Sunday, Jan 20th

Last update12:39:09 AM GMT

روم میں یوم سیاہ کے موقع پر اجلاس کا انعقاد

روم۔ 26 اکتوبر 2014 ۔۔۔۔  بروز اتوار شام 6 بجے کے قریب مسئلہ کشیمر کے سلسلے میں یوم سیاہ پر اجلاس کا انعقاد کیاگیا ۔ اس اجلاس کے میزبان چوہدری بشیر امرے والا تھے ۔ اجلاس میں دو سو کے قریب پاکستانی اور کشمیری بھائیوں نے شرکت کی ۔ تلاوت کلام پاک کے بعد اسٹیج سیکرٹری محمد سرور بھٹی نے شرکا کا شکریہ ادا کیا اور مقررین کو تقاریر کے لیے دعوت دی۔  مقررین نے کہا کہ ان 67 سالوں میں 93 ہزار کشمیری شہید کیے گئے ہیں اور ایک لاکھ بیس ہزار کے قریب جیلوں میں بند ہیں ۔  اقوام متحدہ نے کشمیریوں کو حق خود ارادیت میسر کی تھی لیکن اس پر کوئی عمل نہیں کیا گیا اور بھارتی فوجیں کشمیر میں جارحیت کر رہی ہیں ۔ مقررین میں محمد نجیب، خالد محمود خان، نصیر احمد، فاروق تبسم، فاروق راجپوت، راؤف خان، اعجاز سندھو، عبدالرحمان، چوہدری عامر بسرا، منظور شاہ، محمد کاشف کے علاوہ میزبان چوہدری بشیر امرے والا موجود تھے ۔ اجلاس کا اہتمام ایک ریسٹورنٹ میں کیا گیا تھا ۔ اجلاس کے بعد تمام حاضرین کو کھانا پیش کیا گیا ۔ انتظامیہ میں ثقلین علی سر فہرست تھے ۔ تقاریر کے موقع پر  کشمیر بنے گا پاکستان ، کشمیر زندہ باد اور پاکستان زندہ باد کے نعرے گونجتے رہے ۔ یاد رہے کہ یوم سیاہ کے موقع پر اسی روز لندن میں ایک ملین لوگوں کا جلوس منعقد کیا جا رہا تھا ۔ مقررین نے کہا کہ پاکستان کشمیر کے بغیر ادھورا ہے اور یہی وجہ ہے کہ ہم اب تک کشمیر کی آزادی کے لیے بھارت سے تین جنگیں لڑ چکے ہیں ۔ جب تک کشیمر آزاد نہیں ہو گا ہم سکھ کی نیند نہیں سوئیں گے ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com