Friday, Mar 22nd

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

اہم خبریں

اٹلی کے الیکشن میں سب ہار گئے ہیں اور سب جیت گئے ہیں

روم۔ 26 فروری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کے قومی الیکشن 24 اور 25 فروری کے روز تین بڑی پارٹیوں نے ووٹ حاصل کیے ہیں اور باقی تمام چھوٹی پارٹیاں فلاپ ہو گئی ہیں ۔ پی ڈی جو کہ دائیں بازو کی سیاسی پارٹی ہے ، اس نے اپنے اتحادیوں کے ساتھ ملکر قومی اسمبلی میں بہت کم ووٹوں سے اکثریت حاصل کی ہے اور سینٹ میں پی ڈی ایل دائیں بازو کی سیاسی پارٹی اس نے اپنے اتحادیوں کے ساتھ ملکر بہت کم سیٹوں سے اکثریت حاصل کی ہے ۔ تیسری پارٹی جو کہ ایک مزاحیہ اداکار نے بنائی تھی ، سب سے زیادہ ووٹ لینے والی پارٹی بن کر ابھری ہے ۔ اس پارٹی کا نام پانچ ستارے ہے اور اس نے اپنی کمپین صرف اور صرف انٹرنیٹ کے زریعے کی ہے ۔ اب الیکشن کے بعد تمام سیاسی جماعتیں آپس میں ملکر حکومت بنانے کی سوچ رہی ہیں ۔ کوئی بھی پارٹی زاتی طور پر حکومت بنانے سے قاصر ہے کیونکہ ہر پارٹی کے حصے 33 فیصد ووٹ تقسیم ہو چکے ہیں ۔ اٹلی کے اس الکیشن میں کافی غیر ملکیوں نے بھی حصہ لیا تھا لیکن ان میں سے صرف 2 کنڈیڈیٹ جیتے ہیں ، ان میں ایک افریقہ کی عورت اور ایک مراکش کا غیر ملکی موجود ہے ۔ اٹلی کے الیکشن کے بعد ابتری پائی جا رہی ہے اور یہ نظر نہیں آتا کہ اس ملک کا سیاسی مستقبل کیا ہو گا ، سٹاک ایکسچینج آج منفی 5،4 تک ڈاؤن ہو گیا ہے ۔ تمام سیاسی جماعتیں ایک دوسرے کے خلاف بیانات دے رہی ہیں لیکن کوئی بھی دوبارہ الیکشن کروانے کے حق میں نہیں ہے ۔ ہو سکتا ہے کہ پارٹیوں کو قربانی دینی ہو اور ایسا الحاق کرنا ہو جو کہ کسی دشمن سے کرنا پڑتا ہے ۔ یاد رہے کی اٹلی کی معیشت کالے بحران سے گزر رہی ہے اور پورا یورپ اس ملک کے دیوالیہ سے ڈر رہا ہے ۔ یاد رہے کہ اس سے قبل یونان اور اسپین کا دیوالیہ ہو چکا ہے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

اٹلی میں اڑھائی لاکھ غیر ملکی ووٹ ڈالیں گے

روم، 24 فروری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کی قومی اسمبلی اور سینٹ کے الیکشن میں اڑھائی لاکھ غیر ملکی ووٹ ڈالیں گے ۔ اگر امریکہ میں لیٹن امریکن اوبامہ کو کامیاب کرواسکتے ہیں تو اسی طرح اٹلی میں بھی اڑھائی لاکھ غیر ملکی اپنا ووٹ کاسٹ کرتے ہوئے الکیشن میں اپنا وزن بنا سکتے ہیں ۔ یاد رہے کہ گزشتہ الکیشن میں اٹالین شہریت رکھنے والے غیر ملکی بہت کم تھے اور کسی بھی پارٹی نے غیر ملکیوں کے ووٹ پر توجہ نہیں دی تھی لیکن اس الیکشن میں غیر ملکیوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔ اڑھائی لاکھ غیر ملکیوں میں 20 فیصد وہ غیر ملکیوں کے بچے ہیں ، جنہوں نے 18 سال کی عمر پوری کرنے پر شہریت حاصل کی ہے ۔ اٹلی کے زون لومبردیا میں اٹلی کی قل تعداد میں سے 25 فیصد غیر ملکی آباد ہیں اور اسی وجہ سے اس زون میں شہریت رکھنے والے غیر ملکی بھی کافی تعداد میں آباد ہیں ۔ لومبردیا میں 60 ہزار غیر ملکیوں کے پاس اٹالین شہریت موجود ہے اور اس زون کے الیکشن میں چند غیر ملکی الیکشن میں حصہ بھی لے رہے ہیں ۔ استرانیری ان اطالیہ کے ڈائریکٹر لوچیانو نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ آج کا اٹلی بدل چکا ہے اور وہ سیاسی پارٹیاں جو کہ غیر ملکیوں کو کمتر سمجھتے ہوئے انکے حقوق کی استحصالی کرتی ہیں ، انہیں جلد پتا چل جائے گا کہ اب یہ غیر ملکی اٹلی کی سیاست کو دور سے دیکھنے والے تماشائی نہیں بلکہ اس سیاست کا حصہ بن چکے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار برائے صوبائی اسمبلی صوبہ لومبردیا

ریجو امیلیا ( مسعود شیرازی سے ) سید ریاض تنویر ایڈووکیٹ 13 جون 1984 پاکستان میں پیدا ہوئے اورانہوں نے مارچ 2012 میں اٹلی کی شہریت حاصل کی ۔ آٹھ سال کی عمر میں اٹلی میں امیگرنٹ ہوئے ۔ ابتدائی تعلیم حاصل کرنے کے بعد انہوں نے 2009 میں وکالت کی ڈگری حاصل کی  اور اپنی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کی بدولت جلد ہی شہرت حاصل کر گئے ۔ اٹلی میں سول سروس صرف اٹالین شہریت رکھنے والے کرسکتے ہیں ، سید ریاض تنویر نے عدالت میں کیس کردیا اور اپنے دلائل کی روشنی میں غیر ملکیوں کو بھی سول سروس کرنے کی درخواست کی ۔ عدالت نے انکی درخواست قبول کرلی اور یہ خبر پورے اٹلی میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی اور پاکستان کا نام روشن ہوا ۔ ہر جگہ یہی کہا جا رہا تھا کہ ایک پاکستانی نے سالوں پرانا قانون تبدیل کروا دیا ۔ سید ریاض تنویر نے 2013 میں سیاست میں قدم رکھا اور اب وہ 24 اور 25 فروری کو ہونے والے الیکشن میں ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار برائے صوبائی اسمبلی صوبہ لومبردیا میں کونصلر کی سیٹ پر الکیشن لڑ رہے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

پاکستانی جوانیتی کو ووٹ دیں ، عبدالرحمان

روم، 17 فروری 2013 ۔۔۔۔ آج کل اٹلی میں ریجنل اور قومی الکیشنوں کی کمپین کے سلسلے میں پورے ملک میں گہما گہمی ہے ۔ اسی سلسلے میں روم میں آباد پاکستانی بھی اس سرگرمی میں حصہ لے رہے ہیں ۔ روم کی مشہور شخصیت عبدالرحمان نے اٹلی کے سنٹرل بائیں بازو کے ممبر Giovannettiکے لیے کمپین کا عہد کیا ہے ۔ الکیشن کمپین کے سلسلے میں گزشتہ روز روم کے پاکستانی ریسٹورنٹ کمشیر میں جوانیتی کو ایک شاندار اعشائیہ دیا گیا اور انہوں نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر وہ لاسیو ریجن کے کونصلر منتخب ہوگئے تو انکی کوشش ہوگی کہ وہ غیر ملکیوں کے لیے عمدہ قانون بنائیں اور خاص طور پر پاکستانی کمونٹی کے مسائل حل کریں ۔ میزبان عبدالرحمان نے اپنے اثر و رسوخ کے ساتھ روم میں آباد مختلف ممالک کے ان غیر ملکیوں کو دعوت دی جو کہ اٹلی میں کافی عرصے سے آباد ہیں اور اٹالین شہریت رکھتے ہوئے ووٹ کاسٹ کرتے ہیں ۔ عبدالرحمان نے کہا کہ ہم بعض پاکستانی ووٹ تو ڈالتے ہیں لیکن اب وقت آگیا ہے کہ کمونٹی کے تمام اٹالین شہری اپنے آپ کو منظم کریں اور اپنی آواز پیدا کریں ۔ ضروری ہے کہ ہم اس ملک میں سیاسی طور پر بھی ایکٹو ہوں ۔ عام طور پر ہماری کمونٹی پاکستان کے معاملات میں مصروف رہتی ہے اور اٹالین معاملات کو نظر انداز کردیتی ہے ۔ اسی سلسلے میں ہم نے روم میں آباد پاکستانیوں کو دعوت دیتے ہیں کہ وہ جوانیتی کو ووٹ دیں کیونکہ یہ ایسے لیڈر ہیں ، جنہوں نے پاکستانی کمونٹی کی دعوت قبول کی ہے اور ساتھ دینے کا عہد کیا ہے ۔ جوانیتی روم کے ایک گاؤں روکا پریورا میں سرجیکل ڈاکٹر ہیں اور اپنے علاقے میں کئی بار کونصلر اور میئر منتخب ہو چکے ہیں ۔ انکی ایمانداری، خلوص اور عوام سے محبت کے جذبے کی بدولت ہم نے انہیں ووٹ دینے کا عہد کیا ہے ۔ کشمیر ریسٹورنٹ کی اس دعوت میں مراکش ، یوکرائن، مصر، مونتے نیگرو اور دوسرے ممالک کے اٹالین شہری موجود تھے ۔ پاکستانی کمونٹی کی جانب سے نصیر راؤ، جعفر حسین اور اعجاز احمد کے علاوہ دوسرے اٹالین مہمانان گرامی موجود تھے ۔ جوانیتی کو ووٹ ڈالنے کے لیے آپ کو سیاسی پارٹی Centro Democratico per Zingarettiپر کراس لگانا ہوگا اور اسکے بعد ساتھ ہی جوانیتی کا نام Giovannettiلکھنا ہوگا ۔اگر آپ چاہیں تو براہ راست جوانیتی سے رابطہ کرسکتے ہیں اور انکی سیاسی سرگرمیوں کے بارے میں اور ان سے تعاون کرنے کے سلسلے میں خود بات چیت کرسکتے ہیں ۔ انکا ای میل اور موبائل درج زیل ہے ۔

Giovannetti Mob: 335.6789326  email: یہ ای میل پتہ اسپیم بوٹس سے محفوظ کیا جارہا ہے، اسے دیکھنے کیلیے جاوا اسکرپٹ کا فعّال ہونا ضروری ہے

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

ریجو امیلیا میں پاکستانی کی اچانک موت

روم۔ 10 فروری 2013 ۔۔۔ گزشتہ دنوں ایک پاکستانی ریجو امیلیا اور ماسینزاتوکے کے درمیان کھیتوں میں کسان کا کام کررہا تھا  جب اسکی طبیعت خراب ہوگئی۔ اس پاکستانی کا نام قمر انور تھا اور اسکی عمر 44 سال تھی ۔ طبیعت خراب ہونے پر اسکی ابتدائی امداد کی گئی لیکن اسکے باوجود یہ اللہ کو پیارا ہو گیا ۔ ایمبولینس کے پہنچنے پر ڈاکٹر نے بتایا کہ اسکی موت دل کا دورہ پڑنے سے واقع ہوئی ہے ۔ اس صورت میں ڈاکٹر نے پولیس کو بھی بلا لیا اور پولیس نے رپورٹ درج کرلی ۔ پولیس نے عدالت کے جج کو بھی انفارم کردیا اور کیس عدالت میں پہنچ گیا ۔ عدالت نے میت کا پوسٹ مارٹم کرنے کے لیے کہا ہے اور پاکستانی کے فیملی ڈاکٹر پر کیس کردیا ہے ۔ عدالت نے اسکے علاوہ قمر کے زراعتی مالک پر بھی کیس کردیا ہے اور دونوں کو وکیل کرنے کے لیے کہا ہے ۔ یاد رہے کہ قمر موت سے چند دن قبل ڈاکٹر کے پاس گیا تھا اور اس نے کہا تھا کہ اس کے کندھے اور بازو میں درد ہوتا ہے ۔ فیملی ڈاکٹر نے اسے معمولی دوائی دیکر گھر روانہ کردیا تھا ۔ کام پر بھی قمر نے ظاہر کیا تھا کہ وہ بیمار محسوس کرتا ہے ۔ قمر via Torelliمیں ایک ڈیرے میں آباد تھا ۔ تصویر میں ریجو امیلیا کی عدالت

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com