Sunday, Jan 20th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

اہم خبریں

بیرون ملک پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دیا جائے ، سیاسی پارٹیاں

12 نومبر 2012۔۔۔ پاکستان کی عدالت عظمیٰ نے حال ہی میں تحریک انصاف کی جانب سے دائر کردہ ایک درخواست پر سمندر پار پاکستانیوں کو بیرون ملک رہتے ہوئے انتخابات میں حق رائے دہی کے استعمال کے طریقہ کار طے کرنے کی بات کی، جس کے لئے ’پوسٹل بیلٹ‘ کو آسان طریقہ قرار دیا گیا ہے۔بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی تعداد تقریباً 90لاکھ ہے جن میں سے37 لاکھ کے پاس ’نائی کوپ‘ یعنی قومی شناختی کارڈ برائے سمندر پار پاکستانی موجود ہے۔ اس کارڈ کے تحت انہیں ووٹ کا حق حاصل ہے مگر کوئی واضح طریقہ کار نہ ہونے کی وجہ سے ووٹ دینے سے رہ جاتے ہیں۔تحریک انصاف کے بین الاقوامی شاخ کے سیکریٹری ہمایوں مہمند کا کہنا ہے کہ ان کی جماعت سمجھتی ہے کہ سمندر پار پاکستانی ملک کا سب سے بڑا اثاثہ ہیں اور وہی ملک دوبارہ تعمیر کریں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ ان کے لئے بیرون ملک رہتے ہوئے ہی ووٹ ڈالنے کا طریقہ کار واضح ہونا چاہیے۔ہمایوں مہمند سمجھتےہیں کہ اسی فیصد سمندر پار پاکستانی تحریک انصاف کی طرف مائل ہیں۔ اس سلسلے میں دو قوانین 1974 کے پیپلز رپریزینٹیشن ایکٹ اور 1974 کے الیکٹورل رول ایکٹ میں ترامیم کی ضرورت ہے جو پارلیمنٹ کا کام ہےمگر انہیں آئندہ انتخابات سے پہلے ایسا ہوتا نظر نہیں آتا کیونکہ پارلیمان میں ایسے لوگ بیٹھے ہیں جو تبدیلی نہیں چاہتے۔دوسری طرف حکومت کی اتحادی جماعت متحدہ قومی موومنٹ اس سلسلے میں ایک پرائیوٹ بل پارلیمنٹ میں پیش کرنے جارہی ہے۔ ایم کیو ایم سے تعلق رکھنے والے وفاقی وزیر برائے سمندر پار پاکستانی ڈاکٹر فاروق ستار کا موقف ہے کہ بیرونِ ملک مقیم پاکستانی ملک کی آبادی کا چار سے پانچ فیصد ہیں جو قومی خزانے کو چودہ ارب ڈالر کی مالی ترسیلات دیتے ہیں، اور انہیں ملکی سیاست میں اپنا کردار ادا نہ کرنے دینا منفی ہوگا۔وفاقی وزیر کے مطابق سمندر پار پاکستانیوں کو حق رائے دہی تو حاصل ہے مگر طریقہ کار نہ ہونا رکاوٹ ہے۔ فاروق ستار نے بتایا کہ اب وہ  پیپلز رپزینٹیشن ایکٹ کی شق 29 میں ترمیم کر رہے ہیں جس کے بعد پوسٹل بیلٹ کو طریقہ کار بنانے پر کام ہوگا۔ ان کا کہنا ہے کہ قانون میں ایسی ترمیم کی جائے گی کہ ڈاک خانے کے ساتھ کورئیر سروس بھی شامل کی جائے۔لیکن کیا آئندہ انتخابات سے پہلے کوئی طریقہ کار بنانا ممکن ہے؟ ڈاکٹر فارق ستار کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کو شیڈول بنانا ہوگا کہ انتخابات سے پہلے ملک سے باہر مقیم نوے لاکھ پاکستانیوں کے ووٹ آجائیں، یا پھر بیرون ملک ووٹ کی سہولت کم از کم ان سینتیس لاکھ افراد کو ضرور ہونی چاہیے جن کے پاس نائی کوپ ہے۔الیکشن کمیشن آف پاکستان، عدالت عظمیٰ کی ہدایت پر امریکہ میں رائج غائبانہ ووٹنگ کے طریقہ کار کا مطالعہ کر رہا ہے۔ اس طریقہ کار کے تحت ووٹر اپنے آبائی علاقے میں اپنا اندراج کرتے ہیں اور ہر سال پوسٹل بیلٹ کی درخواست کرتا ہے جس کے بعد اس کا نام اس فہرست میں شامل ہو جاتا ہے جنہیں بیلٹ پیپر بھیجا جاتا ہے۔ ووٹر بیلٹ پیپرپر ووٹ کاسٹ کرکے اسے ڈاک سے یا پھر ای میل کے ذریعے واپس بھیج دیتا ہے۔الیکشن کمیشن کے ایڈیشنل سیکریٹری محمد افضل کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن نےعدالت کے حکم پر پوسٹل بیلٹ کے لیے قانون وزارت قانون کو بھیج دیا ہے، اس پر فوری عملدآمد کے لیے سیاسی جماعتوں کا اتفاق رائے ہونا ضروری ہے۔ پی پی پی کے وزیر داخلہ رحمان ملک نے بھی اٹلی کا دورہ کرتے ہوئے یہی بیان دیا ہے کہ تارکین وطن پاکستان کی معیشت میں اہم کردار ادا کرتے ہیں ، اس لیے انہیں ووٹ کا حق دیا جائے ۔ انہوں نے زور دیا کہ بیرون ملک پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے میں نواز شریف کی پارٹی کا تعاون ضروری ہے ۔

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

کمونٹی کے مسائل کو اولیت دی جائے، بشیر امرے والا

روم۔ 4 نومبر 2012 ۔۔۔ وومن ایسوسی ایشن کی جانب سے عید ملن پارٹی کے فنگشن میں روم کے سفارتخانے میں ہونے والی تقریب میں پاکستان کمونٹی کے صدر بشیر امرے والا نے اپنی تقریر  کے دوران تمام اہل محفل، میزبان تہمینہ جنجوعہ اور وزیر داخلہ رحمان ملک کو اسلام علیکم کہا اور تمام لوگوں نے واعلیکم سے جواب دیا ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی پاکستان کی پہلی سیاسی جماعت ہے ، جس نے تمام تر مسائل کے باوجود اپنے 5 سال کا عرصہ مکمل کیا ہے اور یہ سب صدر آصف علی زرداری کی حکمت عملی کا نتیجہ ہے ۔ پیپلز پارٹی نے اپنے مینڈیٹ کے دوران دہشت گردی کا خاتمہ کیا اور صوات میں آپریشن کرتے ہوئے دہشت گردوں کو شکست دی ۔ انہوں نے کمونٹی کی بات کرتے ہوئے وزیر داخلہ سے کہا کہ آپکے چند دوست کہتے ہیں کہ آپ جو وعدہ کرتے ہیں ،اسے پورا بھی کرتے ہیں تو میں آپ سے گزارش کرتا ہوں کہ آپ ہمارے مسائل حل کرنے کی کوشش کریں ۔ ہم جب پاکستان جاتے ہیں تو ہمیں ائرپورٹ پر تنگ کیا جاتا ہے ، ہمارے گھروں میں ڈاکے مارے جاتے ہیں اور ہمارے بچے اغوا کرتے ہوئے تاوان مانگا جاتا ہے، اس لیے ہمیں تحفظ مہیا کیا جائے ۔ ہماری خواہش ہے کہ ہمیں پاکستان کے الیکشن میں حصہ لینے کے لیے ووٹ کا حق دیا جائے ، روم سے دوبارہ پی آئی اے کی فلائٹ چلائی جائے، 50 سے 60 پاکستانی جو کہ ایف آئی اے کی جانب سے بلیک لسٹ قرار دیے گئے ہیں ، ان پر یہ پابندی ختم کی جائے ، نادرہ کے شناختی کارڈ اور ڈیجیٹل پاسپورٹ بنانے کے لیے میلان کونصلیٹ میں بھی مشینیں لگائی جائیں اور عملہ بھرتی کیا جائے ۔ ہماری کمونٹی کی اکثریت شمالی اٹلی میں آباد ہے اور انہیں پاسپورٹ اور شناختی کارڈوں کے لیے روم کے چکر لگانے پڑتے ہیں اور انکے کئی دن ضائع ہوجاتے ہیں ۔ بشیر امرے والا نے کہا کہ میں ایمبیسڈر تہمینہ جنجوعہ اور میلان کونصلیٹ کا شکریہ ادا کرتا ہوں ، جن کی مدد سے موجودہ امیگریشن میں 11 ہزار سے زائد پاکستانیوں نے اپنی پوزیشن لیگل کروانے کے لیے درخواست دی ہے ۔ ایمبیسڈر تہمینہ جنجوعہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ آج دن تو خواتین کا ہے ، جنہوں نے عید ملن پارٹی کا انتظام کرتے ہوئے بچوں، بزرگوں اور اہل وطن کو ایک جگہ اکٹھا کردیا ہے ۔ اس قسم کے ملاپ سے پاکستانی تہذیب اجاگر ہوتی ہے ۔ میں زیادہ وقت نہیں لوں گی کیونکہ میری خواہش ہے کہ مہمان خصوصی وزیر داخلہ رحمان ملک آپکے سوالوں کے جوابات دیں اور اپنے خیالات کا اظہار کریں ۔ تصاویر میں وزیر داخلہ رحمان ملک کمونٹی کے لیڈران رؤف خان، راؤ نصیر ، عامر وزائچ اور چوہدری شبیر آف ناپولی سے ملاقات کرتے نظر آ رہے ہیں اور ایمبیسی کے ہال میں چوہدری بشیر امرے والا معزز مہمانان گرامی کے سامنے اپنے خیالات کا اظہار کر رہے ہیں ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت اتوار, 04 نومبر 2012 23:33

منہاج القرآن بلزانو کی پی ڈی پارٹی سے میٹنگ

روم۔ منہاج القرآن بلزانو انٹرنیشنل نے 18 اکتوبر 2012 کے روز اٹلی کی دوسری بڑی سیاسی جماعت پی ڈی کے ساتھ میٹنگ کی ۔ ڈیموکریٹ پارٹی بلزانو کے سیکرٹری کالو کوستا اور دارالخلافہ روم میں موجود پارٹی کے امیگریشن کے ڈائریکٹر فرناندو بیاگو نے منہاج القرآن کے عہدیداران سے باہمی بات چیت کرتے ہوئے مستقبل میں سیاسی پلیٹ فارم بنانے کا عہد کیا ۔ انہوں نے یقین دلایا کہ وہ غیر ملکیوں کی فلاح و بہبود کے لیے ملکر کام کرنے کے خواہاں ہیں ۔ اس میٹنگ میں منہاج القرآن بلزانو کے صدر محمد ندیم، ناظم اعلی محمد عبدالجبار، نائب ناظم مالیات محمد عدنان اور منہاج یوتھ کے محمد جنید نے شرکت کی ۔ یاد رہے کہ یہ ملاقات منہاج القرآن بلزانو کے لیے مستقبل میں بڑی سودمند ثابت ہوگی ۔

NAZIM MQI BOLZANO

 328 84 19 722 ABDUL JABBAR

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت جمعرات, 01 نومبر 2012 16:41

امیگریشن کی مدت طویل کرنے کی درخواست

روم۔ 11 اکتوبر 2012 ۔۔۔ اٹلی کی مزدور یونین کے لیڈر Guglielmo Loyنے موجودہ حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ امیگریشن کی مدت طویل کرنے پر غور کرے ۔ انہوں نے کہا کہ اب تک صرف 80 ہزار کے قریب درخواستیں جمع کروائی گئی ہیں ۔ اٹلی میں 5 لاکھ کے قریب غیر ملکی غیر قانونی طور پر رہائش پزیر ہیں ، اس لیے ہم کہہ سکتے ہیں کہ صرف 20 فیصد غیر ملکیوں کی درخواستیں جمع کروائی جائیں گے ۔ ہم امید کرتے ہیں کہ حکومت امیگریشن کی مدت 15 اکتوبر کی بجائے 15 نومبر کردے گی ۔ مدت بڑھانے سے کافی غیر ملکی درخواستیں جمع کروا سکیں گے ۔ اس کے علاوہ ضروری ہے کہ وزارت داخلہ ایک سرکولر یا قانون کے زریعے امیگریشن کی شرا‏ئط اور لوازمات کے بارے میں بھی شفاف بیانات جاری کرے ۔ اٹلی کی امیگریشن اور انٹیگریشن کے وزیر ریکاردی نے آج باری شہر میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ امیگریشن کی تاریخ ختم ہونے والی ہے ، اس لیے تمام مالکان سے التماس کی جاتی ہے کہ وہ جلد سے جلد درخواستیں جمع کروا دیں۔ تاریخ ختم ہونے کے بعد اگر مالکان غیر قانونی تارکین وطن کو غیر قانونی کام دیں گے تو انہیں یورپین قانون کے مطابق سخت سزا اور جرمانہ کیا جائے گا ۔alt

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

امیگریشن میں ٹیکس جمع کروانے کا طریقہ کار

روم ، یکم اکتوبر 2012 ۔۔۔ اب تک موجودہ امیگریشن میں صرف 40 ہزار درخواستیں جمع ہوئی ہیں اور اٹلی کے پنشن اور پراویدنٹ دفتر انپس نے غیر ملکی ورکروں کے ٹیکس جمع کروانے کا طریقہ کار پیش کر دیا ہے ۔ موجودہ امیگریشن میں مالکان غیر ملکی درخواست جمع کروائیں گے اور اس فارم کی بنا پر غیر ملکی ملازم کے نام وغیرہ کو دیکھ کر اسے ایک کودیچے فسکالے یا ٹیکس نمبر جاری کردیا جائے گا ۔ یہ کودیچے فسکالے فرضی ہوگا اور پرمیسو دی سوجورنو ملنے کے بعد غیر ملکی کو l’Agenzia delle Entrateیا ٹیکس کے دفتر والے پکا کودیچے فسکالے جاری کر دیں گے ۔ زراعت کے علاوہ تمام نجی ادارے یا خاندان انپس میں ٹیکس معمول کے مطابق رسیدوں کے زریعے جمع کروائیں گے ، جبکہ زراعت کے ملازمین کے ٹیکس DMAGفارم کے زریعے ہر تین ماہ بعد جمع کروائے جائیں گے ۔ تمام غیر ملکیوں کے جمع شدہ ٹیکسوں کی رسیدیں سنبھال کر رکھی جائیں گی اور جب غیر ملکی اپنے مالک کے ساتھ

Sportello Unico per l’Immigrazioneیا متحدہ امیگریشن کے دفتر میں سوجورنو کا کنٹریکٹ کرنے کے لیے جائے گا تو انہیں یہ تمام رسیدیں پیش کرنی ہونگی ۔ اسکے علاوہ انپس یا Inpsدفتر یہ بھی چیک کرے گا کہ اگر غیر ملکی کا مالک ٹیکس جمع کروا رہا ہے ۔ انپس والے صرف ان مالکان کے اداروں کے ٹیکس چیک کریں گے ، جنہوں نے غیر ملکی کی امیگریشن کے لیے درخواست جمع کروائی ہے ۔ انپس کے حکام نے پہلے 14 ستمبر کو اعلان کیا تھا کہ وہ ان اداروں کے تمام ملازمین کے ٹیکس چیک کریں گے لیکن اب انہوں نے صرف امیگریشن حاصل کرنے والے غیر ملکیوں کے لیے محدود کردیے ہیں ۔ تحریر، ایلویو پاسکا ، ترجمہ اعجاز احمد ۔

.

alt

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com