Friday, Feb 22nd

Last update12:39:09 AM GMT

پاکستانی کو دوبارہ ملک بدری کا نوٹس

altروم۔ 16 اکتوبر 2012 ۔۔۔ اٹلی کے شہر فرارا میں ایک پاکستانی کو ملک بدری کا دوبارہ نوٹس اس لیے جاری کیا گیا ہے کیونکہ اسے بلونیا شہر کی پولیس نے جعلی کام کرنے اور اسٹیٹ کے ساتھ فراڈ کرنے کے جرم میں ملک بدر کردیا تھا ۔ اس پاکستانی کی عمر 33 سال ہے اور اسے جب ملک بدر کیا گیا تھا تو یہ اسکے بعد اسلام آباد کی اٹالین ایمبیسی سے ویزہ حاصل کرتے ہوئے دوبارہ اٹلی میں داخل ہو گیا تھا ۔ اس نے ایمبیسی کے حکام کو یہ نہیں بتایا تھا کہ وہ اٹلی سے ملک بدر ہوچکا ہے ۔ خیر یہ پاکستانی دوبارہ ویزہ حاصل کرتے ہوئے اٹلی آگیا اور اس نے فرارا شہر کی امیگریشن پولیس سے اپنی سوجورنو حاصل کرنے کے لیے درخواست دیدی ۔ پولیس نے جب چھان بین کی تو پتا چلا کہ اس پاکستانی نے قانون شکنی کی ہے ۔ اس پاکستانی کا حق تھا کہ یہ دوبارہ ویزہ حاصل کرنے کے لیے وزارت داخلہ کی اجازت حاصل کرتا ۔ قانون کے مطابق جس غیر ملکی کو ملک بدر کیا جاتا ہے ، اسے 10 سال کے لیے اٹلی میں دوبارہ داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوتی لیکن اس پاکستانی نے کسی دوسرے نام سے داخل ہوکر دوبارہ اٹلی میں سکونت اختیار کرنے کی کوشش کی ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com