Wednesday, Dec 11th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

کمونٹی کی خبریں

پاکستانی پی ڈی کو ووٹ دیں ، میر عمر حمید

روم۔ 21 جنوری 2013 ۔۔۔ اٹلی میں فروری کے مہینے میں عام الیکشن منعقد کیے جارہے ہیں ۔ اس سلسلے میں لومبردیا میں پی ڈی پارٹی کے ایک اجلاس میں شرکت کرتے ہوئے پاکستانی جوان لیڈر اور انجیئنرنگ کے  طالب علم میر عمر حمید نے کہا کہ ہماری کمونٹی کے وہ افراد جو کہ اٹالین شہریت رکھتے ہیں ، وہ پی ڈی پارٹی کو اپنا ووٹ کاسٹ کریں ۔ 19 جنوری کو پی ڈی پارٹی کے لیڈر برسانی نے لومبردیا کے عوام سے خطاب کیا ، اس اجلاس کے دوران عوام کی بھرپور شرکت کے باعث لوگوں کے ہال میں جگہ نہ ملی تو انہیں واپس جانا پڑا ۔ برسانی نے اپنی تقریر کے دوران کہا کہ  وہ ایسے بل پاس کریں گے ، جن سے بدعنوانی کا سد باب کیا جائے گا اور معیشت کی نشو و نما کے لیے اہم منصوبہ بندی کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ اگر وہ وزیر اعظم بن گئے تو وہ اپنی حکومت کے پہلے 100 دنوں میں غیر ملکیوں کے بچوں کو پیدائش کے فوری بعد اٹالین شہریت دینے کا قانون پاس کردیں گے ۔ یاد رہے کہ اب ان بچوں کو 18 سال تک اٹلی میں رہنا پڑتا ہے اور اسکے بعد قومی شہریت دی جاتی ہے ۔ برسانی نے کہا کہ یہ بچے یہاں پیدا ہوتے ہیں اور یہیں تعلیم حاصل کرتے ہیں ، اس لیے انہیں فوری شہریت دینا ہمارا فرض ہے ۔ میر عمر حمید نے کہا کہ وہ ان دنوں پی ڈی پارٹی کی بھرپور کمپین کر رہے ہیں کیونکہ یہ وہ واحد سیاسی پارٹی ہے جو کہ غیر ملکیوں کے حقوق کی پاسداری کرے گی اور ایسے قوانین عمل میں لائے گی ، جس سے غیر ملکی انٹیگریشن میں اپنا کردار ادا کرسکیں گے ۔ تصویر میں عمر حمید نیلے سویٹر میں برسانی کے پیچھے نظر آرہے ہیں

Mir Omar Hamid

3295386851

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

چوہدری بشارت وڑائچ وفات پاگئے

روم۔ 13 جنوری 2013 ۔۔۔۔ بلونیا کی مشہور و معروف شخصیت ، ہر دلعزیزاورکمونٹی کے ستون چوہدری بشارت وڑائچ آج صبح 4 بجے کے قریب دل کا دورہ پڑنے سے وفات پاگئے ہیں ۔ بشارت وڑائچ کا تعلق سرگودھا سے تھا اور وہ اٹلی میں گزشتہ 22 سال سے آباد تھے ۔ انہوں نے ہمیشہ ایک ہی فیکٹری میں کام کیا تھا اور نیک کمائی سے اپنے دو بیٹے اور بیوی کی دیکھبال کی تھی ۔ چوہدری بشارت وڑائچ گرانارولا میں آباد تھے ، انکی عمر 56 سال تھی  ۔ مرحوم کی نماز جنازہ کل 14 جنوری شام ساڑھے چار بجے سان تورسولا Via Albertiniمیں پڑھائی جائے گی ۔ انکے دونوں بیٹے اور بیوی بلونیا میں آباد ہیں اور انہوں نے کہا ہے کہ پہلی فلائٹ سے میت کو پاکستان روانہ کردیا جائے گا ۔ چوہدری بشارت کے بیٹے جہاں زیب بشارت نے بتایا کہ انہیں کبھی بھی دل کا مسئلہ نہیں ہوا تھا ۔ کل رات انکی طبیعت خراب ہونے پر انہیں ہسپتال پہنچادیا گیا تھا لیکن ڈاکٹروں نے فوری طور پر کہا تھا کہ اب کافی دیر ہوچکی ہے ۔ تصویر میں مرحوم بشارت وڑائچ

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت اتوار, 13 جنوری 2013 18:17

طوائف کی رقم چھیننے پر پاکستانی گرفتار

روم۔ 28 دسمبر 2013 ۔۔۔۔ گزشتہ دنوں اٹلی کے شمالی شہر پراتو میں ایک پاکستانی نے ایک طوائف کو مارا پیٹا اور اسکے بعد اسکے پرس سے 50 یورو کا نوٹ نکال کر فرار ہو گیا ۔ فرار ہونے والے پاکستانی کے ساتھ ایک اور ساتھی تھا اور رقم چھیننے کے بعد یہ دونوں ایک موٹر سائیکل پر فرار ہوگئے ، موٹر سائیکل چوری کی تھی ۔ یہ واقع شہر کی سڑک via Firenzeپر وجود میں آیا ۔ پاکستانی نے ایک نا‏ئجیریا کی طوائف پر ظلم ڈھایا ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ یہ پاکستانی اس طوائف کے قریب آیا اور اس نے اسکے ساتھ ہم بستری کرنے کے لیے کہا ۔ طوائف نے انکار کردیا اور اس پر پاکستانی مرد غصے میں آگیا اور اسنے طوائف کو مارنا شروع کردیا اور اس کا پرس چھینتے ہوئے 50 یورو نکال کر بھاگ گیا ۔ موقع پر ایک گواہ بھی موجود تھا ، اس نے پولیس کو بلا لیا اور پاکستانی کا حلیہ بتانے میں کامیاب ہو گيا ۔ پولیس نے پاکستانی کا سراغ لگا لیا کیونکہ وہ اسی سڑک پر ایک گاڑی میں چھپا ہوا تھا ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

8 لاکھ غیر ملکی اٹلی چھوڑ گئے ، فادر پیریجو

روم۔ 9جنوری  2013 ۔۔۔۔ اٹلی کی چیریٹی کی تںطیم fondazione Migrantesکے صدر فادر پیریجو نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 8 لاکھ غیر ملکی اٹلی چھوڑ گئے ہیں ۔ پاؤلو پیریجو اگلے اتوار کے روز ویٹیکن میں امیگرنٹس اور سیاسی پناہ گزین کا دن منانے کے لیے تیاریاں کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے غیر ملکی اسپین سے اٹلی میں آئے اور اب یہاں معاشی بحران کیوجہ سے دوسرے ممالک کی طرف جا رہے ہیں ۔ سرکاری ریسرچ کے مطابق اب تک 8 لاکھ غیر ملکی اٹلی چھوڑ چکے ہیں ۔ یہ غیر ملکی کہاں جاتے ہیں ، غیر قانونی ہوجاتے ہیں یا پھر دوسرے ممالک کی طرف گامزن ہوتے ہیں ۔ یاد رہے گزشتہ سال صرف غیر ملکیوں کی ساڑھے سات لاکھ نوکریاں ضائع ہوئی ہیں ۔ یعنی غیر ملکی بے روزگار ہو رہے ہیں ۔ یورپ میں بھی امیگریشن اپنی سمت بدل رہی ہے ۔ صرف جرمنی میں گزشتہ سال ساڑھے چار لاکھ غیر ملکی کام کرنے کے لیے آئے ہیں اور ان میں 46 ہزار اٹالین ہیں ۔ یہ اس بات کی گواہی ہے کہ دنیا کے علاوہ یورپ میں بھی امیگریشن اپنی نئی سمت اختیار کررہی ہے ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت بدھ, 09 جنوری 2013 21:50

بے روزگاری الاؤنس

مسعود شیرازی از ریجو امیلیا ۔ آزاد کے رپورٹر ریجو امیلیا سے لکھتے ہیں کہ وہ زراعت کے ملازمین جنہیں کام سے نکال دیا گيا ہے ، یا پھر انکا کام ختم ہو گیا ہے ، ان کا فرض ہے کہ یہ 31 مارچ تک بے روزگاری کا الا‎ؤنس حاصل کرسکیں ۔ اٹلی کی مزدور یونین CISLنے اعلان کیا ہے کہ تمام غیر ملکی جو کہ زراعت یا ایگریکلچرل کام کرتے ہیں وہ بے روزگاری کے لیے اپلائی کریں ۔ وہ غیر ملکی جو کہ موسمی پرمیسو دی سوجورنو سے آئے ہیں ، یا پھر ان پر ملک چھوڑنے کا نوٹس جاری ہو چکا ہے ، یا پھر انہوں نے خود کام چھوڑا ہے یہ تمام بے روزگاری الاؤنس کے لیے اپلائی نہیں کر سکتے ۔ بے روزگاری الاؤنس آپکی کام کی مدت کے مطابق تہہ کیا جاتا ہے جو کہ 6 سے 8 ماہ کی تنخواہ پر مبنی ہوتا ہے ۔ کام تلاش کرنے کی صورت میں بے روزگاری الاؤنس بند کردیا جاتا ہے اور غیر ملکی کا حق ہوتا ہے کہ وہ انپس کے دفتر کو مطلع کردے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت جمعہ, 04 جنوری 2013 19:37