Sunday, Apr 30th

Last update08:57:59 PM GMT

ریجو امیلیا میں ایک پاکستانی بچی کی اچانک موت

روم۔ 11 فروری ۔۔۔ اٹلی کے شمالی شہر ریجو امیلیا کے گاؤں فابریکو میں آباد ایک پاکستانی خاندان کی 11 سالہ بیٹی زاہرہ احمد اچانک بیمار ہونے کے بعد فوت ہوگئی ہے ۔ زاہرہ کو چند دنوں سے تیز بخار ہو رہا تھا اور وہ اپنے آپ کو کمزور تصور کرتی تھی ۔ ڈاکٹر نے دوائی وغیرہ دی تھی اور والدین اسکی صحت یابی کے لیے دعا گو تھے ۔ کل صبح زاہرہ کی والدہ سا‏‏‏ئقہ نوری نے جب بچوں کو سکول روانہ کرنے کے لیے اٹھایا اور ناشتہ تیار کیا تو اس دوران زاہرہ سوتی رہی ۔ والدہ نے آخر کار اسے جگانے کی کوشش کی لیکن اسکا جسم ٹھنڈا ہو چکا تھا ۔ ایمبولینس  کے آنے پر ڈاکٹرایک گھنٹے تک اسے حوش میں لانے کی کوشش کرتے رہے لیکن یہ خدا کو پیاری ہو چکی تھی ۔ بچی کی ماں نے اپنے شوہر کو فوری طور پر بلا لیا جو کہ ایک قریبی فیکٹری میں کام کرتے ہیں ۔ مختار احمد نے جب گھر میں قدم رکھا تو انکی بیٹی فوت ہو چکی تھی ۔ مختار احمد نے بتایا کہ انکی 2 بیٹیاں اور ایک بیٹا ہے ۔ گھر میں کافی دنوں سے تمام لوگ وبائی بخار کا شکار تھے اور دوائی وغیرہ لے رہے تھے ۔ اسی طرح زاہرہ بھی بیمار تھی لیکن انکے خواب و خیال میں بھی نہیں تھا کہ یہ بخار اسکے لیے جان لیوا ہو گا ۔ زاہرہ سکول میں کافی ہونہار تھی اور پڑھائی میں کافی دلچسپی لیتی تھی ۔ زاہرہ کی موت کے بعد اسکے گاؤں کے لوگ اور پاکستانی کمونٹی والے زاہرہ کی مغفرت کے لیے دعاگو ہیں ۔

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com