Sunday, Dec 17th

Last update06:54:49 PM GMT

میلان میں ہومانیتاس یونیورسٹی کا افتتاح اور ایک پاکستانی لڑکی کی کامیابی

 

14 نومبر 2017 ۔۔۔۔ آج بروز منگل میلان میں ہومانیتاس یونیورسٹی کے کیمپس کا افتتاح اٹلی کے صدر سیرجو متاریلا نے کیا ۔ اس موقع پر ملک کے وزرا ، علاقائی سیاسی لیڈران اور سول سوسائٹی کی مشہور و معروف شخصیات موجود تھیں ۔ صدر مملکت عام طور پر کسی پرا‏‏ئیویٹ یونیورسٹی کا افتتاح کرنے کے لیے تشریف نہیں لاتے ، اس لیے یہ ایک اہم موقع تھا ۔ اسی یونیورسٹی میں ایک پاکستانی لڑکی جویرا علی بھی سال چہارم کی طالبہ ہیں۔ میلانو کے میئر جوزپے سالا نے اپنی تقریر میں کہا کہ ہومانیتاس یونیورسٹی صرف ایک عام یونیورسٹی نہیں ہے بلکہ ایک اہم ریسرچ سنٹر، ہسپتال اور بین الاقوامی درس گاہ کے طور پر ابھر رہی ہے ، یہی وجہ ہے کہ اسکے افتتاح کے لیے صدر مملکت خود تشریف لائے ہیں ۔ میئر نے کہا کہ ہمارے شہر میں 13 ہزار غیر ملکی اسٹوڈنٹس تعلیم حاصل کر رہے ہیں اور یہ غیر ملکی اس شہر کو اپنا شہر سمجھتے ہیں ۔

صدر مملکت نے اپنی تقریر میں کہا کہ ریسرچ دنیا کی تقدیر بدل رہی ہے ۔ آپ میری عمر ہی دیکھ لیں، یہ سب سا‏ئنس کی ترقی کی بدولت ہے ورنہ میری عمر کے لوگ پہلے اتنے صحت مند نہیں ہوتے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ میلانو اٹلی کی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہا ہے اور اس شہر میں ترقی یافتہ ، جدید اور ڈیجیٹل انڈسٹری فروغ پا رہی ہے ۔ صدر کی تقریر کے بعد مختلف مقررین نے اس جدید یونیورسٹی کے بارے میں روشنی ڈالی۔ یونیورسٹی کی تقریب کے دوران صرف ایک اسٹوڈنٹ نے صدر مملکت اٹلی کے سامنے تقریر کی اور وہ ہماری پاکستانی لڑکی جویرا علی تھیں ۔ جویرا نے کہا کہ میرے دادا چاہتے تھے کہ میں ڈاکٹر بنو ۔ میں نے سکول اور کالج میں اچھی پوزیشن حاصل کی اور اسکے بعد اس یونیورسٹی میں داخل ہونے میں کامیاب ہو گئی ۔ یہاں تمام پروفیسر اور سٹاف ہم سے محبت کرتے ہیں ، میں چوتھے سال میں ہوں اور جلد تعلیم مکمل کرنے کے بعد عورتوں کی اسپیشلسٹ بننے کا خواب دیکھتی ہوں ۔ میں امید پرست ہوں اور اپنا اور اپنے یونیورسٹی فیلو کا مستقبل روشن تصورکرتی ہوں ۔ جویرا علی کے والد نعمت علی کا تعلق گوجرانوالہ سے ہے اور وہ ریجو امیلیا شہر میں بزنس کرتے ہیں ۔ دونوں والدین اس عظیم الشان تقریب میں موجود تھے اور اپنی بیٹی پر فخر کرتے نظر آرہے تھے ۔  اسکے بعد ہومانیتاس یونیورسٹی کے پروفیسروں نے حاضرین کو بتایا کہ دنیا کی ترقی کے لیے ضروری ہے کہ اسکے شہری بھی صحت مند ہوں ۔ ہمیں چاہئے کہ ہم کینسر کا علاج تلاش کریں ۔ دنیا میں موٹاپاپن بڑہ رہا ہے، دنیا کے کافی ملکوں میں شہری اچھی خوراک نہیں کھا پاتے اور کمزور ہوتے جا رہے ہیں ۔ ہم نے دل کی کافی بیماریوں پر عبور حاصل کر لیا ہے ۔ ہمارے ہسپتال میں 80 فیصد مریض سرکاری سسٹم کے زریعے علاج کروانے کے لیے آتے ہیں ۔ پورے اٹلی اور دنیا کے مختلف ممالک سے لوگ ہمارے پاس اس لیے آتے ہیں کیونکہ ہمارے علاج کا سسٹم انتہائی جدید اور میسر ہے ۔ ہماری یونیورسٹی میں 12 سو زائد اسٹوڈنٹس ہیں اور ان ميں سے 44 فیصد غیر ملکی ہیں ۔ ہم نے ایک لا‏ئبریری، ریسرچ سنٹر اور کانفرنس ہال تعمیر کیا ہے اور اب ایک نیا کیمپس بھی بنا رہے ہیں ۔ ہمارے ہاں میڈیکل تعلیم کے علاوہ ریسرچر بھی دنیا کے مختلف ممالک سے آتے ہیں ۔ ہماری یونیورسٹی میں انگلش زبان میں تعلیم فراہم کی جاتی ہے اور اسکے علاوہ اٹالین بھی سکھائی جاتی ہے ۔ میلانو شہر اٹلی کا انتہائی خوبصورت شہر ہے ، جس میں جھیلیں، قدیم عمارات، ڈیزائن اور فیشن کی فرمیں موجود ہیں ۔ غیر ملکی اسٹوڈنٹس یہاں بہت خوش رہتے ہیں اور تعلیم کے ساتھ ساتھ ہمارے کلچر سے بھی متعارف ہوتے ہیں ۔ اگر آپ اٹلی میں میڈیکل تعلیم حاصل کرنے کے لیے آنا چاہتے ہیں تو ہومانیتاس یونیورسٹی آپکے لیے آ‏‏ئیڈیل ثابت ہو سکتی ہے ، اسکی سالانہ فیس 20 ہزار یورو کے لگ بھگ ہے لیکن اسکے وظیفے 6 سے 12 ہزار یورو تک دیے جاتے ہیں ، اس یونیورسٹی کے پروفیسر اٹلی کے مشہور پروفیسر ۔ ان میں سے دو پروفیسر نوبل پرائز ہیں ۔ یونیورسٹی میں داخلہ حاصل کرنے کے لیے آپ انکی انٹرنیٹ کی سا‏ئٹ سے رابطہ کرسکتے ہیں ۔

Humanitas University

Via Rita Levi Montalcini, 4, 20090 Pieve Emanuele Milano, Italy

www.hunimed.eu, Telephone: 0039-0282243777, یہ ای میل پتہ اسپیم بوٹس سے محفوظ کیا جارہا ہے، اسے دیکھنے کیلیے جاوا اسکرپٹ کا فعّال ہونا ضروری ہے

 

 

 

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت بدھ, 06 دسمبر 2017 13:29