Tuesday, Mar 02nd

Last update06:26:21 PM GMT

RSS

ناحیدہ خان کا تعارف

روم، 12 اپریل 2013 ۔۔۔۔ روم میں پیدا ہونے والی جوان لڑکی ناحیدہ خان کہتی ہیں کہ اٹلی میں شہریت کا قانون تبدیل ہونا لازمی ہے ۔ ناحیدہ خان کے والد پاکستانی ہیں اور اسکی والدہ کا تعلق مراکش سے ہے ۔ ناحیدہ اٹلی میں پیدا ہوئی اور یہاں ہی جوان ہوئی ۔ اس نے اٹالین اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ 18 سال کی عمر تک اسکے پاس پرمیسو دی سوجورنو تھی ۔ ناحیدہ خان نے کہا کہ میں پاکستان اور مراکش میں صرف چھٹیوں میں جایا کرتی ہوں لیکن میرا ملک اٹلی ہے ۔ میرے ملک نے مجھے 18 سال کی عمر تک غیر ملکی سمجھ رکھا تھا ۔ بالغ عمر پوری کرنے کے بعد میں نے فوری طور پر اٹالین شہریت حاصل کرلی اور اب میں اپنے آپ کو اصل اٹالین شہری سمجھتی ہوں ۔ اس نے کہا کہ میرے جیسے 10 لاکھ ایسے جوان ہیں جو کہ اٹلی میں پیدا ہوئے ہیں یا پھر کمسن عمر میں اٹلی میں آئے تھے ۔ ان جوانوں کو شہریت نہ دینا زیادتی ہے کیونکہ یہ اپنے آپ کو اٹالین تصور کرتے ہیں اور والدین کے ملک میں صرف چھٹیوں کے لیے جاتے ہیں ۔ ناحیدہ خان نے کہا کہ وہ روم میں کئی کام کرنے کے بعد تھک گئی تھی اور ایک مہذب کام نہ ہونے کیوجہ سے پریشان تھی ۔ اسی اثنا میں اس نے فوٹوگرافی کا کورس کیا اور 2012 میں فوٹو گرافری کا پہلا انعام حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی ۔ ناحیدہ خان اب گزشتہ 3 سالوں سے روم کے ساحلی علاقے لادسپولی میں رہ رہی ہے اور دوسری نسل کے جوانوں کی آواز بن گئی ہے ۔ نیچے ناحیدہ خان اور اسکی فوٹوگرافری کی تصاویر 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

کام کے دوران ایک پاکستانی ہلاک

روم، 10 اپریل 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کے جنوبی شہر کزیرتا میں کام کے دوران ایک پاکستانی ہلاک  ہو گیا ہے ۔ اس پاکستانی کی عمر 37 سال تھی اور اس کا نام رضوان محمود تھا ۔ پولیس کی رپورٹ کے مطابق رضوان کنسٹرکشن کی فرم میں مزدوری کا کام کرتا تھا اور کل ایک فیکٹری کی چھت پر چڑہ کر اسکی مرمت کررہا تھا ۔ چھت گرنے سے رضوان 10 میٹر کی بلندی سے گر گیا ، فوری طور پر ایمبولینس کو بلا لیا گیا اور جائے وقوع پر ہی اسکی موت واقع ہو گئی ۔ عدالت نے رضوان کی موت کے واقع کو مدنظر رکھتے ہوئے تفتیش کا حکم جاری کردیا ہے ۔ اب پتا چلایا جائے گا کہ رضوان کے لیے سیکورٹی کے انتظامات کیے گئے تھے یا پھر وہ کسی سہارے کے بغیر کام کررہا تھا ۔ تصویر میں پولیس کی گاڑی فیکٹری کے باہر کھڑی ہے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

سماجی مدد کے لیے غیر ملکیوں کے برابر کے حقوق

روم، تحریر، ایلویو پاسکا ۔۔۔ اٹلی میں سماجی مدد یا Assistenza socialeحاصل کرنے کے لیے اٹالین اور غیر ملکیوں کے برابر کے حقوق ہیں ۔ اس کے باوجود کئی کمونے اور ریجن اس معاملے میں غیر ملکیوں سے غیر امتیازی سلوک کرتے ہوئے انکے حقوق سلب کرتے ہیں اور یہ کہتے ہیں کہ غیر ملکیوں کو سماجی حقوق دینا غیر قانونی ہے ۔ اٹلی میں موجود کئی غیر ملکی قانونی طور پر رہائش پزیر ہونے کے باوجود اپنے حقوق حاصل کرنے سے قاصر ہیں ۔ اٹلی کے برابر کے حقوق کے ادارے UNARیعنی نسل پرستی کے خلاف ادارہ نے اعلان کیا ہے کہ بعض کمونے اپنی مرضی سے ان غیر ملکیوں کو سماجی مدد میسر نہیں کر رہے جنہیں اس مدد کی اشد ضرورت ہے ۔ اٹلی کے امیگریشن کے قانون کے آرٹیکل 41 کے مطابق وہ غیر ملکی جن کے پاس ایک سال کی مدت سے زیادہ کی پر میسو دی سوجورنو موجود ہے ، وہ اٹلی کے تمام سرکاری اور نجی اداروں سے اٹالین شہریوں کی طرح سروس یا مدد حاصل کرسکتے ہیں ۔ بعض ایسے کمونے ہیں جو کہ غیر ملکیوں پر ریزیڈنس کی شک لگاتے ہوئے انہیں سماجی مدد فراہم نہیں کرتے ۔ اونار دفتر کے ڈائریکٹر مونانی نے کہا کہ ایسا کوئی قانون موجود نہیں ہے ۔ ہم نے ایک تمام سرکاری اداروں کو واضع کر دیا ہے کہ وہ نسلی امتیاز سے ہوشیار رہیں اور کسی کو اسکی قومیت اور مختلف ہونے کی بنیاد پر تنگ نہ کریں ۔ تمام غیر ملکیوں کو یہ باور کیا جاتا ہے کہ وہ سماجی مدد حاصل کر سکتے ہیں ۔ اٹلی میں غیر ملکی سمجھ کر بعض اوقات منفی سلوک کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اٹلی کے کمونے، صوبے اور ریجن کے دفاتر میں کنٹرول گروپ بنا دیے ہیں ۔ ہم پہ در پہ ان دفاتر کا معائنہ کریں گے اوراگر کسی قسم کا غیر مساوی سلوک نظر آیا تو اسے فوری طور پر دور کرنے کی کوشش کریں گے ۔ یاد رہے کہ یہ دفتر یورپ کے تمام ممالک میں غیر مساوی سلوک کے خلاف بنایا گیا ہے ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے لیے آن لائن درخواست دیں

INPSیا انپس کے دفتر نے اعلان کیا ہے کہ بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے لیے آن لائن درخواست دی جا سکتی ہے ۔ درخواست دینے کے لیے آپکو انپس کی انٹرنیٹ کی سائٹ  www.inps.itسےرجوع کرنا ہوگا ۔ درخواست دینے کے لیے آپکو انپس کی انٹرنیٹ کی سائٹ کا پن کوڈ حاصل کرنا ہوگا ۔ یہ ایک پرسنل کوڈ ہے جو کہ انپس کی انٹرنیٹ کی سائٹ میں جا کر آپکو حاصل کرنا ہوگا ۔ لنک میں جا کر richiesta Pin online میں کلک کریں ۔ اسکے بعد آپ سے چند لوازمات پورا کرنے کے لیے کہا جائے گا ۔ اسکے بعد 8 لیٹروں میں ایک نامکمل پن جاری کیا جائے گا ۔ اسکے بعد مزید معلومات کے بعد ایک مکمل کوڈ یا پن جاری کر دیا جائے گا ۔ کوڈ کے ساتھ آپ انپس کی ٹیلی میٹک سروس سے فائدہ اٹھا سکیں گے ۔ پن کوڈ آپ کے گھر کے ایڈریس پر روانہ کر دیا جائے گا اور اسکے بعد انپس کے گرین نمبر والے آپ سے کوڈ حاصل کرنے پر تسلی کریں گے ۔ انپس نے اعلان کیا ہے کہ اب صرف عام بے روزگاری کی درخواستوں پر آن لائن درخواست دی جائے گی ، یعنی زراعت کی بے روزگاری کی درخواست آن لائن قبول نہیں ہوگی لیکن چند ہفتوں میں تمام قسم کی درخواستوں پر آن لائن عملدرآمد کرنے کا کام شروع کر دیا جائے گا ۔ پن کوڈ حاصل کرنے کے بعد ایک شہری یا غیر ملکی سیکشن servizio al cittadino  میں جائے گا ، اسکے بعد آپکو ایک خانے Indennità didisoccupazioneمیں جانا ہوگا ۔ یہاں ورکر یا ملازم کی  اور اسکے کام کی تمام تر معلومات موجود ہونگی ۔ یہ معلومات عام طور پر مکمل نہیں ہوتیں ، ورکر اپنی بقیہ جات معلومات اس خانے میں شامل کر سکتا ہے ۔  اسکے بعد یہاں آخری 4 سالوں کے جمع کروائے ہوئے ٹیکس سامنے آجائیں گے ۔ بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے لیے عام طور پر 2 سالوں کے ٹیکس درکار ہوتے ہیں لیکن باقی سالوں کے جمع شدہ ٹیکس درخواست پر کرنے کے لیے درکار ہوتے ہیں ۔  انپس کے دفتر والے آخری دو سالوں کے ٹیکسوں کو ترجیح دیتے ہیں کیونکہ بے روزگاری الاؤنس کا حساب استعفی کے روز سے شروع ہوتا ہے ۔ بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے لیے آخری 2 سال یا 52 ہفتوں کا کیا ہوا کام ضروری ہوتا ہے ۔ یعنی ضروری نہیں کہ آپ نے 2 سال کے عرصے میں تمام دن کام کیا ہو ، ضروری ہے کہ آپ نے 2 سال کے عرصے میں 52 ہفتے کام کیا ہو۔  تمام معلومات حاصل کرنے کے بعد اور تمام کوائف پورے ہونے کے بعد بے روزگاری الاؤنس کے بارے میں بتایا جاتا ہے ۔  اگر پچھلے 3 مہینوں میں آپکے ٹیکس جمع نہیں کروائے گئے یا پھر سسٹم میں شامل نہیں کیے گئے تو اس صورت میں آپکی  بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کی درخواست روک دی جائے گی اور اس پر انپس کے ملازمین پڑتال کرتے ہوئے درخواست پر کام کریں گے ۔ تمام تر معلومات حاصل کرنے کے بعد درخواست دہندہ سے مزید معلومات حاصل کی جائیں گی جو کہ بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے لیے لازمی ہوتی ہیں ۔ یعنی درخواست دہندہ کے ایڈریس کے CAPلکھنے کے بعد انپس کے مختلف مطلوبہ دفاتر سامنے آجائیں گے اور درخواست دہندہ ان میں سے ایک دفتر کو قبول کرے گا ۔ اسکے بعد ایک دفتر حاصل کرنے کے بعد درخواست دہندہ اس دفتر کے لیے ایک فون نمبر اور ایک ای میل چھوڑ دے گا ۔ درخواست دہندہ کی تعلیم اور اسکے کام کی کولیفیکشن اس لیے پوچھی جاتی ہے تا کہ بے روزگاری کے دفتر اور صوبائی دفتر کو یہ بتایا جاسکے کہ یہ شخص کام تلاش کر رہا ہے ۔ اسکے بعد درخواست دہندہ سے یہ پوچھا جاتا ہے کہ اگر یہ خاندان کا چیک حاصل کرنے کا حق رکھتا ہے یا نہیں ۔ خاندان کا چیک حاصل کرنے کے لیے درخواست دہندہ کو ایک حلفیہ بیان دینا پڑتا ہے ۔ ایک حلفیہ بیان کے زریعے ٹیکس معاف کروانے کا فارم پر کیا جاتا ہے ۔ ایک بیان کے زریعے یہ بتایا جاتا ہے کہ مجھے مدت ختم ہونے کے بعد یا بیماری کیوجہ سے مستعفی کر دیا گیا ہے ۔  بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے لیے درخواست دہندہ یا تو اپنے بنک کا کرنٹ اکاؤنٹ استعمال کر سکتا ہے یا پھر اسے پوسٹ آفس کے زریعے رجسٹری کی صورت میں اسکے درج کردہ ایڈریس پر بے روزگای کا چیک روانہ کیا جا سکتا ہے ۔ بے روزگاری الاؤنس حاصل کرنے کے علاوہ ورکر کا حق ہے کہ وہ فوری طورپر یہ بتائے کہ وہ نیا کام کرنے کے لیے تیار ہے اور اسکے لیے وہ اپنی تمام تر معلومات کے استعمال کی قانونی اجازت فراہم کرتا ہے ۔  درخواست مکمل ہونے کے بعد اگر کوئی کمی رہ گئی ہو تو اس صورت میں بھی درخواست مکمل کرنے کی اجازت دی جاتی ہے ۔ درخواست مکمل کرنے کے بعد اسکی ایک کاپی پرنٹ کرلیں ۔ انپس والے آپکو درخواست حاصل کرنے کی ایک رسید روانہ کر دیں گے ۔

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

اٹلی کی مکس شادیوں میں کمی

روم ۔ تحریر ۔ ایلویو پاسکا ۔۔۔ اٹلی میں غیر ملکی اور اٹالین یا کسی دوسرے ملک کی عورت سے شادی ہوتی ہے تو اسے matrimonio mistoیا مکس شادی کے نام سے پکارا جاتا ہے ۔ اٹلی میں جب سے پکیتو سیکوریسا یا سیکورٹی کا قانون را‏ئج ہوا ہے ، اس وقت سے اس ملک میں مکس شادیوں میں کمی آئی ہے ۔ کہا جاتا ہے کہ اٹلی کے وزیر داخلہ مارونی کی وجہ سے اٹلی میں کم مکس شادیاں ہورہی ہیں ۔ اس سے قبل ایک غیر قانونی تارک وطن شادی کر سکتا تھا اور فیملی کی سوجورنو حاصل کر سکتا تھا ۔ اٹلی کے ادارے اسٹاٹ نے ایک ریسرچ کے زریعے ثابت کیا ہے کہ اٹلی میں عام شادیاں بھی کم ہو رہی ہیں ۔ 2010 میں صرف 2 لاکھ 17 ہزار شادیاں ہوئی ہیں جو کہ 2009 کے مطابق بہت کم ہیں ۔ یعنی ہر 1 ہزار شہریوں میں صرف 3،6 شادی کررہے ہیں ۔ صرف 2 سالوں میں 30 ہزار شادیاں کم ہوئی ہیں ۔ یاد رہے کہ 2008 میں 2لاکھ 46 ہزار شادیاں ہوئی تھیں جو کہ ہر 1 ہزار شہریوں میں 4،1 شادیاں ہوتی ہیں ۔ یاد رہے کہ اٹلی میں شادیوں کی کمی کی وجہ غیر ملکی ہیں ۔ کم ہونے والی شادیوں میں میاں یا بیوی غیر ملکی ہوتے ہیں  ۔ 2009 میں اسٹاٹ کے مطابق مکس شادیاں 32 ہزار ہوئی تھیں جو کہ تمام شادیوں کی 14 فیصد بنتی ہے  ۔ 2008 میں 5 ہزار شادیاں 2009 سے زیادہ ہوئی تھیں ۔ اب 2010 میں انکی تعداد مزید کم ہوگئی ہے ۔ مکس شادیوں میں جن میں میاں یا بیوی اٹالین ہوتی تھی ، ان میں بھی کمی واقع ہوئی ہے ۔ 2009 میں اٹالین اور غیر ملکیوں کے درمیان 21 ہزار شادیاں ہوئی تھیں ۔ 2008 میں اٹالین اور غیر ملکیوں کے درمیان 24 ہزار شادیاں ہوئی تھیں۔ یعنی ہر سال ان میں کمی واقع ہو رہی ہے ۔ خاص طور پر اٹالین عورتوں اور غیر ملکی مردوں کے درمیان شادیوں میں انتہائی کمی واقع ہوئی ہے یعنی 23،9 فیصد شادیاں کم ہوگئی ہیں ۔ اسٹاٹ کے مطابق غیر ملکی اور اٹالین کے درمیان شادیوں میں کمی کی وجہ سیکورٹی کا قانون ہے ۔ dell’art. 1 comma 15 della legge n. 94/2009کے تحت غیر ملکی پر لازمی قرار دیدیا گیا ہے کہ کمونے سے شادی کرنے کا سرٹیفیکٹ حاصل کرنے کے علاوہ ریگولر پر میسو دی سوجورنو بھی شو کرے ۔ ہم کہہ سکتے ہیں کہ اس قانون کیوجہ سے اٹلی میں مکس شادیوں میں کمی آئی ہے ۔ یاد رہے کہ حکومت نے یہ قانون اس لیے بنایا تھا تا کہ کاغذات حاصل کرنے کی شادیوں کا سدباب کیا جا سکے لیکن کتنے ایسے رانجھے، رومیو اور مجنوں ہیں جو اس قانون کیوجہ سے اپنی ہیر، جیولیٹ اور لیلی' سے شادی نہیں کر سکے ۔ 2012 میں بھی مکس شادیاں کم ہوئی ہیں ۔ ایک اور وجہ یہ ہے کہ غیر ملکی نہیں چاہتا کہ وہ اٹلی چھوڑ کر اپنے ملک میں جائے اور وہاں اپنی اٹالین منگیتر کو بلائے ، اسکے علاوہ یہ منگیتر بھی پاکستان جانے سے ڈرتی ہے ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com