Monday, Aug 19th

Last update12:39:09 AM GMT

منہاج القرآن پیرس کا اجلاس


۳۱مئی ۲۰۱۳جمعے کی شام ، آٹھ بجے پیرس کے مضافاتی علاقے لا کورنیو میںمنہاج القران پیرس ،فرانس کے زیرِ اہتمام ایک خوبصورت شام حضورﷺکی شان میںہدیہ عقیدت پیش کرنے کے لیئے مختص کی گئی۔ تقریب کے مہمان خصوصی صاحبزادہتسلیم احمد صابری تھے اور اس تقریب میں دو مشہور ومعروف اور عالمی شہرتیافتہ نعت خواں بھی تشریف لائے شہباز قمر فریدی پاک پتنوی اور محمد قدیراحمد خان جو بارسلونا سپین سے تشریف لائے۔
استقریب کا اہتمام پیرس میں منہاج القران کے لا کورنیو سیٹر ریو پریویتے لاکورنیو میں کیا گیا۔ ہال کی دونوں منازل کو بڑی خوبصورتی سجایا گیا۔ نچلیمنزل مردوں اور میڈیاء کے لیئے مختص تھی اور اوپر والی منزل عورتوں اوربچوں کے لیئے تھی اور اسی ہال کے ایک کونے میں راؤ خلیل احمد نے جو کہمنہاج القران فرانس کے میڈیاء کورڈینیٹر اور صدر بھی ہیں پریس والوں کےلیئے مختص کی ہوئی تھی جہاں انہیں انتہائی عزت و تکریم سے بٹھایا گیاتھا۔جن میں راؤ خلیل احمد، زاہد مصطفی ، بابر مغل ، سرفراز بیگ اور دیگرشرکاء موجود تھے۔
تقریبکا آغاز تلاوت کلامِ پاک سے ہوا ۔ اس کے بعد عاشقانِ رسول نے حضور ﷺکیعقیدت میں نعت کی صورت میں تعریف و توصیف کا سلسلہ شروع کیا۔ سب سے پہلےتصور ساغر نے ہدیہ عقیدت پیش کیا جو سارسل سے تشریف لائے تھے۔ حاضرین مجلسنے ان کی نعت کو بہت توجہ سے سنا اور اس کے بعد سٹیج سیکریٹری سفیان اسلمنے چنداشعار کے ساتھ ایک ننھے مجاہد کو دعوت دی کہ وہ آکرکے حضور ﷺکی شانمیں نعت رسولِ مقبو ل پیش کریں۔ ننھے نعت خواں کی نعت سن کر حاضرینِ مجلسنے دل کھول کر داد دی اور سبحان اللہ کے آوازوں سے دونوں ہال گونج اٹھے۔ اسکے بعد سفیان اسلم نے جو کہ منہاج القران کے جوائنٹ سیکریٹری بھی ہے دعوتکلام منصور علی بٹ کو دی اور اس کے ساتھ ساتھ یہ سلسلہ جاری رہا۔ اسرار نعتپڑھنے آئے۔ جب زاہد محمود چشتی حضور ﷺکی شان میں ہدیہ عقیدت پیش کرنے آئےتو سارے ہال میں خاموشی طاری ہوگئی۔ ان کی آواز میں اتنا درد تھا بالکلایسا لگتا تھا ان کی آواز لا کورنیو کی گلیوں سے ہوتی ہوئی مدینے تلک پہنچرہی ہے۔ انہوں اس خوبصورتی سے نعت پیش کی سب لوگوں کا دل یہی چاہ رہا تھایہ مزید عقیدت کے پھول نچھاور کریں لیکن وقت کی کمی کے باعث وہ
مزیدکچھ نہ پیش نہ کرسکے لیکن کافی دیر تک ان نعت لوگوں کے دماغ میں گونجتیرہی اور سننے والوں کے دل و دماغ پے ایک ایسا گہرا عکس چھوڑ گئی کہ وہ بعدمیں کبھی خاموش بیٹھے گیں اور اس کی یاد آئے گی تو اس کو یاد کرکے لطفاندوز ہوں گے ۔ اس کے بعد اسلم ، سید شبیر حسین شاہ، علامہ رازق حسین(جو کہسارسل سے تشریف لائے) نے حضور ﷺکی شان میں عقیدت کے پھول نچھاور کیئے۔قاری محمد نعیم ، محمد نعیم اور عامر نعیم نے بہت خوبصورت اور سادہ اندازمیں نعت رسولِ مقبول پیش کیں۔
نعتخوانی کے دوران مہمانِ گرامی تشریف لائے جن میں مہمانِ خصوصی صاحبزادہتسلیم احمد صابری جن کا تعلق کیو ٹی وی سے ہے، شہاز قمر فریدی جو کہپاکستان کے صفِ اول کے نعت خوانوں میں شمار کیئے جاتے ہیں۔ جنھوں نے ۲۳دسمبر کو علامہ طاہر القادری کی شان میں ایک ترانہ بھی پیش کیا تھا اورپوری دنیا میں اپنی آواز کا لوہا منوایا تھا، عبدالقدیر خان جن کا تعلقسپین کے شہر باسلونا ہے تشریف لائے۔ اس کے علاوہ شبیر احمد اعوان صدر منہاجالقران، قاضی محمد ہارون جنرل سیکریٹری،
حافظاقبال عظیم ڈائیریکٹرمنہاج القران یورپ سٹیج پر تشریف لائے اور ہال میںموجود سب لوگوں نے اس کا پر زور خیر مقدم کیا۔ ہال میں موجود احمد نے جو کہڈائی ہارڈ قسم کے جیالے ہیں گاہے گاہے کھڑے ہوکر حاضرین مجلس میں اپنی جگہپے کھڑے ہوکر شہادت کی اٹھا کر لوگوں کے جذبات کو گرمانے کے اپنی پرزورآواز میں نعرہ بلند کرتے اور کھڑے کھڑے ایک چکر سالگاتے اور ان کے نعرے کیگونج اس طرح ہوتی جیسے گھمسان کا رن پڑا ہے اور عساکر کی حوصلہ افزائی کےلیئے کوئی نعرہ بلند کرتا اور اس کی گونج میمنا و میسرہ تلک جاتی ہے بالکلاسی طرح ان کے نعرے کی گونج پورے ہال میں گونجتی اور اس کے جواب میں لوگبھرپور انداز میں جواب دیتے ۔ تھوڑی دیر کے لیئے ایسا لگتا کہ انسان مدینےکی گلیوں میں گھو م رہا ہے۔ مہمان گرامی کے مسند نشین ہوتے ہی اس سلسلے کومزید تقویت ملی اور اس کے بعد مائیک حافظ محمد اقبال اعظم نے سنبھال لیا ۔
انہوںنے مہناج القران کے حوالے سے چند باتیں بتائیں اور اس کے بعد قاری محمدصدیق نے اپنی خوبصورت آواز میں تلاوت کلام پیش کی اور اس کا ترجمہ اس تقریبکے مہمانِ خصوصی صاحبزادہ تسلیم احمد صابری نے اپنی خوبصورت آواز میں پیشکیا۔ لوگ ان کو ٹی وی پے تو سنتے ہی رہتے ہیں لیکن لوگوں کی محفل اور وہبھی عاشقانِ رسول کی محفل میں کلام پاک کا ترجمہ سنانا اس کا الگ ہی لطفتھا۔ صابزادہ تسلیم صابری نے جو ترجمہ پیش کیا وہ علامہ طاہر القادری کاترجمہ ءِ قران ہے جو انہوں پورے قران کا ترجمہ ریکارڈ کروایا ہے جبکہ یہاںاس محفل میں اس کے کچھ اقتباس سنائے۔ قاری تسلیم اورصاحبزادہ تسلیم صابریکو انتہائی عقیدت سے سنتے رہے اور اس دوران احمد اپنی بھرپور نعروں سےلوگوں کے جذبات کے گرماتے رہے ۔
استقریب کی کوریج چینل نائینٹی ٹو اور اے آر وائی کے ذریعے لائیو دکھائیجارہی تھی اور طاہر القادری کینیڈا میں اسے بالکل ایسے ہی دیکھ رہے تھےجیسے وہ اس تقریب میں موجود ہوں۔ اس کے بعد انہوں ٹیلی فونک رابطہ قائم کیا۔ہال میں موجود مہمانِ خصوصی اور دیگر افراد کا شکریہ ادا کیا۔
اسکے بعد نعتِ رسولِ مقبول پیش کرنے کے لیئے مشہور عالم نعت خواں تشریف لائےجن کو اس محفل کے لیئے خاص طور پر دعوت دی گئی تھی۔ شہباز قمر فریدی نے اسنداز میں حضور ﷺکی شان میں عقیدت کے پھول نچھاور کیئے کہ ہال میں موجودتمام لوگوں کے رونگٹے کھڑے ہوگئے۔ سب کا دل چاہتا تھا کہ قمر فریدی نعتوںکا یہ سلسلہ جاری رکھیں لیکن ایسا ممکن نہیں تھا ۔اس کے بعد سپین سے تشریفلائے ہوئے نعت خواں عبدل قدیر خان کو دعوت دی گئی ۔ انہوں نے اپنے مخصوصانداز میں نعت پیش کی ۔یہ کہنا غلط نہ ہوگا کہ عاشقانِ رسول کی کمی نہیںتھی اور ایک سے بڑھ کے ایک تھا۔ اصل مقصد حضورﷺکی شان میں ہدیہ عقیدت پیشکرناتھا جس میں سب نے اپنی اپنی حیثیت کے مطابق حصہ پیش کیا۔تقریب کا سلسلہرات گئے تک جاری رہا اور آخر میں طعام کا انتظام تھا۔
آخرمیں میں ان لوگوں کا ذکرکرنا ضروری سمجھتا ہوں اگر یہ لوگ نہ ہوتے تو یہاتنی کامیاب تقریب کبھی بھی منعقد نہ ہوپاتی ۔ جن میں صوفی نیاز احمد جو کہدیارِ غیرمیں تارکین وطن کی تجہیز و تدفین میں لوگوں کی مدد کرتے ہیں اوربے لوث خدمت کرتے ہیں، چوھدری محمد اشرف جو کہ منہاج القران کے وائسپریڈینٹ ہیں، چوھدری ظفر اقبال، بابر بٹ، تیمور رزاق اور حافظ اقبال اعظم ۔اس طرح یہ تقریب اپنے اختتام کو پہنچی اور عاشقان رسول پیرس میں مقیم لاکورنیو، مہناج القران کے سینٹر میں یہ بات ثابت کرنے میں کامیاب ہوگئے کہدیارِ غیر میں رہ کر بھی ان کے دلوں میں حضور ﷺکی عزت و تکریم بالکل اسیطرح قائم ہے جو کسی بھی مسلمان کے دل میں ہونی چاہیئے خواہ وہ دنیا کے کسیبھی کونے میں ہوِ خواہ وہ یورپ ہو افریقہ ہو، امریکہ یا جاپان ۔
سرفراز بیگ ، پیرس
0753250877





 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت پیر, 03 جون 2013 17:53