖ نے شرکت کی اور ایمان کے جذبے کو بلند کیا۔ لوینیو میں کسی مسئلے کے بغیر مسلمانوں کو جلوس کی اجازت فراہم کر دی گئی ۔ جلوس شہر کے سنٹر میں گھومتا ہوا سنٹرل ریلوے اسٹیشن پر پہنچا اور یہاں مفکر اسلام نے حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی عقیدت میں تقاریر کیں ۔ آخر میں مسجد فیضان مدینہ اور انتظامیہ کی جانب سے لنگر تقسیم کیا گیا ۔ اس جلوس میں 500 کے قریب مسلمانوں نے شرکت کی ، جس میں پاکستانی اکثریت میں تھے ۔ انتظامیہ میں  چوہدری محمد سرفراز، ظہیر اختر، خرم شہزاد، رضا سعید، طاہر کیانی، خالد کیانی، افتخار کیانی، شیخ تنویر کے علاوہ دوسرے معزز حضرات شامل تھے ۔ یاد رہے کہ لوینیو میں پاکستانی کمونٹی کی کافی تعداد آباد ہے اور یہاں ہر سال پاکستان اور اسلام کو متعارف کروانے کے لیے تہوار منعقد کیے جاتے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

یونان میں شہزاد لقمان کو نسل پرستوں نے قتل کردیا

روم۔ 25 جنوری 2013 ۔۔۔ یونان کے شہر ایتھنز میں ایک پاکستانی لقمان شہزاد کو دو نازی یا نسل پرست یونانی نوجوانوں نے گزشتہ جمعرات یے دن  قتل کردیا ہے ۔ یاد رہے کہ یونان کا دیوالیہ ہونے کے بعد الیکشنوں میں شدت پسند دائیں بازو کی جماعت Alba Dorataنے 10 فیصد ووٹ حاصل کیے ہیں ۔ لقمان سائکل پر کام پر جا رہا تھا ، اسی اثنا میں 2 جوان عمر 25 سال اور 29 سال ایک موٹر سائیکل پر سوار اسکے قریب آئے اور انہوں نے چھریاں مارتے ہوئے لقمان کو قتل کردیا ۔ ایک ٹیکسی ڈرائیور نے انکی موٹر سائیکل کی نمبر پلیٹ پڑھ لی اور پولیس کو بتا دیا ۔ پولیس نے دونوں کو گرفتار کرلیا ہے ۔ پورے یونان میں پاکستانی کمونٹی میں خوف و حراس پھیل گیا ہے اور انہوں نے نسل پرستی کے خلاف ایک جلوس بھی نکالا ہے ، جس میں 5 ہزار سے زائد یونانی اور دوسرے ممالک کے افراد نے شرکت کی ہے ۔ اس جلوس کی فلم دیکھنے کے لیے یہاں کلک کریں ۔

http://youtu.be/k6FeRUfIvWI

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

منگیتر کومارنےپیٹنے کے جرم میں سید عمران علی گرفتار

روم۔ 17 جنوری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کے جزیرے سسلی کے شہر راگوزا میں ایک پاکستانی سید عمران علی شاہ کو اپنی منگیتر کے ساتھ لڑائی مار کٹائی کرنے کے جرم میں گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ سید عمران کی عمر 23 سال ہے اور وہ اٹلی میں سیاسی پناہ حاصل کرتے ہوئے رہائش پذیر تھا اور کوئی کام نہیں کرتا تھا ۔ کل رات عمران اپنی اٹالین منگیتر اور ایک دوست کے ساتھ چاڈ ملک کی فلم دیکھ رہا تھا ، عمران علی شاہ کے ساتھ اس کا ایک افریقن دوست بھی موجود تھا ۔ ان دونوں نے وڈکا شراب کی ایک بوتل پی رکھی تھی ۔ اسی اثنا میں منگیتر کے منہ سے خدا کے بارے میں کوئی ایسا لفظ استعمال ہو گیا جو کہ عمران علی شاہ کو پسند نہ آیا تو اس نے شراب کی بوتل توڑتے ہوئے اسے مارنے کی کوشش کی ۔ لڑکی ایک کمرے میں دوڑ گئی اور اس نے دروازہ بند کرلیا ۔ عمران نے بوتل توڑتے ہوئے اپنا ہاتھ زخمی کر لیا اور جب افریقن دوست نے اسے بعض کرنے کی کوشش کی تو وہ بھی زخمی ہو گیا ۔ لڑکی نے موبائل کے زریعے پولیس بلا لی ۔ جب پولیس گھر میں داخل ہوئی تو وہاں چند چیزیں ٹوٹی ہوئی تھیں ۔ پولیس نے لڑکی کو بچا لیا اور دونوں غیر ملکیوں کو تھانے میں لے گئی ، انکی شناخت وغیرہ کی گئی اور انکی مرحم پٹی کرنے کے بعد انہیں آزاد کردیا گیا ۔ اسی اثنا میں لڑکی دوسرے گھر میں ایک دوست کے ہاں چلی گئی ۔ عمران شاہ نے تھانے سے باہر آتے ہوئے لڑکی کو دوبارہ تلاش کرنا شروع کردیا اور اس گھر میں پہنچ گیا ، جہاں لڑکی نے پناہ لے رکھی تھی ۔ بلڈنگ کا گیٹ بند دیکھ کر عمران نے نشے کی حالت میں بلڈنگ پر پتھر مارنے شروع کردیے اور چند شیشے ٹوٹ گئے ۔ اس حادثے کے بعد پولیس کو دوبارہ بلالیا گیا ۔ اس بارے پولیس دوبارہ وہاں آگئی ، عمران نے پولیس والوں کو بھی مارنا شروع کردیا لیکن کافی گتھمگتھا کے بعد پولیس نے اسے ہتھکڑی لگا دی اور جیل میں روانہ کردیا ۔ سید عمران شاہ پر لڑائی مار کٹائی اور پولیس پر ہاتھ اٹھانے کا کیس کردیا گیا ہے ۔ تصویر میں سید عمران علی شاہ

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

پھول بیچنے والے پاکستانی کی حالت نازک ہے

روم۔ 15 جنوری 2013 ۔۔۔۔ ہفتے کی رات کو بریشیا کے نواح Bedizzoleمیں ایک پھول بیچنے والے پاکستانی کو ریسٹورنٹ کے ایک گاہک نے اس لیے مارا پیٹا ہے کیونکہ اس نے اپنے پھول بیچنے کے لیے گاہک کو تنگ کیا تھا ۔ پاکستانی کی عمر 50 سال ہے اور پولیس نے اس کے نام کے پہلے حروف  H.O.Jلکھے ہیں ۔ واقع کے مطابق ریسٹورنٹ کا گاہک جو کہ ایک رومانیا کا شہری ہے ، کھانے کے بعد ریسٹورنٹ Due Cigniسے نکلا اور اس نے کافی شراب پی رکھی تھا اور نشے میں تھا ۔ پاکستانی نے ریسٹورنٹ کی پارکنگ میں اس گاہک کو اپنے پھول خریدنے کے لیے کہا اور اسکے بعد گاہک نے اسے مارنا شروع کردیا ۔ پاکستانی زمین پر گر گیا اور اسکے ناک  اور سر سے خون نکلنا شروع ہو گیا ۔ اسکے بعد رومانیا کے شہری نے مزید ٹانگوں اور مکوں سے اتنا مارا کہ پاکستانی بیہوش ہو گیا ۔ اسی اثنا میں ریسٹورنٹ کے گاہک باہر آگئے اور انہوں نے رومانین کو دور کرتے ہوئے پولیس اور ایمبولینس کو بلالیا ۔ رومانین دور سے بھی ہوا میں گالی گلوچ کرتا رہا ۔ ایمبولینس نے ابتدائی طبعی امداد کے بعد پاکستانی کو ہسپتال شفٹ کر دیا اور پولیس نے رپورٹ بنانے کے بعد رومانین کو گرفتار کر لیا ۔ پاکستانی Rezzatoمیں آباد ہے اور اٹلی میں ریگولر پرمیسو دی سوجورنو کے ساتھ رہ رہا ہے ، اسکے رشتہ دار اور دوست بھی پھول بیچنے یا عارضی کام کرتے ہوئے وقت گزار رہے ہیں ۔ پولیس نے بتایا کہ  ریسٹورنٹ کے دوسرے گاہکوں کی گواہی کے مطابق پاکستانی نے رومانین کو پھول بیچنے کے لیے بالکل تنگ نہیں کیا تھا ۔ عام طور پر یہ لوگ کام نہ  ہونے کیوجہ سے اور گزارہ کرنے کے لیے ریسٹورنٹ اور باروں میں جا کر گاہکوں کو پھول خریدنے کی دعوت دیتے ہیں اور انکی نہ کرنے پر دوسرے ٹیبل پر چلے جاتے ہیں ۔ پولیس نے بتایا کہ رومانیہ کا شہری او بی عمر 34 سال Sant'Angelo Lodigianoہے اور کنسٹرکشن کی فرم میں مزدوری کرتا ہے اور اٹلی میں ریگولر طریقے سے آباد ہے ۔ ہسپتال میں پاکستانی . H.O.J.کی حالت نازک ہے کیونکہ اسکے دماغ کے اندر خون بہہ رہا ہے اور اسکے سر کی ہڈی بھی ٹوٹ گئی ہے ۔ ڈاکٹروں نے اسکی حالت تشویش ناک قرار دیتے ہوئے رومانین کو جیل میں بند رکھنے کی رپورٹ دی ہے ۔ ہم تمام پاکستانی . H.O.J.کی صحت یابی کے لیے خدائے باری تعالی کے حضور دعا کرتے ہیں ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

میلانو میں ہنڈی کا گروہ گرفتار

روم۔ 4 جنوری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کے شمالی شہر میلانو میں ایک پاکستانی کو ہنڈی اور منشیات کی اسمگلنگ کے جرم میں گرفتار کر لیا ہے ۔ پولیس نے اس پاکستانی کا نام نہیں لکھا لیکن انکی تفتیش کے مطابق اسکے ساتھ دوسرے پاکستانی اور مراکش کے غیر ملکی شامل ہیں ۔ پاکستانی کو جمعہ کے روز اس وقت گرفتار کیا گیا ہے ، جب وہ پاکستان سے مالپنسا ائرپورٹ کے زریعے اٹلی میں داخل ہو رہا تھا ۔ اٹلی کی ٹیکسوں کی پولیس Guardia di Finanzaنے اس گینگ کے بارے میں تفتیش کی ہے ۔ اس پاکستانی پر الزام ہے کہ اس نے اٹلی کے فنانس کے سسٹم کی خلاف ورزی کی ہے اور رقم کی غیر قانونی منتقلی میں کردار ادا کیا ہے ۔ پبلک پروسیکیوٹر Ennio Ramondiniنے ٹیکسوں کی پولیس کے تعاون سے گینگ کے سرغنہ کو گرفتار کیا ہے ۔ یہ پاکستانی اٹلی سے غیر قانونی طور پر رقم حاصل کرتے ہوئے پاکستان روانہ کرتا تھا اور غیر قانونی کاروبار کرتا تھا ۔ اٹلی میں ہنڈی یا ہوالہ کا کاروبار غیر قانونی ہے ۔ اس کے علاوہ یہ گروہ پاکستان سے ہیروئن اسمگل کرتے ہوئے میلانو کی مارکیٹ میں پاکستانیوں اور مراکش کے شہریوں کے زریعے فروخت کرتا تھا ۔ گروہ کے افراد ہیروئن ہالینڈ کے زریعے اٹلی میں لاتے تھے اور 31 مئی 2010 میں میلانو کے ائر پورٹ مالپنسا پر انکی ہیروئن پکڑی گئی تھی ۔ اس کیس کے سلسلے میں میلانو، مونزا، تورینو اور بیرگامو  کے صوبوں میں پاکستانیوں کے گھروں پر چھاپے مارے جا رہے ہیں ۔ پاکستانی کے گھر سے 26 ہزار یورو کی رقم پکڑ لی گئی ہے اور گروہ کی اڑھائی لاکھ سے زائد کی پراپرٹی زیر تفتیش آگئی ہے ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com