Monday, Nov 11th

Last update12:39:09 AM GMT

پاکستان کی مصنوعات پر کسٹم ڈیوٹی ختم کی جائے ، ترونکونی

روم۔ یکم اکتوبر 2012 ۔۔۔۔ اٹلی کی چیمبر آف کامرس کے سٹائل و ڈیزائنگ کے صدر Michele Tronconiنے کہا ہے کہ پاکستان کی مصنوعات پر کسٹم ڈیوٹی ختم کی جائے۔ آئندہ چند دنوں بعد یورپین پارلمینٹ میں پاکستان کی مصنوعات پر کسٹم ڈیوٹی پر بحث شروع ہونی والی ہے ، اس موقع پر ترونکونی نے تمام اٹالین یورپین اراکین کو ایک خط لکھتے ہوئے گزارش کی ہے کہ وہ پاکستان کی مصنوعات پر کسٹم ڈیوٹی کو ختم کروانے کے حق میں ووٹ دیں ، کیونکہ اگر پاکستان کے خلاف ووٹ دیا گیا تو اٹالین ٹیکسٹائل اور ملبوسات کی فرموں کو مزید بحران کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ انہوں نے کہا کہ اٹالین معیشت فنانس کے بحران کیوجہ سے بدتر ہوتی جارہی ہے اور موجودہ معاشی بحران انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے ۔ یورپین کسٹم ڈیوٹی کے باوجود پاکستان ٹیکسٹائل اور یورپین کوالٹی کے ملبوسات یورپ میں درآمد کرنے میں اہم کردار ادا کررہا ہے اور غیر یورپین ممالک جو کہ یورپ میں ٹیکسٹائل کی امپورٹ کرتے ہیں ، ان میں پاکستان کا نام سرفہرست ہے ۔ غیر یورپین ممالک جو کہ یورپ میں ٹیکسٹائل کی امپورٹ کرتے  ہیں ان میں 40 فیصد مصنوعات پاکستان میں بنتی ہیں۔ پاکستان کا کوٹہ 80 فیصد ہے لیکن آخری سالوں میں پاکستان سے غیر مساوی سلوک کیا گیا ہے  ۔ اس لیے پاکستان پر کسٹم ڈیوٹی صفر کرتے ہوئے ، اس ملک کے بزنس مینوں کو اجازت دینی چاہئے کہ وہ آزادی کے ساتھ یورپ اور خاص طور پر اٹلی میں اپنا سامان امپورٹ کرتے ہوئے یورپ کے بحران کو کم کرنے کی کوشش کریں ۔ یورپین پارلیمنٹ نے عہد کیا تھا کہ وہ پاکستان میں گزشتہ سیلاب زدگان کی مدد کرنے کے لیے کسٹم ڈیوٹی میں کمی کرنے کا فیصلہ کرے گی ۔ یورپین اسمبلی نے سیلاب زدگان کے لیے 400 ملین یورو کی امداد روانہ کی تھی ، اس لیے ان کا کوئی جواز نہیں بنتا کہ یہ اس ملک کی مصنوعات پر ناجائز کسٹم ڈیوٹی رائج کریں ۔ پاکستان میں ٹیکسٹائل کی ایکسپورٹ کی بڑی فرمیں موجود ہیں جو کہ سال میں 200 ملین یورو کا کاروبار دنیا سے کرتی ہیں ، جبکہ اٹلی میں ایسی بڑی فرمیں مدت سے بند ہوچکی ہیں ۔ پاکستان کی مصنوعات پر کسٹم ڈیوٹی ختم کرنے سے اٹالین معیشت کو فائدہ ہوگا کیونکہ ہمارے پاس انڈسٹری ہے اور پاکستان میں کاٹن موجود ہے ، اسکے علاوہ پاکستان میں ایسے ملبوسات بنتے ہیں جو کہ کسٹم کے بغیر اٹلی کی دکانوں میں دوبارہ رونق واپس لیکر آسکتے ہیں ۔ یورپ کے کئی ممالک میں مینوفیکچرنگ کی فرمیں بند ہوچکی ہیں ، اس لیے ضروری ہے کہ ہم پاکستان پر ڈیوٹی ختم کریں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تجارتی تعلقات مضبوط بنانے سے اٹلی کے لیے بھی ایک نئی مارکیٹ کے دروازے کھلیں گے ۔ تصویر میں میکیلے ترونکونی

alt

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com