Tuesday, Nov 19th

Last update12:39:09 AM GMT

ترینتینو کو دو دفع چیمپئن بننے کا اعزاز

روم، 22 اکتوبر 2012 ۔ تحریر، وسیم اصغر ۔۔۔۔۔۔ ترینتینو کی کرکٹ ٹیم نے اٹلی میں دو دفع چیمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا ہے ۔ اٹلی کے شمالی پہاڑی علاقے ترینتینو میں ایک ایسی کرکٹ کی ٹیم موجود ہے جو دن رات پچ پر محنت کرنے کے بعد اٹلی کی اور یورپ کی چیمپئن بن کر ابھری ہے ۔ ہماری ٹیم اور کلب کا سب سے بڑا اصول ہے کہ ہم نے جوانوں کو طاقت ور اور توانا بنانا ہے اور کرکٹ کے زریعے انٹیگریشن یا میل و ملاپ کا رشتہ قائم کرنا ہے ۔ ہماری انڈر 19 نے اٹلی کی چیمپئن شپ جیتتے ہوئے پورے اٹلی میں نہ صرف نام پیدا کیا ہے بلکہ اس جیت کے بعد اس ملک میں کرکٹ کو بہت مقبولیت حاصل ہوئی ہے ۔ ہم 2009 میں چوتھی پوزیشن اور 2010 میں تیسری پوزیشن حاصل کر چکے ہیں ۔ ہمارے کھلاڑی ہمارا پیلا اور نیلاٹریک سوٹ پہن کر فخر محسوس کرتے ہیں ۔ ہمارے ہونہار کھلاڑیوں میں دو بھائی سر فہرست ہیں ، جن کا فیملی نام اصغر ہے ۔ چھوٹے کا نام وقاص اصغر ہے ، جس نے تین سال قبل انڈر 15 کی قومی کرکٹ ٹیم میں اپنے کھیل کے جوہر دکھائے تھے اور اٹلی نے اپنی تاریخ کا سب سے پہلا یورپین کرکٹ ٹورنامنٹ جیتا تھا ۔ اٹلی کے تمام سیاست دانوں اور ابلاغ عامہ نے انکی تعریف میں قصیدے پڑھے تھے اور انہیں فوری طور پر اٹالین قومیت دینے کا نعرہ لگایا تھا ۔ اس سال وقاص کو وظیفہ جاری کیا گیا ہے اور اب وہ انگلینڈ میں تعلیم حاصل کر رہا ہے ۔ انگلینڈ کرکٹ کا گھر تصور کیا جاتا ہے ۔ ہمارے کرکٹرزیادہ تر پاکستانی ہیں اور مکس اٹالین اور اردو بولتے ہیں ۔ عام طور پر یہ گجرات، راولپنڈی، لاہور اور سیالکوٹ سے تعلق رکھتے ہیں ۔ یاد رہے کہ پاکستان کے ان شہروں میں کرکٹ مقبول ترین کھیل ہے ۔ ہم نے پچھلے سال بریشیا کی ٹیم لائنز سے 28 سالہ کھلاڑی حاصل کیا ہے ، جن کا نام محمد رضوان ہے اور وہ کامیاب بیٹس مین ہیں ۔ اسکے بعد ہمارے اعلی ترین کھلاڑی عطیق انور کا تعلق سیالکوٹ سے ہے اور انکی عمر 37 سال ہے ، وہ ترینتینو میں 2 سال سے آباد ہیں اور ہمارے عمدہ ترین پلیئر تصور کیے جاتے ہیں۔  قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان شعیب ملک کے ساتھ ایک ہی ٹیم میں عطیق اپنے ہنر کا کمال پیش کر چکے ہیں ۔ محمد عمران بھی بریشیا کی ٹیم لائنز سے تشریف لائے ہیں اور فاسٹ بالر ہونے کے باعث ٹیم کا ستون سمجھے جاتے ہیں ۔ علاؤالدین بھی اٹلی کی قومی کرکٹ ٹیم کے لیڈر ہیں اور کچھ عرصہ کی علالت کے بعد اب دوبارہ کھیل کے میدان میں آچکے ہیں ۔ جب ہم نے جینووا کے خلاف ۔ چمیپئن شپ حاصل کی تو ہماری ٹیم کے کھلاڑیوں میں یہ ہیرو موجود تھے ۔

TRENTINO – GENOA

TRENTINO: Alaud; Fida; Bhatti; Anwar; Waqas Asghar; Rizwan; Ilyas; Imran; Ahmed; Naveed; Khan; Waseem Asghar.

alt

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com