Friday, Feb 22nd

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

لیگل گائیڈ

خاندان کو بلانے کا طریقہ کار

 کون اپنے خاندان کو بلا سکتا ہے

اگر آپ غیر ملکی ہیں اور آپ کے پاس لمبی مدت کی یا کارتا دی سوجورنو، عام کام کی سوجورنو، بزنس کی سوجورنو، تعلیم اور مذہبی مشن کی سوجورنو ہے اور اسکی مدت ایک سال سے زیادہ ہے تو آپ اپنے خاندان کے افراد کے لیے ویزہ حاصل کر سکتے ہیں ۔

 خاندان کے کونسے افراد یہ ویزہ حاصل کر سکتے ہیں

۔ بیوی یا خاوند

۔ کم سن بچے، اگر یہ بچے ماں یا باپ کی کسی دوسری شادی کی اولاد  ہیں تو ان کو بھی بلایا جا سکتا ہے ، بشرطیکہ ان کو دوسرا سابقہ خاوند یا سابقہ بیوی آنے کی اجازت دے ۔ بچے غیر شادی شدہ ہونے لازمی ہیں ۔

۔ وہ بالغ بچے جو کہ جسمانی طور پر معزور ہیں اور اپنی دیکھ بال کرنے سے قاصر ہیں ، ان کو بھی بلایا جا سکتا ہے

۔ وہ والدین جن کی کوئی دیکھ بال کرنے والا نہیں ہے اور وہ غیر ملکی کے ملک میں آباد ہیں ، ان کو بھی خاندان کا ویزہ حاصل ہو سکتا ہے ۔ انکی عمر 65 سال سے زیادہ ہونی لازمی ہے ۔

 متحدہ دفتر میں خاندان کے ویزے کے لیے کیا کرنا ہوتا ہے

اگر آپ نے اوپر درج کردہ خاندان کے افراد یا بچوں کو بلانا ہے تو آپ ڈاک خانے میں جا کر ان کے لیے نلا اوستا یا این او سی سرٹیفکیٹ حاصل کر سکتے ہیں ۔ اس مقصد کے لیے آپ کو  ویلڈ پاسپورٹ، پر میسو دی سوجورنو اور وہ تمام کاغذات درخواست کے ساتھ نتھی کرنا ہو نگے جو کہ حکومت کی طرف سے مطلوب ہیں ۔ اس کے علاوہ یہ ثابت کرنا ہو گا کہ آپ کا گھر قانونی طور پر درست ہے اور آپ کی بچت اس بچت کے برابر ہے جو کہ خاندان بلانے کے لیے لازمی ہے ۔

۔ خاندان کے وہ افراد جو کہ اٹلی میں آنے کے خواہشمند ہیں ، ان کو اپنے ملک میں موجود اٹالین ایمبیسی یا کونصلیٹ میں جانا ہو گا اور کاغذات کے زریعے یہ ثابت کرنا ہو گا کہ ان کا اٹلی میں رہنے والے شخص سے کیا رشتہ ہے ۔ اس کے علاوہ معزور اور ضعیف لوگوں کو بھی یہ ثابت کرنا ہو گا کہ ان کی کیا بیماری ہے اور ان کی دیکھ بال کرنے والا کوئی نہیں

۔ متحدہ دفتر کاغذات جمع کرنے کے بعد آپ کو ایک رسید جاری کر دے گا ۔

۔ اس کے بعد اس دفتر کے حکام آپ کے کاغذات کی پڑتال کریں گے اور  آپ کو ہاں یا نہ کا جواب دیں گے ۔ ہاں کی صورت میں آپ کو نلا اوستا جاری کیا جائے گا جس کی اطلاع اٹالین ایمبیسی کو بھی کر دی جائے گی ۔

۔ نلا اوستا کی درخواست کے 180دن گزر جانے کے بعد دوسرے ملک میں رہنے والی بیوی یا مرد متحدہ دفتر کی رسید کے ساتھ (جو کہ نلا اوستا حاصل کرنے کے لیے دی گئی تھی )  اور متعلقہ کاغذات کے ساتھ ویزہ حاصل کرنے کے لیے اٹالین ایمبیسی میں اپلائی کرے گا یا کرے گی ۔

۔ خاندان کا فرد جب ویزہ حاصل کر کے اٹلی پہنچ جائے گا ، اب اس کا حق ہو گا کہ یہ ڈاک خانے میں جا کر ایک فارموں کی کٹ حاصل کرے گا ، اسے پر کرے گا اور اس پر دستخط کرنے کے بعد اسے اپنے متعلقہ تھانے کے لیے روانہ کر دے گا ۔ اس کٹ کے ساتھ پر میسو دی سوجورنو حاصل کرنے کی درخواست بھی نتھی کرنی ہو گی جو کہ آپ کو متحدہ دفتر سے جاری ہو گی ۔ ڈاک خانے والے آپ کو ایک رسید جاری کریں گے ،  ۔ اٹلی میں پہنچ کر آپ کی بیوی 8 دنوں کے اندر متحدہ دفتر یا sportello unicoمیں جائے گی اور اسے اپنے ساتھ ڈاک خانے کی کٹ بھی ساتھ لیجانی ہو گی  ۔ اگر آپ کو تاہی کریں گے تو 8 دنوں کے بعد آپ کی بیوی کو اٹلی میں غیر قانونی شہری تصور کیا جائے گا ۔

 

۔ خاندان کی پر میسو دی سوجورنو کے ساتھ آپ ملازمت یا بزنس کر سکتے ہیں ۔ اس کے علاوہ سکول میں داخلہ لے سکتے ہیں ۔ صحت کے حصول کے لیے میڈیکل کارڈ بنا سکتے ہیں ۔

اگر آپ کسی یورپین شہری یا اٹالین شہری کے رشتہ دار ہیں تو آپ کو نلا اوستا حاصل کرنے کی یا اوپر بیان کردہ طریقہ کار نہیں استعمال کرنا ہو گا اور نہ ہی متحدہ دفتر میں جا کر درخواست دینی ہو گی ۔

باقی خاندان کے لوگ بھی ویزہ حاصل کر سکتے ہیں

وہ خاندان کے لوگ جو کہ اٹلی میں خاندانی ویزہ حاصل کر کے آتے ہیں انہیں بھی  حق دیا گیا ہے کہ یہ دوسرے افراد کے لیے ویزہ اپلائی کر سکیں ۔ اگر یہ لوگ کام کر رہے ہیں یا پکا بزنس کر رہے ہیں یا پھر تعلیم یا مشن کے طور پر رہ رہے ہیں اور ان کے پاس ایک سال سے زیادہ عرصے کی پر میسو دی سوجورنو ہے تو یہ خاندان کے افراد کو بلا سکتے ہیں ۔ لازمی بات ہے انہیں بھی ایک قانون کے مطابق گھر اور کم سے کم بچت ظاہر کرنا ہو گی ۔ اس قسم کے نلا اوستا کے لیے آپ کو اسپیشل پروسیکیوٹر کے پاس جانا ہو گا

درخواست کے ساتھ مندرجہ زیل کاغذات نتھی کرنا لازمی ہے

۔ آپ کے شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی

۔ ایک ڈیلیگیشن جس پر یہ ظاہر کرنا ہو گا کہ آپ کا ویزہ حاصل کرنے والے کے ساتھ کیا رشتہ ہے ۔ اور یہ بھی ظاہر کرنا ہو گا کہ آپ اٹلی میں خاندان کا ویزہ حاصل کر کے اٹلی آئے تھے ۔ خاندان کے فرد کو اٹالین ایمبیسی میں جا کر ایک فارم پر کرنا ہو گا ۔ یہ فارم ایمبیسی یا کونصلیٹ کے افسر کے سامنے پر کیا جائے گا ۔

موجودہ حکومت نے سالانہ بچت کا قانون تبدیل کر دیا ہے ۔ 3 اکتوبر 2008 کو ایک قانون 160 کے تحت خاندان بلانے کے قانون میں چند تبدیلیاں کی گئی ہیں ۔ اس قانون کے مطابق ایک غیر ملکی کو سوشل چیک کی رقم 5.142،67 کے علاوہ ہر خاندان کے فرد کے لیے 2.571،33 یورو شو کرنا ہونگے ۔ یعنی اس قبل غیر ملکی کو سوشل چیک کی سالانہ رقم شو کرنا ہوتی تھی لیکن اب سوشل چیک کی رقم کے علاوہ مزید سوشل چیک کی آدھی رقم جمع کرنا ہو گی ۔ یعنی اگر آپ ایک بچے اور بیوی کو اٹلی بلانے کے خواہشمند ہیں تو آپکو سوشل چیک کی رقم 5.142،67 بیوی کے لیے 2.571،33 یورو اور بچے کے لیے 2.571،33 یورو شو کرنی ہو گی ۔ اسکی ٹوٹل سالانہ بچت 10.285،34 بنتی ہے ۔ اگر آپ بیوی اور دو بچوں کو بلانے کے خواہش مند ہیں تو آپ کو 5.142،67 ، بیوی کے لیے 2.571،33 یورو ، پہلے بچے کے لیے 2.571،33 یورو اور دوسرے بچے کے لیے 2.571،33 یورو شو کرنی ہو گی ۔ اس رقم کو اکٹھا کیا جائے تو اسکی رقم 12.856،67 بنتی ہے ۔ اگر آپ بیوی اور تین بچوں کو بلانے کے خواہش مند ہیں تو اس صورت میں آپکی سالانہ بچت 15.427،99 ہونی چاہئے ۔ دو صورتوں میں یہ قانون لاگو نہیں ہو گا ۔ اگر آپ نے انسانی ہمدردی کی پر میسو دی سوجورنو حاصل کر رکھی  ہے یا پھر آپکے بچوں کی عمر 14 سال سے کم ہے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

یورپین کمونٹی کے رشتہ دار کارتا حاصل کر سکتے ہیں

روم ۔۔۔ یورپین کمونٹی کے رشتہ دار کارتادی سوجورنو حاصل کر سکتے ہیں۔ وہ یورپین کمونٹی کے افراد جو کہ اٹلی میں قانونی طور پر رہائش پذیر ہیں ، ان کا حق ہے کہ یہ اپنے کسی غیر یورپین رشتہ دار کو بلا سکیں اور اسکے لیے کارتا دی سوجورنو اپلائی کر سکیں ۔ اٹالین حکومت نے اس نئے یورپین کمونٹی کے قانون کو قبول کر لیا ہے اور اس پر عملدرآمد شروع ہوگیا ہے ۔ اگر آپ یورپین شہری ہیں تو آپ ان رشتہ داروں کو اٹلی میں لیگل کروا سکتے ہیں ۔ میاں یا بیوی، 21 سال سے کم عمر کے بچے ، 21 سال سے زیادہ عمر کے بچے لیکن جن کی پرورش کی ذمہداری آپ پر ہے ۔ آپ کے خرچے پر زندہ رہنے والے والدین ۔  جب ایک یورپین شہری کا رشتہ دار اٹلی میں آئے تو وہ فوری طور پر متعلقہ تھانے میں جا کر کارتا دی سوجورنو کے لیے براہ راست درخواست دے سکتا ہے ۔ اسے مندرجہ ذیل کوائف پورے کرنا ہونگے ۔ وہ ویزہ جس پر غیر ملکی اٹلی میں داخل ہوا ہے ۔ اصل ویزے کی کاپی اور اسکے دو فوٹو کاپیاں ۔ ویلڈ پاسپورٹ اور اسکے تمام صفحات کی فوٹو کاپی ۔ ایک ایسا سرٹیفیکٹ ، جس سے یہ ثابت ہو کہ آپ متعلقہ یورپین شہری کے رشتہ دار ہیں ۔ یعنی شادی کا سرٹیفیکٹ یا پھر اولاد ہونے کی صورت میں پیدائش کا سرٹیفیکٹ ۔

اگر یہ کوائف کسی دوسرے یورپین ملک سے آرہے ہیں تو اس صورت میں لازمی ہے کہ تین زبانوں والے یورپین کمونٹی کے فارم میں موجود ہوں ۔ اگر یہ کوائف کسی یورپین ملک سے آئے ہیں اور صرف ایک زبان میں ہیں تو اس صورت میں ان کو اس ملک کی اٹلی میں موجود ایمبیسی اٹیسٹ کرے گی اور اس کا ترجمہ کسی عدالت سے کروایا جائے گا ۔ ترجمہ باقاعدہ لیگل ہونا ضروری ہے ۔ اگر یہ کسی غیر یورپین ملک سے آئے ہیں تو اس صورت میں یہ فارم اس ملک میں موجود اٹالین کونسلیٹ یا ایمبیسی سے اٹیسٹ ہونگے اور ان کا ترجمہ اٹالین زبان میں کیا جائے گا ۔ اس کے بعد ضروری ہے کہ یورپین شہری اپنا ریذیڈنس یا کمونے کا سرٹیفیکٹ مہیا کرے ۔ یورپین شہری اپنا شناختی کارڈ مہیا کرے ۔ اگر اس کا رشتہ دار غیر یورپین ہے تو اس کا کودیچے فسکالے یا ٹیکس نمبر اور صحت کا کارڈ موجود ہونے کی صورت میں مہیا کیا جائے ۔ یورپین شہری کے لیے ضروری ہے کہ وہ اپنے سالانہ بچت کے سرٹیفکیٹ سے ثابت کرے کہ وہ آنے والے رشتہ دار کا خرچہ برداشت کر سکتا ہے ۔ اس صورت میں اسے CUDیا Mod730پیش کرنا ہوگا ۔ یاد رہے کہ سالانہ بچت کا حساب سوشل چیک کی رقم سے لگایا جاتا ہے اور یہ اس سال 5400 یورو تھی ۔ وہ رشتہ دار جو کہ کارتا دی سوجورنو کے لیے درخواست دے گا ، وہ اس پر کام نہیں کر سکے گا ۔ اس کا حق ہو گا کہ یہ اپنے کمونے میں اناگرافے کے دفتر میں اپنے ریذیڈنس کے لیے اپلائی کر سکے ۔ اس مقصد کے لیے اسے کارتا دی سوجورنو کی درخواست کے تمام تر کاغذات شو کرنا ہونگے ۔ اس کے بعد جب یورپین شہری کا رشتہ دار کارتا دی سوجورنو حاصل کرلے گا تو اسے ایک دفع پھر کمونے میں جانا ہوگا اور اپنا حتمی ریذیڈنس بنوانا ہوگا ۔ یہ کارتا دی سوجورنو 5 سال کے لیے ویلڈ ہے اور اسکے بعد بھی ویلڈ رہتا ہے ۔ اس کارتا دی سوجورنو پر سال میں 6 ماہ تک اٹلی سے باہر رہا جا سکتا ہے ۔ اگر آپ نے ملٹری سروس کرنی ہے تو اس صورت میں ایک سال تک اٹلی سے باہر رہ سکتے ہیں ۔ اگر آپ کو کوئی محلق بیماری ہے یا عورت کی صورت میں حاملہ ہے ، اگر آپ نے کوئی ٹریننگ کورس کرنا ہے ، تعلیم حاصل کرنی ہے ، آپکی نوکری والی جگہ پر آپکی تبدیلی کسی دوسرے ملک میں کر دی گئی ہے تو اس صورت میں آپ ایک سال تک کے عرصے کے لیے اٹلی سے باہر رہ سکتے ہیں ۔ آپ کو ان تمام وجوہات کو بیان کرنے کے لیے کوائف پیش کرنا ہونگے ۔  اگر یورپین شہری کا رشتہ دار 5 سال کے لیے اٹلی میں اپنے رشتہ دار کے ہمراہ آباد رہے تو آخر کار اسے ہمیشہ کا کارتا دی سوجورنو دے دیا جائے گا ۔ اب وہ غیر یورپین شہری تھانے سے فیملی کا کارتا دی سوجورنو حاصل کر سکے گا ۔  اگر یورپین شہری مر جاتا ہے تو اس صورت میں اس کا رشتہ دار اپنا کارتا دی سوجورنو کھوتا نہیں ۔ اس صورت میں مندرجہ ذیل کوائف ہونے ضروری ہوتے ہیں ۔ یعنی غیر یورپین شہری یورپین شہری کے مرنے سے ایک سال قبل اٹلی میں داخل ہوا ہو، اور اس نے فیملی کا کارتا دی سوجورنو حاصل کر لیا ہو ۔ اگر ایسا نہیں تو غیر یورپین شہری اٹلی میں کام تلاش کرنے کی ، تعلیم یا کام کی پر میسو دی سوجورنو حاصل کرنے کی درخواست دے سکتا ہے ۔ غیر یورپین شہری کو ثابت کرنا ہوگا کہ اس کے پاس کوئی کام یا زندگی گزارنے کا روزگار ہے اور یہ اپنا خرچہ اور میڈیکل خرچہ خود ادا کر سکتا ہے۔ اگر غیر یورپین شہری اور یورپین شہری میں طلاق ہوجاتی ہے تو اس صورت میں یہ صورت حال ہوگی ۔ طلاق یا علیحدگی کی صورت میں غیر یورپین شہری اپنا کارتا دی سوجورنو نہیں کھوئے گا ، اگر اس نے ہمیشہ کے لیے کارتا دی سوجورنو حاصل کر لیا ہے ۔ اگر یہ شادی 3 سال تک جاری رہی ہے اور اس عرصے میں سے ایک سال انہوں نے اٹلی میں گزارا ہے ۔ اگر غیر یورپین شہری نے بچوں کی ذمہداری اپنے آپ پر لے لی ہے یا پھر اسے عدالت کی طرف سے یورپین شہری کے پاس بچوں کو دیکھنے کی اجازت فراہم کر دی گئی ہے ۔ اگر غیر یورپین شہری کو یورپین شہری نے نقصان پہنچایا ہے اور اس کا کیس عدالت میں چل رہا ہے ۔ اگر غیر یورپین شہری کے پاس اوپر بیان کردہ کوائف موجود نہیں ہیں تو غیر یورپین شہری اٹلی میں کام تلاش کرنے کی ، تعلیم یا کام کی پر میسو دی سوجورنو حاصل کرنے کی درخواست دے سکتا ہے ۔

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

اپنے ملک اور یورپ میں جانے کی گائیڈ

اٹلی میں موجود غیر ملکی ہمیشہ یہ سوال کرتے ہیں کہ وہ کیسے اپنے ملک واپس جائیں اور انہیں کونسے کاغذات فراہم کرنا ہوتے ہیں ۔ یا پھر یورپ کے کسی ملک میں سیر کرنے کے لیے کونسا طریقہ کار استعمال کیا جاتا ہے ۔ کئی سال گزر جانے کے بعد مختلف نئے حالات پیدا ہوئے ہیں ۔ اب پر میسو دی سوجورنو، سوجورنو کی رسید، پہلی سوجورنو کی رسید، کارتا دی سوجورنو اور دوسری کئی سوجورنو پیدا ہوگئی ہیں ۔ ان تمام کاغذات کو مدنظر رکھتے ہوئے ہم آپ کو ایک گائیڈ کے زریعے آپکے حقوق کے بارے میں بتاتے ہیں ۔

ویزے کے ساتھ ، سوجورنو اور کارتا دی سوجورنو کے ساتھ

یورپین یونین کے نئے قانون 265سال 2010 کے مطابق نئے ضابطے متعارف کروائے گئے ہیں ۔ جن کے تحت یورپین یونین کے شنگن کے ممالک میں سیر کے لیے جایا جا سکتا ہے۔

شنگن کے قانون کے مطابق تمام وہ غیر ملکی جنہوں نے اپنی پر میسو دی سوجورنو پہلی دفع  بنوانے کے لیے جمع کروا رکھی ہے ، انہیں اجازت دی گئی ہے کہ یہ سال کے کسی بھی حصے میں اپنے ملک ڈاک کی رسید کے ساتھ جا سکیں اور اسکے ساتھ ساتھ یورپ کے کسی بھی شنگن کے ملک میں تین ماہ تک سٹے کر سکیں بشرطیکہ انکے پاس Schengen uniformeوالا ویزہ موجود ہو  ۔ وہ غیر ملکی جو کہ اٹلی میں خاندانی ویزہ حاصل کرتے ہوئے یا پھر فلسی کے زریعے آئے ہیں ، انکی سوجورنو بہت دیر بعد جاری ہوتی ہے اور یہ اس عرصے میں یورپ میں سفر کرنے سے قاصر ہوتے تھے اب یہ لوگ شنگن ویزے کے زریعے سوجونو جاری ہونے سے قبل بھی یورپ کا سفر کر سکتے ہیں وہ غیر ملکی جن کے پاس عام پر میسو دی سوجورنو ہے ، یہ لوگ کسی بھی شنگن کے ملک میں تین مہینوں کے لیے سیر کے لیے جا سکتے ہیں لیکن کام نہیں کر سکتے ۔ اب تک شنگن کے ممالک میں اٹلی ، فرانس، جرمنی، اسپین، لکسمبرگ، بیلجیئم ، ہالینڈ، پرتگال، آسٹریا، یونان، سویڈن، ڈینمارک، فن لینڈ، ناروے ، آئی لینڈ ،ایستونیا، ہنگری، لیتونیا، لتوانیا، پولینڈ، سلووینیا، سلوواکیہ، مالٹا اور چیک ریپبلک اور سویٹزرلینڈ  شامل ہیں ۔ اگر آپ کسی دوسرے ملک میں جانے کے خواہش مند ہیں تو اس صورت میں آپ کو اس ملک کا ویزہ حاصل کرنا ہو گا ۔ یاد رہے کہ یورپ میں ٹرانزٹ کرنے کی اجازت ان کو دی گئی ہے ، جنہوں نے پہلی دفع  پر میسو دی سوجورنو رینیو کروانے کے لیے جمع کروا رکھی ہے اور ان کے پاس اٹلی کا کام کا ویزہ ہے ۔ اب اٹالین ایمبیسی تمام نئے آنے والوں کو شنگن ویزہ فراہم کرے گی۔ اس ویزے کو Dویزہ کہتے ہیں ۔ یا پھر وہ ویزہ جو کہ تین ماہ سے زیادہ مدت کا ہو ۔ وہ غیر ملکی جنہوں نے اپنی سوجورنو رینیو ہونے کے لیے جمع کروا رکھی ہے ۔ یہ لوگ شنگن کے ممالک میں ٹرانزٹ نہیں کر سکتے ۔ یہ لوگ اپنے ملک جا سکیں گے اور ان کے لیے ضروری ہو گا کہ یہ اپنے ساتھ پر میسو دی سوجورنو کی اصل ختم شدہ کاپی، رسید اور پاسپورٹ ساتھ لیکر جائیں ۔ ائرپورٹ پر انکی رسید پرمہر لگائی جائے گی اور واپسی پر اسے چیک کیا جائے گا ۔ انہیں یورپ میں ٹرانزٹ کرنے کی اجازت نہیں ہے ۔ وہ غیر ملکی جو کہ سوجورنو کے بغیر اٹلی میں آباد ہیں ، ان کے لیے ضروری ہے کہ یہ کسی بھی ملک کا سفر نہ کریں ۔ وہ غیر ملکی جنہوں نے ڈومیسٹک کام کیوجہ سے سوجورنو کے لیے اپلائی کیا ہے ، انکے لیے بھی ضروری ہے کہ یہ پر میسو دی سوجورنو حاصل کرنے کے بعد کسی ملک کا سفر کریں ۔

اپنے بچوں کے ساتھ سفر کیسے کیا جائے

اگر آپ غیر ملکی ہیں اور آپ کے پاس لمبی مدت کا ڈی ویزہ نہیں ہے ، آپ نے پر میسو دی سوجورنو رینیو ہونے کے لیے جمع کروا رکھی ہے ، یا پھر پہلی دفع جمع کروائی ہے یا پھر آپ کے پاس کوئی رسید موجود ہو تو آپ یورپ کے کسی بھی ملک میں نہیں جا سکتے اور نہ ہی ٹرانزٹ کر سکتے ہیں ۔ جہاں تک بچوں کا تعلق ہے ، اب یورپین یونین کے نئے قانون 444 سال 2009 کے تحت والدین پر ضروری ہے کہ وہ بچوں کے علیحدہ زاتی پاسپورٹ بنوائیں ۔ 18 سال سے کم تمام بچوں کے لیے ضروری ہے کہ وہ اپنا پاسپورٹ بنوائیں۔ اگر بچوں کا اندراج والدین کے پاسپورٹ پر ہے تو اس صورت میں تمام صفر سے تین سال کے بچوں کا والدین کا پاسپورٹ 3 سال کے لیے ویلڈ ہوگا ۔ تین سال سے 18 سال کی عمر تک والدین کا پاسپورٹ 5 سال کا ویلڈ ہوگا ۔ بچوں کی عمر 18 سال ہونے پر یہ اپنا علیحدہ زاتی پاسپورٹ بنوائیں گے ۔ یہ قوانین صرف غیر یورپین امیگرنٹس کے لیے نہیں بلکہ یورپین یونین کے شہریوں کے لیے بھی لازمی ہیں ۔ اگر آپ اپنے ملک جانا چاہتے ہیں ۔ یا پھر کسی یورپین ملک کی سیر کے لیے روانہ ہونے کے خواہشمند ہیں تو آپ  اپنی کونسلیٹ یا ایمبیسی میں جا کر بچوں کا علیحدہ پاسپورٹ بنوا لیں ورنہ خواہ مخواہ آپ کو پریشانی کا سامنا کرنا ہوگا ۔ تمام ایمبیسیاں یہ چاہتی ہیں کہ جب بچوں کے علیحدہ پاسپورٹ بنیں تو دونوں والدین ایک فارم پر دستخط کریں ( چاہے وہ شادی شدہ نہ بھی ہوں ) ۔ اگر ان میں سے ایک حاضر نہ ہوسکے تو اس صورت میں غیر حاضر اپنا شناختی کارڈ اور اجازت نامہ لکھ کر بھیج دیتا ہے لیکن بعض ممالک اس اجازت نامے کو قبول نہیں کرتے ۔ اس لیے آپ اپنی ایمبیسی یا کونسلیٹ سے پوچھ لیں ۔ اگر آپ اپنے ملک جانا چاہتے ہیں تو آپ کے پاس پر میسو دی سوجورنو یا کارتا دی سوجورنو تو  بچوں کے علیحدہ پاسپورٹ ہونے ضروری ہیں ۔ اگر آپ نے سوجورنو رینیو ہونے کے لیے دے رکھی ہے تو اس صورت میں بھی ویلڈ پاسپورٹ، درخواست کی رسید اور ختم شدہ سوجورنو ساتھ لیکر جائیں اور شنگن کے کسی بھی ملک میں نہ جائیں ۔ اگر آپ کے پاس کارتا دی سوجورنو یا پر میسو دی سوجورنو موجود ہے تو آپ یورپ کے کسی بھی ملک میں سوجورنو اور پاسپورٹ کے ساتھ جا سکتے ہیں اور تین ماہ تک رہ سکتے ہیں ۔ اگر آپ اپنے بچوں کے ہمراہ جانا چاہتے ہیں تو انکے علیحدہ پاسپورٹ ہونے ضروری ہیں ۔ یاد رہے کہ اگر 14 سال سے کم بچے اپنے والدین کی بجائے کسی دوسرے کے ساتھ یورپ کے ملک میں جائیں تو اس صورت میں دونوں والدین کا اجازت نامہ ساتھ لیجانا ہوگا ۔ اگر بچہ والدین میں سے کسی ایک کے ساتھ سفر کرے تو اس صورت میں اجازت نامہ لیجانا ضروری نہیں ۔ اٹالین میں گائیڈ پڑھنے کے لیے ہماری سائٹ کا وزٹ کریں ۔ www.stranieriinitalia,it

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

کولف اور بادانتے کا سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ

ہر ڈومیسٹک کام کرنے والا ملازم چاہے وہ کولف ہو یا بادانتے ، وہ ایک ایسی تنخواہ حاصل کرتا ہے یا کرتی ہے جو کہ اسسٹنس اور پراویڈنٹ فنڈ کے ساتھ دی جاتی ہے ۔ اس تنخواہ کے تمام ٹیکس کام کے مالک کی جانب سے ہر تین ماہ بعد انپس کے دفتر میں جمع کروائے جاتے ہیں ۔ ان ٹیکسوں میں چند ٹیکس مالک جمع کرواتا ہے اور چند ملازم کے زریعے جمع ہوتے ہیں ۔ جب ڈومیسٹک ملازم حکومت کے دی گئی مراعات سے مستفید ہوتا ہے تو اسے یہ ظاہر کرنا ہوتا ہے کہ اس نے اس سہولت کے عوض ٹیکس جمع کروائے ہیں ۔ یعنی سکول، ہسپتال اور کمونے وغیرہ کی سروس سے مستفید ہونا ۔

اٹلی کے قانون کے مطابق ہر وہ شخص جو کہ اٹلی میں کام کرتا ہے ، چاہے وہ نوکری کرے یا بزنس ۔ اس پر لازمی ہوتا ہے کہ یہ ہر سال سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ یا ڈیکلریشن پر کرے ۔ اس فارم یہ ظاہر کیا جاتا ہے کہ آپ نے متعلقہ سال میں کتنی بچت کی ہے ۔ آپ کی بچت کے مطابق ٹیکسوں کی رقم مقرر کی جاتی ہے ۔ وہ شخص جو کہ زیادہ بچت کرتا ہے ، اسے اس بچت کے حساب سے زیادہ ٹیکس دینے ہوتے ہیں ۔ یہ ٹیکس قانون کے مطابق فکس کیے گئے ہیں ۔ سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ کو یا فارم کو Unicoکہتے ہیں اور یہ مئی سے لیکر ستمبر تک جمع کروایا جاتا ہے ۔

ان ٹیکسوں میں رعایت حاصل کی جا سکتی ہے ، جسے deduzioneکہتے ہیں ۔ یعنی اگر آپ کی سپردگی میں خاندان کے لوگ موجود ہیں ، یعنی انکی پرورش اور دیکھبال کی ذمہداری آپ کی بچت یا تنخواہ پر ہے، گھر کے کرائے کے اخراجات، اگر آپ نے قسطوں کی ادائیگی کرنی ہے یا پھر گھر کی مرمت وغیرہ کروانی ہے ۔ اٹلی کے قانون کے مطابق اگر آپ نے متعلقہ سال میں تہہ کردہ بچت حاصل نہیں کی تو آپ پر لازمی ہوتا ہے کہ آپ سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ پر نہ کریں ۔ یہ قانون کولف اور بادانتے کے لیے بھی لازمی ہے ، چاہے وہ غیر یورپین امیگرنٹس ہوں ، یا پھر یورپین کمونٹی کے کسی ملک کے شہری ہوں ۔

خبردار۔ اگر آپ نے سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ پر نہیں کیا ، جبکہ آپ پر لازمی تھا تو اس صورت میں آپ کو چالان کے ساتھ سالانہ بچت کا فارم پر کرنا ہوگا اور اٹلی کے ٹیکسوں کا دفتر Agenzia Delle entrateآپ کے ٹیکسوں کی پڑتال کرتے ہوئے آپ کو چالان کے ساتھ رقم جمع کروانے کی دعوت دے گا ۔ اگر آپ کی بچت 60 ہزار یورو سے زیادہ ہے اور آپ نے سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ پر نہیں کیا تو اس صورت میں آپ مجرم ثابت کیے جائیں گے ۔ یعنی آپ پر چالان کے علاوہ عدالتی کیس بھی کر دیا جائے گا ۔ آئیں دیکھیں ٹیکسوں کا نظام کیسے اپلائی کیا جاتا ہے ۔ کولف اور بادانتے سال میں 365 دن کام کرتا ہے ، قانون کے مطابق اگر اسکی سالانہ بچت 8 ہزار یورو ہے تو اسے ایک فکس رعایت دی جاتی ہے ۔ یعنی ڈومیسٹک ملازم کی سال کی تمام تر تنخواہوں کو جمع کرتے ہوئے اگر اس نے 8 ہزار یورو سے زیادہ بچت نہیں کی تو اس صورت میں یہ ملازم سالانہ بچت کا سرٹیفیکیٹ پر نہیں کرے گا ۔ اس صورت میں اسٹیٹ یا حکومت نے اس ملازم سے کچھ بھی حاصل نہیں کرنا اس لیے یہ ملازم سالانہ بچت کا فارم جمع نہیں کروائے گا ۔ اگر آپ کی سالانہ بچت 8 ہزار یورو سے زیادہ ہے اور آپ ملازم یا بزنس مین ہیں تو اس صورت میں آپ سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ جمع کروائیں گے اور حکومت سے اس رعایت کے بارے میں درخواست دیں گے جو کہ مندرجہ بالا بحث میں لکھی گئی ہیں ، یاد رہے کہ ان میں تمام میڈیکل ٹیسٹ اور دوائیوں کے اخراجات بھی شامل ہوتے ہیں ۔ سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ کب جمع کروایا جاتا ہے ؟ عام طور پر مئی سے جون تک مہینے میں کسی بھی CAFکے دفتر میں جا کر آپ سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ پر کروا سکتے ہیں اور جمع کروانے کے لیے پوچھ سکتے ہیں ۔ یہ دفتر آپ کو مفت سروس فراہم کرے گا کیونکہ حکومت کی جانب سے اس دفتر کو رقم فراہم کی جاتی ہے ، اس کے علاوہ آپ کا کمرچیلستا یا ٹیکسوں کا نمائندہ بھی سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ جمع کروا سکتا ہے ۔ تمام صورتوں میں آپ کو مندرجہ زیل کوائف پورے کرنا ہونگے ۔ 1۔ فارم کوڈ یا وہ فارم جو کہ مالک کی جانب سے 2011مارچ کے مہینے میں ملازم کو دیا جاتا ہے اور یہ گزشتہ سال یعنی 2010 کی بچت کو شو کرتا ہے ۔ اس فارم کو CUDکہتے ہیں ۔ اٹلی کے قانون کے مطابق ہر مالک کا فرض ہوتا ہے کہ وہ ڈومیسٹک ملازم کے پوچھنے پر اسے ایسا کاغذ یا فارم مہیا کرے ، جس پر سال میں کی گئی بچت کی تمام تر تفصیل موجود ہو ۔ اس صورت میں مالک سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ ملازم کو مہیا کرے گا ۔ جس میں سال کی تمام تر بچت لکھی ہوگی اور یہ بھی لکھا ہو گا کہ اس نے کتنی مدت کام کیا ۔ 2۔ ڈومیسٹک ملازم کا کودیچے فسکالے اور اس کی بیوی بچوں کی ذمہداری ۔ اگر ملازم ایک غیر یورپین شہری ہے تو اس پر لازمی ہوگا کہ وہ اپنے خاندان یا بچوں وغیرہ کا فیملی سرٹیفیکٹ مہیا کرے ، جسے stato di famigliaکہتے ہیں ۔ ضروری ہے کہ یہ خاندان والے اٹلی میں موجود ہوں ۔ اگر یہ خاندان والے اٹلی میں موجود نہیں تو اس صورت میں اپنے ملک کے تمام کوائف مہیا کرنے ہونگے ، ضروری ہے کہ ان کاغذات کا ترجمہ اٹالین ایمبیسی سے ہوا ہو اور انہیں باقاعدہ طور پر اٹیسٹ بھی کیا گیا ہو ۔ ایمبیسی سے ترجمہ کروانے کے لیے آپ کو اصل کاغذات مہیا کرنا ہونگے ۔ 3۔ اگر آپ نے میڈیکل اخراجات کیے ہوں اور یہ اخراجات 2010 میں کیے گئے ہوں ۔ ان اخراجات میں آپریشن اور دوسرے ٹیسٹ وغیرہ بھی شامل ہیں ۔ 4۔ اگر آپ کرائے کے مکان میں آباد ہیں ، ان اخراجات سے بھی رعایت حاصل کی جا سکتی ہے ۔ یاد رہے کہ ان اخراجات کو فوری طور پر ٹیکسوں کے کم جمع کروانے سے بھی حاصل کیا جا سکتا ہے ۔ اس عمل کے لیے ضروری ہے کہ آپ کا کرائے کا کنٹریکٹ قانونی ہو اور اس کا اندراج ٹیکسوں کے دفتر میں موجود ہو ۔ ڈومیسٹک ملازم کی سالانہ بچت کی جانچ پڑتال کرنے کے بعد کاف کا ملازم یا کمرچیلستا یہ فیصلہ کرے گا کہ آیا کہ اس ملازم نے سالانہ بچت کا سرٹیفیکٹ پر کرنا ہے اور IRPEFکے ٹیکس جمع کروانے ہیں ۔

 

 

 

 

 

 

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

کرایہ پر جگہ حاصل کرنے کی گائیڈ

کرایہ پر گھر حاصل کرنے کے لیے رہائش کا قانون 1998۔431بنایا گیا ہے ۔ اس قانون کے مطابق مختلف قسم کے گھر کرایہ پر حاصل کرنے کے معاہدے کیے جاتے ہیں ۔ اس قانون کے مطابق ایک مالک مکان کسی دوسرے شخص کو اپنا گھر ایک معینہ مدت کے لیے دے دیتا ہے اور یہ دوسرا شخص اسکے بدلے میں ہر ماہ اس گھر کا کرایہ یا CANONEادا کرتا ہے ۔ مختلف معاہدوں میں سے چند ایک زیادہ مقبول ہیں ۔ ان میں سے ایک کو 4+4سال کا کنٹریکٹ کہتے ہیں جو کہ CONTRATTI LIBERIکے دائرے میں آتا ہے ۔

 

Il contratto d’affitto libero (4+4)

چار بائی چار سال کا معاہدہ ایک عام معاہدہ ہے جو کہ اکثر عمل میں آتا ہے ۔ اس معاہدہ کا مطلب ہوتا ہے کہ گھر صرف ایک معینہ مدت کے لیے دیا جا رہا ہے ، جو کہ پہلے 4 سال کی ہو گی اور اسکے بعد آٹومیٹک طریقے سے اسے مزید 4 سال کے لیے بڑھا دیا جائے گا ۔ پہلے 4 سالوں کے بعد دوسرے 4 سالوں کے لیے کنٹریکٹ قانون کو مدنظر رکھتے ہوئے بڑھایا جائے گا ، یعنی اگر قانون کا احترام نہیں کیا گیا تو اسے مزید 4 سالوں کے لیے نہیں بڑھایا جائے گا ۔ 8 سال گزر جانے کے بعد مالک اور کرایہ دار معاہدہ ختم کرنے کے لیے ایک دوسرے سے رابطہ کر سکتے ہیں ۔ ختم کرنے کی صورت میں مالک یا کرایہ دار معاہدہ ختم ہونے سے 6 ماہ پہلے اطلاع کریں گے ۔ اگر معاہدہ میں اطلاع کرنے کی مدت 6 ماہ سے کم لکھی گئی ہے تو اس کی کوئی وقعت نہیں کیونکہ 6 ماہ کی مدت اصل مدت ہوتی ہے ۔ چار بائی چار کا معاہدہ وقت سے پہلے بھی ختم کیا جاسکتا ہے لیکن اس کے لیے مالک مکان اور کرایہ دار کو قانون پر عمل کرنا ہوتا ہے ۔ قانون کے مطابق معاہدے کا ختم ہونا ضروری ہوتا ہے ۔ کرایہ دار مکان کی آزائش سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ماہانہ کرایہ ادا کرتا ہے ۔ کرایہ کی قیمت کنٹریکٹ میں لکھی ہوتی ہے اور یہ سال گزر جانے کے بعد تبدیل نہیں کی جا سکتی ۔ کرایہ کی قیمت یا رقم میں صرف اس وقت تبدیلی لائی جا سکتی ہے ، جب istatکے ادارے سے کوئی تبدیلی واقع ہو یا پھر معاہدہ میں کرایہ بڑھانے کی کوئی شک موجود ہو ۔ اگر معاہدہ میں لکھا ہے کہ پہلے سال کے بعد کرایہ بڑھایا جا سکتا ہے تو یہ قانون کے بالکل خلاف ہے ، یعنی اس کی کوئی سرکاری وقعت یا ویلیو نہیں ۔ کرایہ دار وہی کرایہ ادا کرے گا جو کہ پہلے سال ادا کیا جاتا ہے اور یہ کرایہ معاہدہ کی پوری مدت تک ادا کیا جائے گا ، یعنی اس میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی ۔ اگر کرایہ دار 2 ماہ کا کرایہ ادا نہیں کرتا تو مالک مکان اسے گھر چھوڑنے کا نوٹس جاری کر سکتا ہے ، جسے  sfrattoکہتے ہیں ۔ عام طور پر کرایہ دار تمام gli oneri accessoriیا گھر کے تمام اخراجات ادا کرتا ہے ، جس میں بلڈنگ یا کندومینیو کے اخراجات بھی شامل ہوتے ہیں ۔ ان اخراجات سے گھر کو قائم و دائم رکھا جاتا ہے ۔ یعنی گیس، بجلی، صفائی اور بلڈنگ کے اخراجات وغیرہ ۔ عام طور پر یہ اخراجات کرایہ دار کے حوالے کیے جاتے ہیں لیکن معاہدہ میں چند اخراجات مالک کے سپرد کیے جاتے ہیں ۔ یعنی اگر بلڈنگ کی بیرونی یا اندرونی مرمت کراوائی جانی ہے تو اس صورت میں مالک مکان ان اخراجات کو برداشت کرتا ہے ۔ اگر مالک مکان کہے کہ معاہدہ میں تمام اخراجات کرایہ دار کے سپرد کیے گئے تھے تو اس پر بحث ہو سکتی ہے ۔ یعنی اگر پانی اور گیس کا پلانٹ تبدیل کیا جانا ہے اور اس جگہ نیا لگنا ہے تو یہ مالک مکان کروائے گا لیکن اگر گھر کی کوئی پانی کی ٹیوب تبدیل ہونی ہے یا پھر دروازے کا تالا لگنا ہے تو یہ کرایہ دار کے سپرد ہوتا ہے ۔ جہاں تک کندومینیو یا بلڈنگ کے اخراجات کا تعلق ہے تو اس صورت میں ضروری ہوتا ہے کہ آپ بلڈنگ کے ایڈمنسٹریٹر سے اس کا حساب پوچھ لیں ، وہ آپ کو تفصیل سے ماہانہ اخراجات کے بارے میں بتا دے گا ۔ بعض اخراجات صرف مالک مکان کے سپرد ہوتے ہیں ۔ مثال کے طور پر لفٹ کی مرمت اور باہر والے گیٹ کی مرمت وغیرہ ۔ چند اخراجات مالک اور کرایہ دار ملکر ادا کرتے ہیں ، مثال کے طورپر چوکیدار کی تنخواہ وغیرہ۔ اگر کرایہ دار 2 ماہ تک اپنے زمے کے اخراجات جمع نہیں کرواتا تو اس صورت میں بھی اسے گھر چھوڑنے کا نوٹس جاری کیا جا سکتا ہے ۔ یاد رہے کہ کرایہ دار اس مکان کو کسی دوسرے شخص کو کرایہ پر نہیں دے سکتا ۔ حتی کہ ایک کمرہ بھی کسی دوسرے کو کرایہ پر نہیں دے سکتا ۔ اگر کرایہ دار معاہدہ والے گھر کو کسی دوسرے آدمی کو کرایہ پر دیتا ہے تو مالک مکان اسے گھر چھوڑنے کا نوٹس جاری کر سکتا ہے ، اس صورت میں کرایہ دار کو نقصان کے اخراجات بھی ادا کرنا ہونگے ۔ تمام قسم کے کنٹریکٹ یا معاہدے ٹیکس کے دفتر Agenzia Delle Entrateمیں رجسٹرڈ کروائے جاتے ہیں ۔ معاہدے کے 30 دن کے اندر ان کا اندراج لازمی ہوتا ہے ۔ معاہدہ کا اندراج کرواتے وقت ایک ٹیکس ادا کیا جاتا ہے جسے imposta   کہتے ہیں اور یہ سالانہ کرایہ کا 2 فیصد ہوتا ہے ۔ امپوستا یا ٹیکس جمع کروانے کے لیے آپ کو ایک فارم F23استعمال کرنا ہوگا جو کہ پہلے ہی سے مکمل طور پر لکھا یا پر ہوتا ہے ۔ یہ فارم کسی بھی بنک میں دستیاب ہوتا ہے ۔ یاد رہے کہ یہ خرچہ آدھا دونوں فریقوں میں تقسیم ہوتا ہے ۔ مالک مکان گھر چھوڑنے کا نوٹس کب جاری کرسکتا ہے ۔ مالک مکان پہلے 4 سال گزر جانے کے بعد مکان چھوڑنے کا نوٹس جاری کرسکتا ہے۔ اس سے قبل مالک یہ نوٹس جاری نہیں کر سکتا ۔ مالک مکان پہلے 4 سال گزر جانے کے بعد گھرچھوڑنے کا نوٹس صرف اس صورت میں جاری کرتا ہے جب وہ مندرجہ زیل لوازمات پورے کرے ۔ 1۔ یعنی مالک مکان نے اس گھر کو کسی اپنے رشتہ دار کو دینا ہے ، جس میں بیوی، بچے اور دوسرے درجے کے رشتہ دار شامل ہوتے ہیں ۔ وہ کہہ سکتا ہے کہ اس نے اس مکان میں کوئی بزنس کرنا ہے یا پھر خود یا کسی دوسرے رشتہ دار کو رکھنا ہے ۔ 2۔ اگر مالک مکان کے پاس اسی کمونے میں کوئی دوسرا گھر کرایہ کے لیے خالی ہے ۔ 3۔ اگر مکان والی بلڈنگ خطرناک ہونے کی صورت میں تباہ کی جانی ہے یا پھر اسے مکمل طورپر بنانے کے لیے خالی کرنا لازمی ہے ۔ یا پھر یہ گھر رہنے کے لیے خطرناک قرار دیا جا چکا ہے ۔ 4۔ اگر مالک مکان آخری منزل ہونے کی صورت میں اس مکان پر ایک اور منزل بنانے کا ارادہ رکھتا ہے اور کرایہ دار اس کے لیے مسائل کھڑے کر سکتا ہے ۔ 5۔ اگر مالک مکان اس گھر کو فروخت کرنے کا ارادہ کر چکا ہے ۔ مالک مکان صرف اس وقت اس گھر کو فروخت کرسکتا ہے جب اس کے پاس اپنے گھر کے علاوہ صرف یہ اپارٹمنٹ موجود ہو ۔ اس صورت میں کرایہ دار اگر چاہے تو وہ اس مکان کو قیمت کے مطابق خرید بھی سکتا ہے ۔ خبردار۔ اگر کرایہ دار مکان کو کرایہ پر لینے کے بعد اس گھر میں نہیں رہتا تو مالک مکان اسے گھرچھوڑنے کا نوٹس جاری کرسکتا ہے، بشرطیکہ کرایہ دار نوکری کی تبدیلی کیوجہ سے کسی دوسرے شہر میں منتقل ہو گیا ہو ۔ یعنی  کرایہ دار کو وجہ بیان کرنی ہوگی ۔  مالک مکان ان لوازمات کیوجہ سے قانونی طور پر کرایہ دار کو4 سال گزر جانے کے بعد گھر چھوڑنے کا نوٹس دے سکتا ہے ۔ یاد رہے کہ مالک مکان یہ نوٹس معاہدہ ختم ہونے سے 6 ماہ قبل جاری کرے گا اور اس کے علاوہ یہ نوٹس ڈاک خانے کے زریعے واپسی کی رجسٹری کے ساتھ روانہ کرے گا ۔ ضروری ہے کہ کرایہ دار اس نوٹس کو حاصل کرے ۔  اگر مالک مکان یہ نوٹس رجسٹری کے ساتھ روانہ نہیں کرے گا یا پھر 6 ماہ کی مدت کی پرواہ نہ کرنے پر نوٹس جاری کرے گا تو اسکی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہوگی ۔ ایسی صورت میں گھر کا معاہدہ مزید 4 سالوں کے لیے رینیو کر دیا جائے گا ۔ کرایہ دار ان 8 سالوں کی مدت میں گھر کا معاہدہ اس صورت میں ختم کر سکتا ہے ، جب اسکی نوکری کی تبدیلی کسی دوسرے شہر میں کردی جائے ۔ یا پھر اسکی نوکری ختم ہوجائے یا اس کا بزنس ختم ہو جائے ۔ اس صورت میں بھی معاہدہ ختم ہونے سے قبل 6 ماہ سے پہلے نوٹس جاری کرنا ہوتا ہے ۔ کرایہ دار اس عرصے میں دوسرے شہر میں ایک نیا گھر تلاش کر سکتا ہے ۔ اگر گھر معاہدہ کی مدت 8 سال گزر جانے کے بعد یا پھر نوٹس کے زریعے چھوڑا جائے تو اس صورت میں گھر کو خالی کرنا لازمی ہوتا ہے ۔ اگر معاہدہ ختم ہونے کے بعد کرایہ دار گھر چھوڑنے کا ارادہ نہیں رکھتا تو اس صورت میں مالک مکان عدالت کا رجوع کرے گا اور اس کیس کے تمام اخراجات کرایہ دار ادا کرے گا ۔

 

 

 

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com