Friday, Sep 22nd

Last update08:57:59 PM GMT

روم ایمبیسی میں شام سوگ کا اہتمام

18 دسمبر 2014 ۔۔۔۔۔ آج شام روم ایمبیسی میں شام سوگ کا اہتمام کیا گیا ۔ 16 دسمبر کی صبح کو پشاور میں ہونے والے المناک دہشت گردی کے واقع کی مذمت کرنے کے لیے روم میں موجود ہمارے سفارت خانے میں شام سوگ منایا گیا ۔ شام چار بجے کے قریب قرآن خوانی کروائی گئی اور اسکے بعد سفارت خانے کے صحن میں 145 شہیدوں کی یاد میں 145 شمعیں روشن کی گئیں ۔ ایمبیسڈر تہمینہ جنجوعہ کی آنکھیں نم تھیں اور ہر پاکستانی اور غیر ملکی جو وہاں موجود تھا ، انتہائی غم و صدمے کا اظہار کر رہا تھا ۔ ایمبیسی کے سیکنڈ سیکرٹری  عامر سعید نے مائیک تھامتے ہوئے سب سے پہلے کرسچن کمونٹی کے صدر سرور بھٹی کے دعوت دی کہ وہ المناک سانحہ پشاور پر اپنا اظہار خیال کریں ۔ اسکے بعد مسیحی پادری پاسچر اعظم خان نے اپنے مذہب کے مطابق شہید ہونے والے بچوں کی یاد میں اور انکے خاندان والوں کے لیے دعا کی ۔ اسکے بعد پاکستان فیڈریشن کے صدر چوہدری بشیر امرے والا نے غم و دکھ اور غصے کا اظہار کیا ۔ ڈپٹی ہائی کمشنر اشتیاق عاقل نے شہید ہونے والے بچوں کے لیے دعا کی ۔ آخر میں ایمبیسڈر تہمینہ جنجوعہ نے غیر ملکی مہمانان گرامی کے احترام کے لیے اردو کی بجائے انگریزی میں تقریر کی اور کہا کہ میں عورت ہوں اور ان ماؤں کے بارے میں جانتی ہوں جنکے بچے شہید ہو چکے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ تین دنوں سے پورے اٹلی سے لوگ افسوس کرنے کے لیے ایمبیسی میں آرہے ہیں ۔ یاد رہے کہ پشاور کے واقع نے پورے ملک کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے اور پاکستان کے ہر علاقے میں سوگ منایا جا رہا ہے ۔ موم بتیاں جلائی جا رہی ہیں اور مسجدوں میں دعائے مغفرت کروائی جا رہی ہے ۔ سفارت خانے میں سینکڑوں پاکستانیوں نے شرکت کی ۔ جن میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com