Sunday, Jan 20th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

اہم خبریں

اٹلی کے سمندر کی تہہ میں پاکستانی جھنڈا لہرانے کا اعزاز

روم۔ یکم جنوری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کے شہرروم میں آباد قمرالزمان نے اٹلی کی سمندر کے تہہ میں پاکستانی جھنڈا لہرانے کا اعزازکرلیا ہے ۔ قمرالزمان کا تعلق فیصل آباد سے ہے اور وہ روم میں 14 سال سے آباد ہیں ۔ انہوں نے آزاد کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ میرے 4 بچے ہیں ، جن میں تین یہاں پیدا ہوئے ہیں اور ایک پاکستان میں پیدا ہوا ہے ۔ قمرالزمان نے کہا کہ مجھے سکوبا ڈائی کا شوق ہے ، جسے اٹالین میں subacqueiکہتے ہیں ۔ میں نے اس سلسلے میں ایک سکول سے باقاعدہ کورس کیا ہے اور کئی بار سمندر کی تہہ میں جانے کا اعزاز حاصل کرچکا ہوں ۔ قمرالزمان یقین دلاتے ہیں کہ ہم سب پاکستان سے لڑتے جھگڑتے رہتے ہیں اور یہ کہتے ہوئے گریز نہیں کرتے کہ پاکستان نے ہم کو کیا دیا ہے لیکن ہمیں یہ سوال بھی کرنا چاہئے کہ ہم نے پاکستان کو کیا دیا ہے ۔ ہر پاکستانی کا فرض ہے کہ وہ کسی بھی عمل سے چاہے وہ چھوٹا ہو یا بڑا ، کچھ نہ کچھ ادا کرے، کوئی اپنے سرمائے کے زریعے ، کوئی اپنی کوالٹی کے زریعے اور کوئی اپنے ٹیلنٹ کے زریعے پاکستان کی خدمت کرسکتا ہے  ۔ میں آخری بار روم کے اوستیا کے سمندر میں 75 فٹ کی گہرائی تک پاکستان کا پرچم  لیکر گیا ہوں ۔ قمرالزمان نے کہا کہ میں اٹلی میں پاکستان کا کلچر متعارف کروانے  اور اسکی پہچان کروانے کے لیے مثبت کاروائی کرنے کا خواہشمند ہوں اور معقول زرائع کا انتظار کررہا ہوں ۔ میں مستقبل میں پاکستان کے پرچم کو 100 فٹ کی تہہ تک لیجانے کا منصوبہ بنا رہا ہوں ۔ پرچم کو گہرائی تک لیجانے کے لیے میں اٹالین ٹیم کا بھی شکرگزار ہوں ۔ قمرالزمان نے دعوہ کیا میں پہلا پاکستانی ہوں جس کو اٹلی کے سمندر کی تہہ میں پاکستانی جھنڈا لہرانے کا اعزازحاصل ہوا ہے ۔ ہر پاکستانی اگر پاکستان کے لیے کوئی بھی مثبت قدم اٹھائے تو اس عمل سے ہم اپنے وطن کا نام روشن کرسکتے ہیں ۔ قمرالزمان سے رابطہ کرنے کے لیے انکا موبائل درج کرلیں ۔ 3290410481

 

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت جمعہ, 04 جنوری 2013 13:01

دس سالوں میں اٹلی میں 35 لاکھ غیر ملکی داخل ہوئے ہیں

روم۔ 29 دسمبر 2012 ۔۔۔۔ اٹلی کے مردم شماری کے ادارے استات کے مطابق 2002 سے لیکر 2011 تک دس سالوں میں اٹلی میں 35 لاکھ غیر ملکی داخل ہوئے ہیں۔ صرف رومانیہ ملک سے 10 لاکھ غیر ملکی اٹلی میں رہائش پذیر ہوئے ہیں ۔ اسکے بعد انہیں دس سالوں میں 1 لاکھ 75 ہزار غیر ملکیوں نے اٹلی چھوڑ دیا ہے اور اسکے بعد 2 لاکھ 81 ہزار غیر ملکی لاپتہ ہوگئے ہیں یا پھر انہوں نے اپنا ریذیڈنس کٹوادیا ہے ۔ یہ وہ غیر ملکی ہیں ، جن کا ورک پرمٹ یا پرمیسو دی سوجورنو ختم ہوگئی ہے ۔ 2007 تک اٹلی میں داخل ہونے والے غیر ملکیوں کی تعداد بڑھتی ہوئی نظر آتی تھی لیکن 2007 کے بعد اس تعداد میں کمی واقع ہونی شروع ہو گئی تھی ۔ 2011 میں 3 لاکھ 86 ہزار غیر ملکی اٹلی میں رجسٹریشن کرواچکے ہیں اور اسی سال میں 82 ہزار غیرملکیوں نے اپنی رجسٹریشن کینسل کروادی ہے ۔ یعنی ہم کہہ سکتے ہیں اس سال میں 3 لاکھ 4 ہزار غیر ملکی اٹلی میں رجسٹرڈ کئے گئے ہیں ۔ غیر ملکی جو کہ اٹلی چھوڑ جاتے ہیں ، اکثر انکی عمر 34 سال ہوتی ہے اور ان میں 53 فیصد مرد شامل ہوتے ہیں ۔ وہ غیر ملکی جو کہ اٹلی میں داخل ہوتے ہیں انکی عمر عام طور پر 31 سال کے لگ بھگ ہوتی ہے اور ان کی اکثریت عورتوں پر مبنی ہوتی ہے  ۔ ان غیر ملکیوں کی 43 فیصد تعداد کا تعلق رومانیہ، مراکش، چین اور یوکرائن سے ہوتا ہے ۔ اٹلی چھوڑنے والے غیر ملکیوں میں رومانیہ کے غیر ملکی سرفہرست ہیں اور اسکے بعد چینی اور البانیہ کے غیر ملکی شامل ہیں ۔ 2011 میں اٹلی کے اندرونی شہروں اور قصبوں میں 13 لاکھ 58 ہزار غیر ملکیوں نے نقل مکانی کی ہے یا اندرونی ہجرت کی ہے ۔ 2010 کے مقابلے میں 13 ہزار غیر ملکی زیادہ دوسرے شہروں میں شفٹ ہوئے ہیں ۔ غیر ملکی اٹالین کی نسبت زیادہ اندرونی نقل مکانی کرتے ہیں ۔ ہر ایک ہزار غیر ملکیوں کے بعد 51 غیر ملکی اندرونی نقل مکانی کرتے ہیں جبکہ اٹالین صرف ہر ایک ہزار بعد صرف 21 اندرونی نقل مکانی کرتے ہیں ۔ سب سے زیادہ غیر ملکی جو کہ اندرونی نقل مکانی کرتے ہیں ان میں رومانیہ کے غیر ملکی شامل ہیں ، اسکے بعد چینی غیر ملکی شامل ہیں جو کہ اٹلی کے اندرون میں نقل مکانی کرتے ہیں

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

امیگریشن میں حصہ لینے کے لیے آخری اپیل

روم۔ 11 دسبمر 2012 ۔۔۔ اٹلی کی وزارت داخلہ نے ایک سرکولر یا قانون کے زریعے ان تمام بزنس مینوں اور خاندانوں سے اپیل ہے کہ وہ 15 اکتوبر والی امیگریشن میں درخواست جمع کروا سکیں ۔ یہ وہ خاندان یا بزنس مین ہیں ، جنہوں نے ایک ہزار یورو کا ٹیکس جمع کروایا تھا لیکن اسکے بعد غیر ملکی کو بھرتی کرنے کے لیے درخواست جمع نہیں کروائی تھی ۔ وزارت داخلہ نے اعلان کیا ہے کہ وہ مالکان جنہوں نے 1000 یورو کا ٹیکس جمع کروایا ہے ، لازمی بات ہے کہ انکی خواہش تھی کہ وہ غیر ملکی کو لیگل کروائیں ۔ اگر یہ لوگ کسی صورت میں وزارت داخلہ میں اس غیر ملکی درخواست جمع نہیں کرواسکے تو ہم انہیں موقع فراہم کرتے ہیں کہ وہ 31 جنوری 2013 تک اس غیر ملکی کی درخواست جمع کروا دیں ، جس کے لیے انہوں نے 1000 یورو کا ٹیکس جمع کروایا تھا ۔ درخواست دینے کے لیے آپ کو پہلے کی طرح انٹرنیٹ کی سائٹ استعمال کرنی ہوگی ۔ جو کہ یوں ہے ، اس پر کلک کرنے سے درخواست کاصفحہ  کھل جائے گا https://nullaostalavoro.interno.it.اس سائٹ میں آپکو اپنی ای میل درج کرنا ہو گی ، مالک کا کودیچے فسکالے، پارتیتا ایوا یا IVAٹیکس نمبر جو کہ مالک نے درخواست f24یا فارم پر اس وقت لکھا تھا ، جب اس نے 1000 یورو کا ٹیکس جمع کروایا تھا ۔ اسکے بعد آپکو passwordیا خفیہ کوڈ درج کرنا ہوگا اور آخر میں غیر ملکی کی شناخت کا درج کرنا ہوگا ، یہ وہی شناخت ہوگی جو کہ مالک نے ایک ہزار یورو کا ٹیکس جمع کرواتے وقت لکھی تھی ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

کشتی کے زریعے 19 پاکستانی اٹلی میں داخل

روم۔ 24 نومبر 2012 ۔۔۔۔ کل رات اٹلی کے جنوبی سمندر کالابریا کے کنارے پر کشتی کے زریعے 19 پاکستانی  غیر قانونی طور پر اٹلی میں داخل ہو گئے ہیں ۔ پولیس نے انہیں گرفتار کرتے ہوئے غیر ملکیوں کے سنٹر میں روانہ کردیا ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ شناخت کے بعد پتا چلا ہے کہ تمام غیر ملکی پاکستانی ہیں اور یہ لوگ سمندر کے زریعے اٹلی میں داخل ہوئے ہیں ۔ پاکستانیوں کے کپڑے گیلے تھے اور وہ سردی سے کانپ رہے تھے ۔ اٹلی کی انسانی ہمدردی کی ایسوسی ایشن Misericordiaنے فوری طور پر ان جوانوں کو کمبل اور گرم کپڑے مہیا کردیے اور انہیں کھانے پینے کا سامان بھی دیدیا گیا ۔ پولیس نے بتایا کہ یہ لوگ رات کے وقت کنارے پر کشتی کے زریعے لائے گئے تھے اور کشتی والا جلدی سے دوڑنے میں کامیاب ہوگیا ہے ۔ پاکستانیوں کو Crotone  کے سنٹر میں منتقل کر دیا گیا ہے ۔ ان لوگوں سے سوال و جواب کیے جائیں گے اور اسکے بعد یہ فیصلہ کیا جائے گا کہ انہیں سیاسی پناہ کی درخواست دی جائے یا پھر ملک بدر کردیا جائے ۔ تصویر میں کروتونے سنٹر کا منظر ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

اٹلی میں پیدا ہونے والے بچے 18 فیصد غیر ملکی ہیں

روم۔ 21 نومبر 2012 ۔۔۔۔ ایک رپورٹ کے مطابق بتایا گیا ہے کہ اٹلی میں پیدا ہونے والے بچے 18 فیصد سے زیادہ غیر ملکی ہیں ۔ یعنی یہ بچے اٹلی میں پیدا ہوئے ہیں لیکن انکے والدین غیر ملکی ہیں ۔ 2010 کی نسبت 2011 میں 7،28 فیصد غیر ملکی بچے زیادہ پیدا ہوئے ہیں ۔ صرف لومبردیا، وینیتو، لاسیو اور امیلیا رومانیا میں 58 فیصد سے زیادہ غیر ملکی بچے پیدا ہوئے ہیں ۔ اٹلی کی ایک فا‎ؤنڈیشن Fondazione Leone Moressaنے اس ریسرچ کو حال ہی میں شائع کیا ہے ۔ 2011 میں لومبردیا میں 25 ہزار غیر ملکی بچے پیدا ہوئے ہیں ۔ اسی طرح دوسرے علاقوں میں بھی غیر ملکی بچے 11 فیصد سے زیادہ پیدا ہوئے ہیں ۔ سب سے زیادہ غیر ملکی بچے امیلیا رومانیا میں پیدا ہوئے ہیں ، جہاں پاکستانی بھی اکثریت میں آباد ہیں ۔ صرف پراتو شہر میں 37 فیصد سے زیادہ غیر ملکی بچے پیدا ہوئے ہیں ۔ بریشیا میں 8،33 فیصد غیر ملکی بچے 2011 میں پیدا ہوئے ہیں ، یہاں بھی پاکستانی بچوں کی تعداد قابل زکر ہے ۔ مودینا اور ریجو امیلیا میں بھی 33 فیصد سے زیادہ غیر ملکی بچے پیدا ہوئے ہیں ۔ غیر ملکی حاملہ عورتوں کی عمر تقریبا 28 سال تھی جبکہ اٹالین عورتوں کی عمر 32 سال ریکارڈ کی گئی ہے ۔ غیر ملکی عورتیں عام طور پر 04،2 فیصد بچوں کی ماں بنتی ہیں اسکے برعکس اٹالین عورتیں 3،1 فیصد بچوں کی ماں بنتی ہیں ، ہم کہہ سکتے ہیں کہ غیر ملکی عورتیں اٹالین عورتوں سے زیادہ بچے پیدا کرتی ہیں ۔ ریسرچ کے مطابق یہ بتایا گیا ہے کہ اگر غیر ملکی اپنے بچے یہاں پیدا کرتے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ وہ اس ملک میں پکا رہنے کا ارادہ رکھتے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com