Sunday, Jan 20th

Last update12:39:09 AM GMT

آج روم میں پاکستانی اور بنگالی سیاسی پناہ گزین نے جلوس کا انعقاد کیا

روم۔ 21 دسمبر 2012 ۔۔۔۔ آج روم کے سنٹر کے سکوائر سانتے آپوستلی میں 50 کے قریب پاکستانی اور بنگالی سیاسی پناہ گزینوں نے جلوس کا انعقاد کیا ۔ انہوں نے بینر اٹھا رکھے تھے ، جس پر انگلش اور اٹالین میں یہ لکھا ہوا تھا کہ ہمارے انسانی حقوق پامال کیے جا رہے ہیں ۔ ہمیں ایک سنٹر میں رکھا گیا ہے لیکن سیاسی پناہ دینے سے انکار کردیا گیا ہے ، اسکے برعکس دوسرے ممالک کے غیر ملکیوں کو سیاسی پناہ اور انسانی ہمدردی کی سوجورنو جاری کی جا رہی ہے ۔ جلوس کے اراکین نے کہا کہ روم کا سیاسی پناہ کا کمیشن پاکستانی اور بنگلہ دیشی غیر ملکیوں سے امتیازی سلوک کر رہا ہے اور اسی سلسلے میں ہم نے تنگ آکر جلوس نکالنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم سب لیبیا سے فرار ہو کر اٹلی میں داخل ہوئے ہیں اور ہمارا حق ہے کہ ہمیں سیاسی پناہ دی جائے ۔ کمیشن کی طرف سے دو خواتین نے جلوس کے اراکین سے ملاقات کی اور انہیں پہلے تو پولیس کی دھمکی دی اور بعد میں جب انہوں نے یہ دیکھا کہ جلوس میں شرکت کرنے والے پاکستانی اور بنگالی اپنے حقوق کی جنگ کے لیے پولیس سے نہیں ڈرتے تو انہوں نے 27 دسمبر کی ملاقات کا وقت دیدیا ۔ محاجرین نے کہا کہ کمیشن والے ایسی ملاقاتوں کا وقت کئی بار دے چکے ہیں لیکن اس پر عمل نہیں کیا جاتا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم انسان ہیں اور ہم بھیک نہیں بلکہ اپنا حق مانگ رہے ہیں ۔ ہم سول سوسائٹی سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ ہماری مدد کریں ۔ انسانی ہمدردی کے لیے کام کرنے والی تمام ایسوسی ایشنوں سے ہماری اپیل ہے کہ وہ ہماری مدد کریں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com