Thursday, Apr 25th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

اٹالین خبریں

بریشیا میں اٹالین جوان کا قبول اسلام

 بریشیا (حاجی وحید پرویز) 11مئی 2013کو کالچیناتو (CALCINATO) مسجد میں بعد نماز مغرب ایک پروقار تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں اٹالین جوان نکولا جس کی عمر 39سال ہے اور وہ بنیولامیلا (BAGNOLO MELLA) میں رہائیش پزیر ہے کو ایک اٹالین نو مسلم آدم صاحب نے کلمہ شہادت پڑھا کر دائرہ اسلام میں داخل کیا- یاد رہے آدم صاحب کچھ عرصہ قبل اسلام قبول کر کے اسلامی تعلیمات بھی حاصل کر چکے ہیں اور وقتا“ فوقتا“ شوقیہ طور پر امامت کے فرائض بھی سر انجام دیتے رہتے ہیں- نکولا کا نیا اسلامی نام “راشد“ رکھا گیا ہے- مسجد میں مراکش، پاکستان اور افریقی مسلمانوں کی ایک کثیر تعداد موجود تھی- راشد نے جب کلمہ پڑھا تو مسجد کی فضا الله“اکبر کے نعروں سے گونج اٹھی-راشد بھائی نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اسلام قبول کرنے پر خوشی کا اظہار کیا- بعد ازیں آزاد کے لیے حاجی وحید پرویز کو دیے گئے اپنے انٹرویو میں انھوں نے بتایا کہ وہ کئی سالوں سے مختلف مزاہب کا مطالعہ کر رہے تھے لیکن انہیں اطمینان حاصل نہیں ہو رہا تھا لیکن جب انہوں نے اسلام کا مطالعہ کیا تو ان کے دل و دماغ نے اس سچائی کی فورا“گواہی دے دی- اپنے کام کے ساتھی اور دوست ابراہیم جن کا تعلق سینیگال سے ہے کا خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے راشد نے بتایا کہ ابراہیم نے اسلامی تعلیمات کو سمجھنے میں میری بہت مدد کی ہے- تقریب کے اختمام پر شرکا کی پلاؤ،کسکس،میٹھے اور قہوے سے تواضح کی گئی-

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

روم میں تحریک انصاف کا کامیاب اجلاس

روم، 9 مئی 2013 ۔۔۔ اٹلی کے دارالخلافہ روم کے ساحلی قصبے لوینیو میں 5 مئی کے روز تحریک انصاف کا کامیاب اجلاس منعقد کیا گیا ۔ چوہدری عامر بسرا ایڈووکیٹ نے محفل شروع ہونے کا اعلان کیا اور اسکے بعد حافظ ساجد کو تلاوت کلام پاک کے لیے دعوت دی گئی ۔ اسکے بعد شیخ اشفاق نے نعت شریف پیش کی ۔ اسٹیج پربیھٹنے کے لیے  مہمانان گرامی کو دعوت دی گئی ، جن میں ندیم یوسف ایڈووکیٹ مہمان خصوصی کے علاوہ مسسز حنا عروج، خالد کیانی، شیخ خالد اور امجد اکرام موجود تھے ۔ سدرہ عامر اور عامر بسرا نے میزبانی کا کردار ادا کیا ۔ فیصل بٹ نے ملی نغمہ " میں بھی پاکستان ہوں ، تو بھی پاکستان ہے " پیش کیا اور عوام نے خوب تالیاں بجائیں ۔ سب سے پہلے تحریک انصاف اٹلی کی انفارمیشن سیکرٹری حنا عروج نے تقریر کی اور کہا کہ آج اٹلی کے تمام شہروں سے اور اسکے علاوہ یورپ کے دوسرے ممالک سے مہمانان گرامی تشریف لائے ہیں اور ہم انکے شکرگزار ہیں ۔ اس اجلاس میں خواتین کی موجودگی اس بات کی گواہی ہے کہ عورتیں بھی مردوں کے ہمراہ ملکر نیا پاکستان بنانے کا خواب دیکھ رہی ہیں ۔ انہوں نے اٹلی کی تحریک انصاف کا سپاسنامہ پیش کیا اور کہا کہ تحریک انصاف اٹلی 11 سال کی مدت سے کام کررہی ہے اور ہمارے پیارے لیڈر اور کوارڈینیٹر ندیم یوسف گزشتہ 17 سال سے تحریک انصاف کے ساتھ منسلک ہیں ۔ حنا عروج نے کہا کہ آج پورے اٹلی میں پی ٹی آئی کے پرچم لہرا رہے ہیں اور پارٹی کے علاوہ یوتھ ونگ اور خواتین ونگ کا انعقاد بھی ہو چکا ہے ۔ یاد رہے کہ ندیم یوسف کی قیادت میں 2009 سے لیکر اب تک عمران خان، ڈاکٹر علوی، فوزیہ قصوری اور اسکے علاوہ پارٹی کی اہم شخصیات اٹلی کا دورہ کر چکی ہیں اور کافی چندہ جمع کرکے انکے حوالے کردیا گیا ہے ۔ ندیم یوسف نے اٹلی کے علاوہ دوسرے یورپین ممالک جیسے فرانس، جرمنی ، سویٹزرلینڈ اور دوسرے کئی ممالک میں پی ٹی آئی کو منظم کرنے کے لیے کردار ادا کیا ہے ۔ حنا عروج نے کہا کہ ہم تحریک انصاف کی قیادت میں علامہ اقبال اور قائد اعظم کا خواب پورا کریں گے ۔ انکی تقریر کے دوران ڈاکٹر فوزیہ قصوری کا فون آگیا اور انہوں نے فون کے زریعے اٹلی کے تارکین وطن اور اجلاس میں موجود پاکستانیوں سے اظہار خیال کیا ۔ انہوں نے کہا کہ تارکین وطن ملک کا اثاثہ ہیں اور عمران خان خود چاہتے ہیں کہ اوورسیز پاکستانیوں کے لیے سہولیات پیدا کریں ۔ ہم چاہتے ہیں کہ آپ لوگ پاکستان میں انوسٹمنٹ کریں ۔ اس مقصد کے لیے پارٹی نے ایک پالیسی تیار کررکھی ہے ۔ انہوں نے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ طالبان کے 36 گروپ ہیں اور ہر گروپ نے ہتھیار نہیں اٹھائے ہوئے ۔ ان سے ڈائیلاگ ضروری ہے اور صرف ہم نہیں بلکہ امریکہ بھی ان سے ڈائیلاگ کرنا چاہتا ہے ۔ انکی تقریر کے بعد ٹیوی پر عمران خان کا شو دکھایا گیا ، جس میں انہوں نے کینسر کے ہسپتال بنانے کی تاریخ اور وجہ بیان کی ۔ اسکے بعد سیکرٹری فارن آفیئر طارق میر نے تقریر کرتے ہوئے کہا کہ پورے یورپ میں کمپین چل چکی ہے ۔ نیا پاکستان بن کررہے گا ۔ ہمارے پیارے قائد عمران خان جو کہتے ہیں ، اسے پورا کرتے ہیں ۔ ہمیں یقین ہے کہ 11 مئی کو ہم کامیاب ہونگے ۔ انکے بعد اٹلی کی سب سے پہلی پاکستانی صحافی لڑکی ریما نعیم نے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور کہا کہ میں پہلی دفع کسی سیاسی پارٹی کی تقریب میں شامل ہوئی ہوں ۔ میں نئی جنریشن سے امید کرتی ہوں کہ وہ پاکستان کا نام روشن کرے گی ۔ مسسز دردانہ شاہ نے اپنی تقریر میں کہا کہ ہم نے کسی برادری کو ووٹ نہیں دینا بلکہ اپنا ووٹ کاسٹ کرنا ہے ، ہمیں جاہئے کہ ہم فون کرتے ہوئے ووٹ کا صحیح استعمال کریں ۔ عمران خان کی قیادت ہمیں امریکہ کی غلامی سے نجات دلوا سکتی ہے ۔ عمران خان آوے ای آوے ۔ ڈنمارک سے تشریف لائے ہوئے میاں طارق نے اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔ اسکے بعد نعیم الحق نے فون کے زریعے بات چیت کی ۔ نعیم الحق نے اپنی ولولہ انگیز تقریر سے عوام کے دل جیت لیے ۔ خالد کیانی نے ہندوکو میں تقریر کرتے ہوئے عمران خان کی قیادت پر روشنی ڈالی ۔ امجد اکرم نے اپنی تقریر کے زریعے تحریک انصاف کی خصوصیات پر تفصیل پیش کی اور اسپیشل طور پر اس اجلاس کے لیے میلان سے تشریف لائے ۔ میزبان عامر بسرا ایڈووکیٹ نے اجلاس کی کامیابی پر تمام حاضرین کا شکریہ ادا کیا اور اسکے بعد چائے مٹھائی و کھانا پیش کیا گيا ۔ اجلاس کی سب سے اہم شخصیت بابا شریف تھے ، جن کے نعروں نے عوام میں خوشی کی لہر پیدا کردی ۔ تحریر، اعجاز احمد

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

لیگانورد کی وجہ سے شہریت ملنے میں تاخیر

روم، 3 مئی 2013 ۔۔۔ اٹلی کی سابقہ حکومت میں لیگا نورد کی موجودگی کیوجہ سے اٹلی میں شہریت کے دفتر کو مزید سست کردیا گیا ہے ۔ لیگا نورد کے سیاسی لیڈر وزارت داخلہ کے وزیر تھے اور انکی موجودگی میں اٹالین شہریت جاری کرنے والے سسٹم کو مزید سست کردیا گیا تھا ۔ آرچی ایسوسی ایشن کے امیگریشن کے زمہدار میرالیو نے کہا کہ ہمارے ملک میں کوائف مکمل ہونے کے باوجود کم سے کم اٹالین پاسپورٹ جاری کیے جاتے ہیں اور اسکی سب سے بڑی وجہ ہماری بیوریوکریسی اور دفاتر کا سست سسٹم ہے ۔ سینکڑوں ایسے غیر ملکی ہیں ، جنہیں منفی جواب دیدیا گیا ہے اور انہیں شہریت دینے سے انکار کردیا گیا ہے ۔ یہ وہ غیر ملکی تھے جو کہ اٹلی میں دس سال سے زیادہ عرصے سے آباد تھے لیکن ان پر چند الزامات لگا کر انہیں شہریت دینے سے انکار کردیا گیا ہے ، اسکے علاوہ اٹلی میں پیدائش کے فوری بعد شہریت کا قانون نہ ہونے کیوجہ سے ہر سال 80 ہزار غیر ملکیوں کے بچے غیر ملکی ثابت کیے جاتے ہیں ۔ ہم یقین کرتے ہیں کہ موجودہ وزیر شہریت دینے والے دفتر میں تیزی پیدا کریں گے کیونکہ شادی کے بعد بھی شہریت کی درخواست پر کافی تاخیر کی جا رہی ہے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

سید شہزاد حسین کے خیالات

روم۔ 29 اپریل 2013 ۔۔۔ سید شہزاد حسین نے آزاد کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ان کا تعلق ضلع ٹوبہ ٹیک سنگھ ، پیر محل سے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں جون 2006 سے اٹلی میں آباد ہوں اور میں اٹلی کے خوبصورت جزیرے سسلی میں رہتا ہوں ۔ یہاں لوگ مجھے علی شاہ کے نام سے جانتے ہیں ۔ میں سسلی کے شہر سیراگوزا میں رہائش پزیر ہوں ۔ میں یہاں میڈیسن اور فون کی فرموں کا ہول سیلر ہوں ۔ گرمیوں کے سیزن میں یہاں آرٹیفیشل جیولری کا کام کرتا ہوں ۔ عام طور پر پاکستانی یہاں صرف گرمیوں کے سیزن کا کام کرنے کے لیے آتے ہیں لیکن میں یہاں سارا سال رہتا ہے ۔ سید شہزاد نے کہا کہ یہاں کے لوگ بہت اچھے ہیں اور غیر ملکیوں سے بہت اچھا سلوک کرتے ہیں ۔ میں نے ٹوبہ ٹیک سنگھ سے ایف اے کی تعلیم حاصل کی اور اٹلی کے علاوہ لیبیا میں بھی رہ چکا ہوں ۔ مجھے جب شمالی اٹلی میں جانے کا موقع ملتا ہے تو پتا چلتا ہے کہ شمالی اٹلی کے لوگ غیر ملکیوں سے زرا فاصلہ رکھتے ہیں لیکن سسلی میں جب واپس آتا ہوں تو پتا چلتا ہے کہ یہ لوگ انتہائی مہمان نواز ہیں اور غیر ملکیوں سے بھائیوں جیسا سلوک کرتے ہیں ۔ یہاں غیر ملکیوں سے امتیازی سلوک نہیں کیا جاتا اور اگر تم ان سے دوستی کرلو تو تم انکے خاندان کا حصہ بن جاتے ہو ۔ سید شہزاد موبائل 3899258863

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت پیر, 29 اپریل 2013 19:01

یورپ میں سیاسی پناہ کی درخواستوں میں اضافہ

روم۔ 26 اپریل 2013 ۔۔۔۔ اسٹاٹ کی رپورٹ کے مطابق 2012 میں پورے یورپ میں سیاسی پناہ کی درخواستوں میں اضافہ ہوا ہے ۔ پورے یورپ میں 331.975درخواستیں دی گئی ہیں ۔ یاد رہے کہ 2011 میں 3 لاکھ 2 ہزار درخواستیں جمع کروائی گئی تھیں ۔ 70 فیصد درخواستیں جرمنی میں جمع کروائی گئی ہیں ، جن کی تعداد 77 ہزار پانچ سو بتائی گئی ہے ۔ اسکے بعد فرانس 60600 ، سویڈن 43900، انگلینڈ 28200، بیلجئم 28100 اور اسکے بعد اٹلی میں 15 ہزار 715 درخواستیں دی گئی ہیں ۔ 2012 میں جرمنی میں جن غیر ملکیوں کی درخواست قبول کی گئی ہے ، انکی تعداد 17.140ہے ، جبکہ کل درخواستیں 58.645تھیں ۔ یعنی در دہائی درخواستیں مسترد کری دی گئی ہیں ۔ سویڈن میں 31 ہزار سے زائد درخواستوں پر پڑتال کی گئی ہے اور ان میں سے صرف 12 ہزار 400 قبول کی گئی ہیں ۔ فرانس میں 60 ہزار کے قریب درخواستیں جمع کروائی گئی ہیں اور ان میں سے صرف ساڑھے آٹھ ہزار قبول کی گئی ہیں ۔ اٹلی میں 22 ہزار سے زائد درخواستیں جمع ہوئی ہیں اور ان میں سے 8 ہزار 260 قبول کی گئی ہیں ۔ انگلینڈ میں 22 ہزار کے قریب درخواستوں میں سے صرف 7 ہزار 735 قبول ہوئی ہیں ۔ بیلجئم میں 24 ہزار سے زائد درخواستوں پر صرف 5 ہزار 555 قبول ہوئی ہیں ۔ 2012 میں پورے یورپ میں فوری طور پر قابل غور ہونے والی سیاسی پناہ کی درخواستوں کی تعداد 268.495ہے ۔ ان میں سے 71 ہزار سے زائد درخواستیں قبول کی گئی ہیں اور 1 لاکھ 96 ہزار سے زائد مسترد کردی گئی ہیں ۔ قبول ہونے والی درخواستوں میں سے 37 ہزار غیر ملکیوں کو سیاسی پناہ کا اسٹیٹس دے دیا گیا ہے جبکہ 30 ہزار کے قریب غیر ملکیوں کو اضافی حفاظت کی سوجورنو یا اجازت نامہ جاری کیا گیا ہے ۔ 6 ہزار 415 غیر ملکیوں کو انسانی ہمدردی کا کارڈ جاری کیا گیا ہے ۔ سب سے زیادہ درخواستیں افغانستان کے غیر ملکیوں نے جمع کروائی ہیں ، جن کی تعداد 26 ہزار 250 ہے ، اسکے بعد شام کے شہریوں نے 23 ہزار 510 درخواستیں جمع کروائی ہیں ۔ روسی 23360، اور اسکے بعد پاکستانی اور سیربیا کے غیر ملکیوں کا نام آتا ہے ۔ اٹلی میں سب سے زیادہ درخواستیں پاکستانی شہریوں نے جمع کروائی ہیں ، جنکی تعداد 2 ہزار 365 بتائی گئی ہے ۔ اسکے بعد نائجیریا 15 سو اور اسکے بعد افغانستان کے شہریوں نے 1365 درخواستیں جمع کروائی ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com