Sunday, Sep 22nd

Last update12:39:09 AM GMT

پوپ فرانچیسکو نے لامپے دوزا کا تاریخی دورہ کیا

روم۔ 8 جولائی 2013 ۔۔۔۔ آج ویٹیکن کے پوپ فرانچیسکو نے اٹلی کے جزیرے لامپے دوزا کا دورہ کیا ۔ لامپے دوزا وہ جزیرہ ہے ، جہاں افریقہ اور ایشیا کے تارکین وطن کشتیوں کے زریعے سے آتے ہیں ۔ یہ جزیرہ افریقہ کی سرحدوں کے قریب ہے اور اسے اٹلی کا ایلس آئی لینڈ کہا جاتا ہے ۔ اس جزیرے تک پہنچنے کے لیے سمندر اور افریقہ کے ممالک سے گزرنا پڑتا ہے اور اب تک ہزاروں کے غیر ملکی راستے تہہ کرنے کے دوران جاں بحق ہو چکے ہیں ۔ ان میں سینکڑوں پاکستانی بھی شامل ہیں ، صرف ایک بحری کشتی میں 1998 میں ڈیڑہ سو کے قریب پاکستانی موجود تھے اور یہ کشتی ڈوب گئی تھی اور ان میں سے 140 کے قریب پاکستانی اپنی جان کھو بیٹھے تھے ۔ پوپ نے جزیرے کا تاریخی وزٹ کرتے ہوئے پورے اٹلی اور یورپ میں بحث چھیڑ دی ہے اور اب ہر کوئی پوپ کے حق میں اور انکے وزٹ کے خلاف بحث کر رہا ہے ۔ لیگا نورد کے ایک لیڈر بوزے نے کہا ہے " غیر ملکیوں کی کشتی ڈوبنی چاہئے اور انہیں مرنا چاہئے ۔ اسکے برعکس اٹلی کی سول سوسائٹی نے اس دورے کو خوش آئند قرار دیا ہے ۔ پوپ نے جزیرے میں 10 ہزار لوگوں کے سامنے عبادت کی اور اسکے بعد سمندر میں پھولوں کا گل دستہ پھینکنے کے لیے گئے ۔ انہوں نے 50 کے قریب نئے پہنچنے والے غیر ملکیوں سے ملاقات کی ، جن میں اکثریت مسلمانوں پر مبنی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے مفادات کی خاطر غریب تارکین وطن کی جان لے لی ۔ اگر ہم ان سے ہمدردی کرتے تو آج ہزاروں کی تعداد میں مرنے والے غیر ملکی زندہ ہوتے ۔ یہ لوگ جنگ اور غریبی سے تنگ آکر ہمارے ممالک کی طرف رجوع کرتے ہیں اور ہمیں جاہئے کہ ہم غیر ملکیوں کے لیے انسانی ہمدردی کے قوانین عمل میں لائیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com