Sunday, May 26th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

خبریں

اٹلی میں نئی حکومت کا آغاز

روم، 28 اپریل 2013 ۔۔۔ اٹلی میں چند ماہ قبل الکیشن ہونے کے بعد تین پارٹیوں میں ووٹ تقسیم ہو گئے اور کوئی بھی اکثریت نہ ہونے کیوجہ سے حکومت نہ بنا سکا ۔ دو دن قبل اٹلی میں پی ڈی ایل یعنی دائیں بازو کی پارٹی اور پی ڈی یعنی بائیں بازو کی پارٹی نے ملکر حکومت بنا دی ہے ۔ وزیر اعظم ایک جوان سیاست دان انریکو لیتا ہیں جن کا تعلق پی ڈی سے ہے ۔ انہوں نے اپنے وزرا میں ایک افریقی عورت کو بھی انٹیگریشن کا وزیر منتخب کیا ہے ۔ لیتا نے کہا کہ وہ اس حکومت کے زریعے اٹلی کو معاشی بحران سے باہر نکالنے کی کوشش کریں گے اور اسکے علاوہ اٹلی میں آباد غیر ملکیوں کے لیے مثبت قوانین بنائیں گے ۔ یاد رہے کہ گزشتہ حکومت غیر ملکیوں کے خلاف نہیں تھی لیکن حق میں بھی نہیں تھی ۔ اسکے برعکس پی ڈی کی حکومت غیر ملکیوں کے خوش آئند ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی پارٹی کے زریعے 2 غیر ملکیوں کو قومی اسمبلی کا ممبر بننے میں مدد کی ہے اور ہم چاہتے کہ اٹلی میں آباد غیر ملکی ہر شعبے میں شمولیت کریں ۔ اٹلی کی موجودہ حکومت میں لیگا نورد پارٹی شامل نہیں ہوئی ۔ نئی حکومت میں 13 وزرا مرد اور 7 عورتیں منتخب کی گئی ہیں ۔ تصویر میں اٹلی کے نئے وزیر اعظم انریکو لیتا

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

کام تلاش کرنے کی پرمیسو دی سوجورنو

28 جون 2012 سے پرمیسودی سجورنوبرائے کام کی تلاش کی مدت ٦ ماھ سے بڑھا کر ایک سال کر دی گئی ھے۔ یہ سجورنو لگاتار ٢ دفعہ نھیں لے سکتے۔ دوسری بار کام کے کنٹریکٹ سے رینیو ھو گی اور نارمل کام کی سجورنو ھو گی۔کام ختم ھونے کے چالیس دن کے اندر دفتر روز گار میں اندراج کروا دینا چاہیےاس کے بعد بھی کرایا جا سکتا ھے۔ کٹ میں شامل فارم نمبر ١ اور ٢ پر کیا جاءے گا- کارآمد پاسپورٹ اور ختم شدہ سجورنو کی فوٹو کاپیوں کے علاوہ افیچو پر امپییگو میں اندراج کا لیٹرمنسلک کرنا ضروری ھے۔ اس سجورنوکے اخراجات بھی کام کی سجورنو کے برابر ھیں۔ (وحید پرویز-بریشیا۔ فون ونڈ 00393398705106)

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

میلان کونصلیٹ کا نیا ایڈریس

بریشیا، 5 اپریل 2013 ۔۔۔ اٹلی کے شمالی علاقے میں آباد پاکستانی بہن بھائیوں کو مطلع کیا جاتا ہے کہ پاکستانی کونصلیٹ کے جاری کردہ نوٹس کے مطابق میلان کونصلیٹ کی بلڈنگ تبدیل کردی گئی ہے اور اب نیا ایڈریس یوں ہے ۔

Via Rosa Massara de Capitani, 11 Milano ( Bovisa )  CP. 20158

میلان کونصلیٹ 12 اپریل تک بند رہے گی ، ایمرجنسی کی صورت میں اس نمبر پر فون کریں
3803751073

پرانی بلڈنگ میں دفاتر بند کردیے گئے ہیں اور اب تمام کام نئے ایڈریس والی بلڈنگ میں نبھایا جائے گا ۔ نئے ایڈریس پر بس سے آنے کے لیے آپکو سنٹرل اسٹیشن سے بس نمبر 91، 92، ٹرام 2، اور ٹرین trenordپکڑنی ہو گی اور Cadornato  سے Bovisaجانا ہو گا ۔ اسکے علاوہ Garibaldi  اور Rogoredoسے بھی Bovisaتک ٹرین سے آسکتے ہیں ۔ مزید معلومات کے لیے  ہمارے بریشیا کے رپورٹر حاجی پرویز سے رابطہ کریں ۔ 3398705106

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

آخری تازہ کاری بوقت جمعہ, 05 اپریل 2013 19:33

ریجو امیلیا میں محمد ارشد وفات پاگئے

ریجو امیلیا ( سید مسعود شیرازی سے ) گواستالہ کمونے میں ایک پاکستانی محمد ارشد حرکت کلب بند ہونے سے وفات پاگئے ہیں ۔ مرحوم کا تعلق گجرات کے گاؤں ساہنوال کلاں سے تھا ۔ حالیہ امیگریشن میں کاغذات جمع کروا رکھے تھے کہ دنیا سے رخصتگی کا وقت آگیا ۔ مرحوم عمر رسیدہ تھے اور 6 ماہ قبل موسمی کام کا ورک پرمٹ حاصل کر کے اٹلی آئے تھے ۔ یہاں پہنچ کر مکمل حالات سے آگاہی ہوئی کہ کاغذات اور کام کیسے ملتے ہیں ۔ مایوس ہر کر اسپین چلے گئے ، گزشتہ سال جب امیگریشن میں کاغذات حاصل کرنے کا موقع آیا تو پھر اٹلی آکر کاغذات اپلائی کردیے ۔ ساتھ رہنے والے دیگر پاکستانیوں سے پتا چلا کہ مرحوم ان دنوں کافی زہنی دباؤ کا شکار تھے کیونکہ اٹلی آنے سے لیکر اب تک کافی رقم خرچ ہو چکی تھی اور پھر پیچھے جواں سال بیٹیوں کا بوجھ بھی سر پر تھا ، یہی غم انکی موت کا سبب بن گیا ۔ گواستالہ اسلامک سنٹر کے ممبران اور انتظامیہ نے اپنی کوشش سے ایک معقول رقم جمع کرکے میت کے ساتھ روانہ کردی ہے ۔

میں اپنے بھائیوں سے ایک دردمندانہ اپیل کرنا چاہتا ہوں کہ پیچھے پاکستان میں بے شک معاشی حالات ابتر ہیں لیکن جتنے لاکھ دیکر ہم یورپ کا رخ کرتے ہیں ، پھر یہاں آکر مزید لاکھ دیکر کاغذات حاصل کرتے ہیں ، کام کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھاتے ہیں اور کیسے حالات کا سامنا کرتے ہیں ، ان سے ہم بخوبی واقف ہیں ۔ اگر ہمارا کوئی عزیز یا دوست اٹلی آنے کے لیے کہے تو اسے صحیح حالات بتائیں ، تاکہ کوئی اور ارشد مستقبل کے سہانے خواب دکھ کر اپنی جان کی بازی نہ لگائے اور اپنے ساتھ ساتھ پورے خاندان کا مستقبل تباہ نہ کرے ۔ تصویر میں گواستانہ کی گلی جہاں مرحوم کبھی سیر کیا کرتے تھے ۔ 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

روم ایمبیسی میں یوم پاکستان کا انعقاد

روم، 24 مارچ 2013 ۔۔۔ اٹلی کے دارالخلافہ روم میں موجود پاکستانی ایمبیسی میں ہر سال کی طرح اس سال بھی 23 مارچ کے موقع پر یوم پاکستان کا انعقاد کیا گیا ۔ کمرشل اتاشی عامر سعید نے تمام مہمانان گرامی کا شکریہ ادا کیا اور محفل کا آغاز تلاوت کلام پاک سے کیا گیا ۔ تلاوت کے بعد تاشقین نے نعت شریف پڑھتے ہوئے روحانی ماحول پیدا کردیا ۔ اسکے بعد سفارتکارہ میڈم تہمینہ جنجوعہ نے سبز اور سفید پرچم ہوا میں لہرایا اور اس موقع پر قومی ترانہ گایا گیا ۔ روم کی ہوا میں پاکستانی پرچم کا لہرانا تارکین وطن کو ایک خاص قسم کا جذبہ، سرور اور ولولہ مہیا کرتا ہے ۔ اس محفل کے آرگنائزر ہیڈ آف چانسری شہباز کھوکھر اور عامر سعید نے اچکن پہن رکھی تھی اور وہ محفل کی خاص رونق تھے ۔ میڈم تہمینہ جنجوعہ نے اپنی قلیل تقریر کے دوران کہا کہ 23 مارچ 1940 کے روز منٹو پارک میں یہی نعرہ گونج رہا تھا کہ " لے کر رہیں گے پاکستان " اور یہی ہوا کہ ہم نے پاکستان نے لیا ۔ انہوں نے پاکستانی وزیر اعظم اور صدر کی طرف سے تمام تارکین وطن کو یوم پاکستان کی مبارکباد پیش کی اور کہا کہ اگر آپ لوگ آج اس محفل میں تشریف لائے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ آپ اپنے پیارے وطن سے محبت کرتے ہیں ، آپ لوگ اس ملک میں پاکستان کے اصل سفارتکار ہیں اور آپ کا فرض ہے کہ آپ پاکستان کو متعارف کروانے کے لیے اہم کردار ادا کریں ۔ میڈم تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ پاکستان کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے ، ہمیں متحد رہنا ہو گا اورملک سالمیت کے لیے کام کرنا ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ایک سال میں پیارے وطن کو متعارف کروانے کے لیے اور پاک اٹلی تعلقات کو مزید ہموار کرنے کے لیے کافی کام کیا ہے ۔ پاکستان کے کلچر پر محفلیں منعقد کی گئی ہیں ۔ اسکے علاوہ جب ہماری وزیر خارجہ اٹلی میں اپنے ہم منصب سے ایک دن کے لیے ملنے کے لیے آئی تھیں تو ہم نے انکے زریعے اٹلی کے وزیر خارجہ کو کمونٹی کے مسائل حل کرنے کے لیے چند نقات پیش کیے تھے ۔ جن میں ڈرائیونگ لائسنس کی قبولیت اور اٹالین ایمبیسی اسلام آباد میں تارکین وطن کے کاغذات کے ترجمے میں آسانی جیسے مسائل کا زکر تھا ۔ میڈم تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ وہ کینڈا میں ایک تقریب کے دوران  تین ہزار کے قریب کمونٹی کے افراد سے ملی ہیں اور وہاں سب سے اہم بات یہ تھی کہ ہم اپنی دوسری نسل یعنی بچوں کی تعلیم و تریبت کے بارے میں سوچیں اور اب اٹلی میں بھی ہم یہی سوچ رہے کہ ہم اپنے بچوں کی پرورش کے بارے میں منصوبہ بندی کریں ، اسی مقصد کی خاطر ہم نے ہر سال ایک بچی اور ایک بچے کی ہنر مندی کے جواب ایک ایوارڈ رکھ دیا ہے ۔ یعنی اٹالین ہائی سکولوں میں اچھی پوزیشن لینے والے بچوں کے لیے 1000 یورو کا انعام رکھ دیا گیا ہے جو کہ ہر سال 2 بچوں کو دیا جائے گا ، اسی طرح اٹلی کے مختلف شہروں میں آباد کمونٹی کے افراد بھی اپنے شہروں میں ایک علاقائی ایوارڈ کا بندوبست کریں گے جو کہ اس شہر میں کامیاب بچوں کو دیا جائے گا ۔ میڈم تہمینہ جنجوعہ نے مہمانان گرامی میں موجود مسیحی برادری کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ مسیحی بعد میں اور پہلے پاکستانی ہیں ۔ ایمبیسڈر کی تقریر کے بعد بچوں نے قومی نغمے گائے اور تبلے کی دھنک نے محفل کی رونق کو دوبالا کیا ۔ بچوں نے پاکستانی جھنڈے پکڑ رکھے تھے اور کافی خوبصورت لگ رہے تھے ۔ تقاریر کے بعد چارٹ، سموسے، گجریلے اور چائے کا دور چلا اور مہمانان گرامی نے ایک دوسرے سے گفت و شنید کی ۔ اس محفل میں سابق صدر پرویز مشرف کے بھائی جاوید مشرف بھی موجود تھے ۔ تحریر، اعجاز احمد تصاویر عدن کمبوہ۔ فنگشن کی تمام تصاویر دیکھنے کے لیے عدن کی نیچے دی گئی فیس بک کا ملاحظہ فرمائیں ۔ http://www.facebook.com/messages/adankamboh

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com