Sunday, Aug 25th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

اوور بکنگ کی گائیڈ

اوور بکنگ ایک ایسا لفظ ہے ، جس کے بارے میں وہ تمام لوگ واقف ہیں جو کہ جہاز کا سفر کرتے ہیں ۔ ہم آپ کو ایک گائیڈ کے زریعے اس مسئلے کے بارے میں بتاتے ہیں ۔ عام طور اس انگریزی کے لفظ کا استعمال کیا جاتا ہے لیکن اس لفظ سے ہوائی جہازوں کی کمپنیاں اور انکے ایجنٹ کافی فائدہ اٹھاتے ہیں ۔ ہوائی جہازوں کی کمپنیاں اوور بکنگ اس لیے کرتی ہیں تا کہ ان کے جہاز خالی نہ جائیں ۔ اوور بکنگ سے انہیں یہ فائدہ ہوتا ہے کہ اگر جہاز میں کوئی سیٹیں خالی رہ جائیں تو وہ اوور بکنگ کے زریعے ان کی کمی پورا کر لیتی ہیں ۔ ہوائی کمپنیاں بکنگ کے اصولوں میں چند ایسی باریک شکوں کو چھپا کر استعمال کرتی ہیں ، جن کے زریعے اوور بکنگ کا حربہ استعمال کیا جا سکے ۔ گاہک یا مسافر کو چاہئے کہ وہ ٹکٹ کی بکنگ کرواتے وقت ان کی شرا‏ئط پڑہ لے ۔ اوور بکنگ کی صورت میں مسافر سینکڑوں میلوں کا سفر کرتے ہوئے جب ائرپورٹ پر پہنچتا ہے تو اسے یہ خوبصورت پیغام سنایا جاتا ہے کہ جہاز میں جگہ نہیں ہے کیونکہ آپ کی اوور بکنگ ہے ۔ خاص طور پر جب بکنگ انٹرنیٹ یا آن لائن کے زریعے کی جاتی ہے تو اس صورت میں اوور بکنگ کا کھیل مزید کھیلا جاتا ہے ۔  یاد رہے کہ اوور بکنگ کے خلاف یورپین یونین نے ایک قانون بنا رکھا ہے جو کہ یورپ کے تمام ممالک رائج کر دیا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ تمام ممالک میں سفر کے قوانین میں بھی اوور بکنگ کے بارے میں شکیں موجود ہیں ۔ اس قانون کو CE n. 261/2004کہتے ہیں ، جس پر عمل کرنا ضروری قرار دیا گیا ہے ۔ وہ لوگ جو کہ اوور بکنگ کا شکار ہوتے ہیں ، وہ اس قانون کے زریعے اپنا دفاع کر سکتے ہیں ۔ اس قانون میں اوور بکنگ کے علاوہ جہاز کا دیر سے آنا اور فلائٹ کا کینسل ہو جانا بھی شامل ہے ۔ یورپین یونین کا یہ قانون اس وقت رائج کیا جاتا ہے ، جب جہاز کی کمپنی یورپ کے کسی ممالک سے کام کر رہی ہو یا پھر کسی غیر یورپین یونین کے ملک سے تعلق رکھتی ہو لیکن یہ یورپ کو ٹچ کر رہی ہو ۔ یاد رہے کہ اس قانون میں چارٹر فلائٹس بھی شامل ہیں ۔ غیر یورپین یونین کے ملک سے تعلق رکھنے والی ہوائی کمپنی کے پاس یورپ سے کام کرنے کا لائسنس ہونا لازمی ہے ۔ اووربکنگ کا کیس کرنے کے لیے مسافر کے پاس ایک ویلڈ ٹکٹ ہونا لازمی ہے ، جس پر بکنگ کی گئی ہو ۔ مسافر پر لازمی ہے کہ وہ چیک ان کے اسٹینڈ پر حاضر ہو ، مسافر پر لازمی ہے کہ وہ اس وقت کا خیال رکھے جو کہ قانون کے مطابق اسے بتایا گیا تھا ۔ یعنی چیک ان پر وقت پر پہنچا جائے ۔ وہ مسافر جو کہ مفت سفر کرتے ہیں یا پھر ڈسکاؤنٹ ٹکٹ حاصل کرتے ہیں ، ان پر یورپین یونین کا قانون اپلائی نہیں ہو گا ۔ اگر اووربکنگ کیوجہ سے مسافر زمین پر رہ جاتا ہے تو اس صورت میں ائر کمپنی کا فرض ہوتا ہے کہ وہ مسافر کو کسی دوسرے موقع کے لیے راضی کرے ، یعنی کسی دوسری فلائٹ کے لیے کہے ۔ اس کے بعد مسافر کا حق ہوتا ہے کہ وہ ان کی اس آفر پر عمل کرے یا نہ کرے ۔ یعنی سفر کو ترک کرنے کا فیصلہ کرے یا جاری رکھنے کا ۔ اگر مسافر چاہے تو وہ ٹکٹ کے پیسے واپس لینے کے لیے کہہ سکتا ہے اگر وہ یہ محسوس کرتا ہے کہ وہ اس کا سفر اب رائیگاں جائے گا ۔ اس کے علاوہ مسافر اس خرچے کے بارے میں بھی پوچھ سکتا ہے جو کہ اس نے ائرپورٹ پر پہنچنے کے لیے کیا ہے ۔ اگر مسافر چاہے تو وہ اگلی فلائٹ کے لیے بھی راضی ہو سکتا ہے ۔ مسافر کا حق ہوتا ہے کہ اگلی فلائٹ حاصل کرنے کے علاوہ اپنے نقصان کی رقم ہوائی کمپنی سے مانگ سکے ۔ 1500 کلومیٹر سے کم فاصلے کے سفر کے لیے مسافر نقصان کی رقم 250 یورو تک حاصل کرنے کا حقدار ہے ۔ 1500 کلومیٹر سے زیادہ فاصلے کے سفر کے لیے مسافر نقصان کی رقم 400 یورو تک حاصل کرنے کا حقدار ہے جو کہ یورپ کے ممالک میں شامل ہوں ۔ اسی رقم میں وہ فاصلے بھی شامل ہیں جو کہ 3500 کلومیٹر سے کم ہوں اور کسی بھی ملک میں جاتے ہوں ۔ باقی تمام تر فاصلوں اور ممالک کے لیے مسافر 600 یورو کے نقصان کا دعوہ کر سکتا ہے ۔ اگر مسافر نے اووربکنگ کی صورت میں کسی اگلے جہاز کے لیے آفر قبول کر لی ہے تو اس صورت میں مسافر کو نقصان کی رقم 50 فیصد دی جائے گی ۔ اس صورت میں بھی یہ دیکھا جائے گا ، اگر مسافر پہلی صورت میں یعنی 1500 کلومیٹر کے سفر کے دوران 2 گھنٹے دیر سے منزل مقصود پر پہنچا ہے ۔ 1500 کلومیٹر سے زیادہ  سفر کے دوران 3 گھنٹے دیر سے منزل مقصود پر پہنچا ہے اور باقی تمام منزل مقصود کے لیے 4 گھنٹے دیر سے پہنچا ہے ۔ یہ وقت اس وقت سے حاصل کیا جاتا ہے جو کہ پہلی فلائٹ کی بکنگ پر درج تھا ۔ اس کے علاوہ ائر کمپنی کا حق ہوتا ہے کہ اووربکنگ کی صورت میں اگر مسافر زمین پر رہ جائے تو وہ اسے تمام وہ آزائشیں مہیا کریں جو کہ اس نے انتظار کے دوران صرف کرنی ہیں ۔ مثال کے طور پر کھانا اور پینا، جو کہ اس نے انتظار کے تمام تر عرصے کے لیے استعمال کرنا ہے ۔ ہوٹل کی بکنگ ایک یا ایک سے زیادہ دنوں کے لیے ۔ ٹیلی فون کرنے کی سہولت اور فیکس یا انٹرنیٹ کی سہولت ، جس سے مسافر نے اپنے سفر کے بارے میں دوسروں کو آگاہ کرنا ہے ۔ اووربکنگ کی صورت میں زمین پر رہنے والے مسافروں کے لیے ائر کمپنی پر لازمی ہوتا ہے کہ وہ انہیں ایک فارم مہیا کرے ، جس پر مسافروں کے حقوق کے بارے میں لکھا ہوتا ہے ۔ اووربکنگ کی صورت میں ائر کمپنی کا فرض ہوتا ہے کہ وہ ٹریول ایجنسیوں کو اور اپنے چیک ان کے اسٹینڈ پر ان تمام اصولوں کو مہیا کریں جو کہ مسافروں کے لیے ایک گائیڈ کا کام دے سکتے ہیں ۔ فلائٹ کینسل ہونے کی صورت میں اور دیر سے آنے کی صورت میں بھی یہی طریقہ کار اپنایا جاتا ہے ۔ پہلی صورت میں رقم کی واپسی مسافر کو ملنا لازمی ہوتی ہے لیکن اگر مسافر کو ایک ہفتہ قبل فلائٹ کے منسوخ ہونے کا بتایا جائے تو اس صورت میں بات مختلف ہو گی ۔ اگر مسافر کو ایک ہفتے سے کم دنوں میں بتایا گیا ہے اور اس کے بعد اسے کسی دوسری فلائٹ کی آفر کی گئی ہے تو اس صورت میں بھی نقصان کی رقم ادا نہیں کی جائے گی ۔ اگر کسی قدرتی آفت سے فلائٹ کینسل ہوئی ہے تو اس صورت میں بھی نقصان کی رقم ادا نہیں کی جائے گی ۔ جہاز کے دیر سے آنے کی صورت میں ہوائی کمپنی کا حق ہوتا ہے کہ وہ مسافر کی ہر قسم کی مدد کرے یا اسے اسسٹنس دے ۔ اگر جہاز 5 گھنٹے سے زیادہ وقت کے لیے دیر سے آئے اور مسافر کے لیے یہ سفر ضروری نہ رہے تو مسافر ٹکٹ کی رقم کی واپسی کے لیے کہہ سکتا ہے ۔ یاد رہے کہ اپنا نقصان پورا کرنے کے لیے ہمیشہ عدالت یا سرکاری اداروں سے رابطہ کیا جا سکتا ہے لیکن اگر جہاز کی کمپنی مسافر سے تعاون کرے اور اسے دوسری کوئی آفر دے دے تو اس صورت میں مسئلہ حل کیا جا سکتا ہے ۔ فلائٹ کے دیر سے آنے کی صورت میں ، کینسل ہونے کی صورت میں اور اووربکنگ ہونے کی صورت میں ہوائی کمپنی کو ایک خط روانہ کیا جا سکتا ہے اور اس خط کے زریعے اپنے نقصان کی رقم کی واپسی کا دعوہ کیا جا سکتا ہے ۔ اگر یہ جواب نہ دیں تو کسی وکیل سے یا گاہکوں کی مدد کی ایسوسی ایشن سے رابطہ کیا جا سکتا ہے ۔ اس کے بعد یاد رہے کہ 516 یورو کی رقم تک آپ وکیل کے بغیر بھی امن کے جج کے پاس جا سکتے ہیں اور کیس کرسکتے ہیں ۔ زیادہ رقم کے لیے مسافر کو کسی وکیل کی ضرورت ہوگی ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

ایسوسی ایشن بنانے کا طریقہ کار

 

جب آپ ایک ثقافتی ایسوسی ایشن بنانے کا فیصلہ کرتے ہیں تو سب سے پہلے ضروری ہوتا ہے کہ آپ ایسے گروپ کو تشکیل دیں جو کہ ایسوسی ایشن کے نظریے پر یقین رکھتے ہیں ۔ اس کے بعد ایسوسی ایشن کا ایک آئین بنایا جاتا ہے اور اس کا منشور تیار کیا جاتا ہے ۔ اسکے بعد ایسوسی ایشن کے ممبران آئین اور منشور پر بحث و مباحثہ کرتے ہیں اور اسے حتمی شکل دی جاتی ہے ۔ ایسوسی ایشن کا منشور یا statutoاس قسم سے بنایا جاتا ہے ، جس میں جمہوری قدروں کا خیال رکھنا ضروری ہوتا ہے ۔ یعنی سب ممبران برابر کے حقوق رکھتے ہیں ، کوئی کسی بالاتر نہیں اور سب الیکشن کے زریعے منتخب کیے جاسکتے ہیں ۔ منشور کے اندر تمام حقوق اور عہدوں کا زکر کیا جاتا ہے ۔ ایسوسی ایشن بنانے کے لیے مندرجہ زیل کوائف درج کیے جاتے ہیں ۔1۔ ایسوسی ایشن کا مقصد کیا ہے ۔ 2۔ وہ تمام کوائف جو کہ ایسوسی ایشن بنانے کے لیے ضروری ہوتے ہیں ۔ 3۔ ایسوسی ایشن کے ممبران کا زکر انکی تقرری کی مدت اور انکے فرائض۔ ایسوسی ایشن کو اپنے متعلقہ صوبے کے دفتر میں رجسٹرڈ کروایا جاتا ہے ۔ اگر ممبران کے ساتھ کنٹریکٹ کیے جاتے ہیں ، یا پھر سرکاری دفاتر سے فنڈ حاصل کیے جاتے ہیں۔ یاد رہے کہ فنڈ اور کنٹریکٹ ایسوسی ایشن اس وقت کرتی ہے ، جب اسکو بنائے ہوئے 2 سال کا عرصہ گزر چکا ہو ۔ ایسوسی ایشن کو بنانے کا ایکٹ اور اس کا منشور ایک نوٹری پبلک یا notaioکے سامنے پیش کیا جاتا ہے جو کہ اسے رجسٹر کرتا ہے ۔ اس عمل کے لیے ایسوسی ایشن کے بنیادی ممبران کا ہونا ضروری ہوتا ہے ۔ اس پر 300 یورو کا خرچہ آتا ہے ۔ ایسوسی ایشن ایک شخص کی طرح نہیں ہوتی ، اس لیے اس کے نام پر جائیداد نہیں بنائی جا سکتی ۔ ایسوسی ایشن کا ایک ڈھانچہ بنایا جاتا ہے جس میں مندرجہ زیل کوائف پورے کرنا لازمی ہوتے ہیں ۔ 1۔ ایسوسی ایشن کے ممبران کی سال میں ایک میٹنگ لازمی ہوتی ہے ، جس میں بالائی کونسل کا انتخاب ہوتا ہے ، خزانچی موجود ہوتے ہیں اور اگلے سال کے بجٹ کے لیے بحث کی جاتی ہے اور اسکی منظوری کے لیے  بل پاس کیا جاتا ہے ۔ اس میٹنگ میں بنیادی ممبران کا ہونا ضروری ہوتا ہے ۔ 2۔ ایسوسی ایشن کی consiglio Direttivoیا پھر بنیادی ممبران کی کونسل کے پاس عام اور خاص اختیارات ہوتے ہیں ۔ بنیادی کونسل میں ایسوسی ایشن کا صدر، نائب صدر اور ایک اور ممبر ہونا لازمی ہوتا ہے ۔ بنیادی کونسل میں ممبران کی تعداد طاق اعداد میں ہونا لازمی ہوتی ہے ۔ یعنی تین ، پانچ یا سات وغیرہ ۔ ایسوسی ایشن کے صدر کے پاس تمام اختیارات موجود ہوتے ہیں جو کہ ایسوسی ایشن کے لیے فیصلہ کن ہوتے ہیں ۔ 3۔ بنیادی کونسل ایسوسی ایشن کے خزانچیوں کا انتخاب کرتی ہے ، جسے Collegio dei Revisori dei Contiکہتے ہیں ۔ ایسوسی ایشن کے خزانچی یا کالج اسکی فنانس اور معاش کا خیال رکھتے ہیں ۔ خزانچیوں کے لیے ضروری ہوتا ہے کہ وہ ایسوسی ایشن کی رقم کو سوشل کاموں کے لیے خرچ کریں اور ایسوسی ایشن کے منشور پر عمل کریں ۔ 4۔ ایسوسی ایشن کا صدر اسکا لیگل ممبر ہوتا ہے اور یہ تمام قانونی کاروائیوں کا جواب دہ ہوتا ہے ۔ صدر کا انتخاب بنیادی کونسل یا عام ممبران کی کونسل کے زریعے کیا جاتا ہے ۔ صدر کا عہدہ باقی تمام عہدوں کی طرح معینہ مدت پر مبنی ہوتا ہے ۔ ایسوسی ایشن کے تمام سوشل کام ایک رجسٹر میں درج کیے جاتے ہیں ۔ ضروری نہیں کہ ان کاموں کو کہیں شو کیا جائے لیکن ان کا اندراج کاغذات میں ہونا ضروری ہوتا ہے ۔ ایسوسی ایشن کی کاروا‏ئیاں ممبران کے علاوہ دوسرے عام اشخاص کے لیے بھی جاری کی جاتی ہیں ۔ تمام تر کاروائیاں یا خدمات کسی نفع کے بغیر کی جاتی ہیں اور اس سے کمائی نہیں کی جا سکتی ۔ وہ تمام کمرشل کام ، جس میں بچت کی جاتی ہے ، ان تمام کاروائیوں کے لیے ٹیکس نمبر یا پارتیتا ایوا کھولا جاتا ہے اور اس میں تمام تر بچت اور اخراجات اور ٹیکسوں کا رجسٹر بنایا جاتا ہے لیکن ایسوسی ایشن کی اس بچت کو عام کاروبار سے تشبیع نہیں دی جا سکتی ۔ ایسوسی ایشن کی بچت کو اسکی نشو نما کے لیے خرچ کر دیا جاتا ہے ۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ ایسوسی ایشن ایک سرکل یا Circoloکا روپ اختیار کرے اور آپ اپنے ممبران کو سروس مہیا کریں ۔ مثال کے طور پر بیوریج، شراب، فوڈ یا دوسری قسم کی فروخت تو اسکے لیے آپ کو وزارت داخلہ سے اجازت حاصل کرنی ہوگی ۔ وزارت داخلہ قوم کو فارغ وقت کے لیے ایک اجازت نامہ جاری کرتی ہے ۔ اس مقصد کے لیے ایسوسی ایشن کو اٹلی کی بڑی ایسوسی ایشنیں ARCI; ACLIکا وغیرہ کا ممبر بننا ہوتا ہے ۔ یاد رہے کہ ایک عام ایسوسی ایشن بنانے کے لیے نوٹری پبلک کی ضروری نہیں ہوتا ۔ صوبے کے ایسوسی ایشن کے دفتر میں جا کر بتانا ہوتا ہے کہ آپ ایسوسی ایشن کیوں بنانا چاہتے ہیں ۔ ایسوسی ایشن کونسے کام کرے گی اور اسکے مقاصد کیا ہیں ۔ اس کی کیا کونسی ملکیت ہے ، اس کا دفتر کہاں ہے ۔ ایسوسی ایشن کے مقاصد میں عہدوں اور انکے حقوق و فرائض کا زکر ہونا لازمی ہوتا ہے ۔ ایسوسی ایشن بنانے سے قبل ضروری ہے کہ آپ اٹلی سول کوڈ کی کتاب کا 14 واں اور 35 واں آرٹیکل ضرور پڑہ لیں ۔ ایسوسی ایشن بغیر کسی خرچے کے بنائی جا سکتی ہے ۔ اٹلی کے قانون کے مطابق ایسوسی ایشنیں اور کلچرل سرکل اسٹیٹ کی جانب سے منظور شدہ اور نا منظور شدہ دونوں کام کر سکتے ہیں ۔ ایسوسی ایشن کے لیے جب اپلائی کیا جاتا ہے تو اسی درخواست  صوبے سے متعلقہ پریفی تورا میں اور اسکے بعد متعلقہ وزارت اور اسکے بعد اٹلی کے صدر کے دفتر سے منظور ہوتی ہے ۔ اگر تمام کام وقت کے مطابق ہو جائے تو 2 سالوں کے اندر ایسوسی ایشن کو منظور کر لیا جاتا ہے ۔ ایسوسی ایشن کو جلد منظور کروانے کے لیے ضروری ہوتا ہے کہ یہ اپنے منشور میں یہ ظاہر کردے کہ یہ صوبائی اور ریجنل لیول پر کام کرے گی ۔ اس صورت میں ریجن کا صدر ایسوسی ایشن  کی منظوری جاری کر دیتا ہے ۔ منظور شدی کے لیے  ایسوسی ایشن کا منشور اور آئین ایک نوٹری پبلک سے لکھا ہونا ضروری ہوتا ہے ۔ ایسوسی ایشن کا سالانہ بجٹ جاری کرنا لازمی ہوتا ہے ۔ اگر ایسوسی ایشن کسی قومی ایسوسی ایشنوں کی تنظیم یعنی آکلی اور آرچی سے ممبر شپ کرے تو اس صورت میں ایسوسی ایشن کم ٹیکس ادا کرتی ہے ۔ اس قانون کو 94۔153 آرٹیکل 14 کہتے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

قسطوں پر خریداری کی گائیڈ

 

عام طور پر دکان دار اپنے گاہکوں کو سامان فروخت کرنے کے لیے قسطوں پر خریداری کرنے پر رضامند کرتے ہیں ۔ مثال کے طور پر اگر آپ نے ایک اچھا ٹیوی خریدنا ہے، فریج، بیڈ کا گدا تو آپ پوری رقم دینے کی بجائے قسطیں کر سکتے ہیں ۔ اس قسم کے قسطوں کے سسٹم کو credito al consumoیا استعمال ہونے والی چیزوں کا سسٹم قرار دیا جاتا ہے ۔ اس سسٹم سے استعمال ہونے والی مہنگی چیزیں بھی خریدی جا سکتی ہیں ۔ قسطوں پر خریداری کی رقم تقسیم کرتے ہوئے ادا کی جاتی ہے ۔ عام طور پر ماہانہ قسط کی جاتی ہے اور یہ قسط کی رقم ختم ہونے تک جاری رہتی ہے ۔ قسطوں پر خریداری عام طور پر  بنکوں یا فنانس کے اداروں کی طرف سے کی جاتی ہے یا پھر زاتی قرضہ داری سے کی جاتی ہے ۔ استعمال ہونے والی چیزوں کے قرضوں کے سسٹم میں وہ اشیا آتی ہیں جن کی کم سے کم قیمت 200 یورو ہواور زیادہ سے زیادہ انکی قیمت 75ہزار یورو تک ہو ۔  اشیا کی خریداری کے بعد انکی قیمت ادا کرنے کے لیے قسطیں کی جاتی ہیں جو کہ ایک تہہ شدہ رقم پر مبنی ہوتی ہیں ۔ اس رقم کی ادائیگی آپ اپنے بنک کے کرنٹ اکاؤنٹ یا کریڈٹ کارڈ کے زریعے ادا کر سکتے ہیں ۔ آپ خود براہ راست ادا کر سکتے ہیں یا پھر آپ اپنے بوستا پاگا سے پانچواں حصہ قسط کی ادائیگی کے لیے صرف کر سکتے ہیں ۔ یہ رقم ہر ماہ براہ راست آپ کی پے سلپ یا بوستا پاگا سے کاٹ لی جاتی ہے ۔

استعمال ہونے والی چیزوں کی قسطوں کے لیے ایک باقاعدہ معاہدہ کیا جاتا ہے ۔ ،عام طور پر اس صورت میں فنانس کا ادارہ دکان دار کے زریعے گاہک سے ایک معاہدہ کرتا ہے ، جس کے مطابق گاہک پر لازمی ہوتا ہے کہ وہ سامان کی مکمل رقم قسطوں کے زریعے ادا کرے ۔ اس طریقہ کار کے لیے ایک باقاعدہ لکھا ہوا معاہدہ کیا جاتا ہے ، جس کی ایک کاپی گاہک کو دی جاتی ہے ۔ فنانس کا ادارہ استعمال ہونے والی چیزوں کا قرضہ جاری کرنے سے قبل گاہک کی معاشی صورت حال سے واقفیت حاصل کرتا ہے ۔ یہ دیکھا جاتا ہے کہ اگر گاہک نے کوئی دوسرا قرضہ لے رکھا ہے یا پھر اس کی بچت خوشحال ہے یا نہیں ۔ گاہک سے ہونے والے معاہدہ یا کنٹریکٹ میں کافی معلومات موجود ہوتی ہیں۔ اس میں لکھا ہوتا ہے کہ گاہک کا نام وغیرہ کیا ہے اور فنانس کے ادارے کا نام وغیرہ کیا ہے ۔ اس کے بعد اس سامان یا چیز کا نام لکھا ہوتا ہے جو کہ خریدی گئی ہے ۔ اس میں چیز کی قیمت درج ہوتی ہے اور قسطوں کی تہہ کردہ رقم بھی موجود ہوتی ہے ۔ اس کے بعد قسطوں کی اختتام کی تاریخ درج ہوتی ہے ۔  اگر آپ قسط دیر سے جمع کروائیں تو اس صورت میں اضافی رقم کے بارے میں درج ہوتا ہے ۔ اگر آپ وقت سے قبل تمام قسطوں کی رقم جمع کروانے کے خواہشمند ہیں تو اس صورت میں آپ کو مختلف اخراجات اور سرکاری اخراجات کی رقم بھی ادا کرنی ہوتی ہے جو کہ آپ کے معاہدہ کے لیے منعقد کی گئی تھی ۔ معاہدہ میں لکھا ہوتا ہے کہ آپ کو قرضے میں کتنی رقم ادا کی گئی ہے اور اس کے بعد آپ نے قسطوں کے زریعے کتنی رقم ادا کرنی ہے ۔ معاہدہ میں لکھا ہوتا ہے کہ آپ نے کتنا سود ادا کرنا ہے یا پھر TAEGکی رقم کتنی ہوگی ۔ معاہدہ میں لکھا ہوتا ہے کہ قرضے کی رقم وقت اور حالات کے بعد کیسے تبدیل ہو گی ۔ یاد رہے کہ فنانس کے ادارے والے گاہک سے وہ اضافی رقم حاصل نہیں کر سکیں گے ، جس کا زکر کنٹریکٹ میں نہیں کیا گیا ۔ TAEGکیا ہے ۔ یہ الفاظ کا مخفف ہے جسے tasso annuo effettivo globaleیا اصل سالانہ گلوبل ٹیکس کہتے ہیں ۔ ہوتا یوں ہے کہ آپ گاہک کی صورت میں ہزاروں یورو کی ایک کار خریدتے ہیں اور پوری رقم نہ ہونے کیوجہ سے کسی فنانس کی ایجنسی سے قرضہ حاصل کرتے ہوئے قسطیں کرتے ہیں جو کہ ایک تہہ شدہ عرصے میں ادا کیا جاتا ہے ۔ اس عرصے میں فنانس والے آپ کو مکمل رقم ادا کر دیتے ہیں ۔ اس رقم کی ملکیت پر فنانس والے ٹائیگ ٹیکس ادا کرتے ہیں اور فنانس والے یہ رقم گاہک سے حاصل کرتے ہیں ۔ ٹائیگ کی رقم گاہک کو قسطوں اور سود کے علاوہ ادا کرنی ہوتی ہے ۔ ٹائیگ کی رقم کنٹریکٹ میں موجود ہوتی ہے ۔ گاہک یہ رقم قسطوں کے زریعے ادا کرتا ہے ۔

خبردار۔ عام طور پر فنانس کمپنیوں والے گاہک کو اس وقت قرضہ ادا کرتے ہیں ، جب وہ ڈاک کی رسیدوں کے زریعے قسط ادا نہ کرے بلکہ کسی بنک اکاؤنٹ یا کریڈٹ کارڈ سے قسطیں ادا کرے ، اسی لیے فنانس کمپنی والے گاہک کے کرنٹ اکاؤنٹ کا پوچھتے ہیں ۔ اگر آپ بنک کے زریعے RIDکے طریقے سے قسط ادا کریں اور کسی وجہ سے قسط بند کروانے کے خواہشمند ہوں تو آپ کو بنک میں یا تو ایک خط واپسی کے جواب والی رجسٹری سے روانہ کرنا ہوگا یا پھر خود بنک میں جا کر قسط کو رکوانا ہوگا۔ اگر آپ اپنے کریڈٹ کارڈ کے زریعے قسط ادا کر رہے ہیں تو اس صورت میں آپ کو فنانس کمپنی کو ایک خط واپسی کے جواب والی رجسٹری کے ساتھ روانہ کرنا ہوگا ۔ یعنی اگر آپ نے کوئی قسط ادا نہیں کی یا پھر کسی قسط کا رزلٹ موجود نہیں تو اس صورت میں فنانس کمپنی کو خبرداد کیا جاتا ہے ۔   ایک نئے قانون کے مطابق اگر گاہک چاہے تو وہ قرضے کے معاہدے کو ختم کر سکتا ہے ۔ نئے قانون کے مطابق گاہک قرضے کے معاہدے کو اس کے شروع ہونے کے بعد 14 دنوں کے اندر رکوا سکتا ہے ۔ اگر گاہک نے قرضے کی رقم حاصل کر لی ہے تو اس صورت میں اسے تمام رقم کیس گئے اخراجات کے ساتھ واپس کرنا ہوگی ۔ اگر فنانس کمپنی نے قرضے کی رقم ادا نہیں کی تو اس صورت میں گاہک خریدی ہوئی چیز کی تمام تر رقم دکاندار کو ادا کرے گا ، جہاں سے اس نے یہ چیز خریدی ہے ۔ یاد رہے کہ اگر آپ کوئی قسط ادا نہیں کریں گے تو اس سے آپ کو مسائل کا سامنا کرنا ہوگا ۔ سب سے پہلے فناس کمپنی آپ کو ایک پیغام کے زریعے قسط ادا کرنے کے لیے کہے گی ۔ اگر آپ اس پیغام پر بھی قسط کی رقم ادا نہیں کریں گے تو آپ کو ایک نوٹس کے زریعے باخبر کیا جائے گا اور آپ کا معاہدہ ختم کر دیا جائے گا ۔ قسطیں ادا نہ کرنے پر آپ کا نام CRIFیعنی ان افراد میں ڈال دیا جائے گا جو کہ بنک کرپٹ یا دیوالیہ میں شامل ہوتے ہیں ۔ اس کے علاوہ فنانس کمپنی آپ سے رقم حاصل کرنے کے لیے چارہ گوئی کرے گی ۔

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

غیر ملکی ملازموں کی پہلی بھرتی اور نوکری تبدیل کرنے کا حق

اگر آپ ایک غیر ملکی ملازم کو کام پر رکھنا چاہتے ہیں اور اس کا تعلق ایک غیر یورپین ملک سے ہے تو آپ کو اپنے متعلقہ صوبے کے دفتر sportello unicoیا اجتماعی دفتر سے di nulla ostaیا اجازت نامہ حاصل کرنا ہو گا ۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ غیر ملکی کو کام والی جگہ کے ایڈریس پر رکھا جا ئے تو اس صورت میں اس صوبے یا علاقے کا ایڈریس استعمال کیا جائے گا ۔ اس بھرتی کے لیے آپ کو سالانہ کوٹے یا decreto flussiکا انتظار کرنا ہو گا ۔ یہ کوٹے غیر یورپین امیگرنٹس کے لیے تیار کیے جاتے ہیں ۔

اگر آپ غیر ملکی ملازم کو پہلے سے جانتے ہیں تو آپ کو مندرجہ زیل کوائف پورے کرنا ہونگے۔ نلا اوستا یا اجازت نامہ حاصل کرنے کی درخواست۔۔ تمام وہ کاغذات جن سے یہ ثابت ہو کہ غیر ملکی ملازم کی رہائش قانون کے مطابق ہے ۔یہ قانون ہر صوبے میں مختلف ہوتا ہے ۔ ۔ کام کے کنٹریکٹ کی پیشکش، کنٹریکٹ کے کوائف کی قبولیت اور غیر ملکی ملازم کے ملک کے جہاز کی واپسی کی ٹکٹ۔ ۔ آپ کا حق ہے کہ آپ اجتماعی دفتر میں ایک ڈیکلریشن کے زریعے یہ ثابت کریں کہ آپ کنٹریکٹ کے متعلق تمام تبدیلیوں سے دفتر کو باخبر کریں گے ۔  ان تبدیلیوں میں کنٹریکٹ ختم کرنا یا ایڈریس کی تبدیلی وغیرہ شامل ہیں ۔اگر آپ غیر ملکی ملازم کو نہیں جانتے تو اس صورت میں مندرجہ بالا کاغذات کے ساتھ اجازت نامہ حاصل کرنے کے لیے آپ کو ان لسٹوں میں درخواست جمع کروانی ہوگی جو کہ اٹالین کونصلیٹوں یا ایمبیسیوں میں موجود ہوتی ہیں ۔ یہ لسٹیں صرف ان ممالک میں پائی جاتی ہیں ،جن ممالک کے ساتھ اٹلی نے امیگریشن کے موضوع پر باہمی معاہدات کر رکھے ہیں ۔ یہ لسٹیں ہر ملک میں مختلف ہوتی ہیں ۔ ان میں غیر ملکی ملازم کے تمام کوائف نام اور تاریخ پیدائش وغیرہ، اس کا پروفیشن یا کام کی مہارت، اٹالین زبان کے لکھنے اور بولنے کا صلاحیت، کام کی قسم اور ترجیح( موسمی ملازم، مدت کا کنٹریکٹ یا غیر معینہ مدت کا کنٹریکٹ) ۔ اس کے علاوہ یہ بھی لکھا ہوتا ہے کہ ملازم نے کونسا فارمیشن کا کورس کیا ہے اور یہ کس سیکٹر میں کام کرنے کی اہلیت رکھتا ہے ۔

Sportello unicoیا اجتماعی دفتر ان درخواستوں کو روزگار کے دفتر یا centro per l’impiegoیا سی پی آئی میں روانہ کر دیتا ہے ۔ سی پی آئی والے یہ دیکھتے ہیں کہ آیا کہ ان نوکریوں کے لیے اگر اس دفتر کی لسٹوں میں جگہ ہے یا نہیں ہے ۔ اگر ملک کے کسی صوبے میں ان نوکریوں کے لیے لوکل بے روزگار ملازمین نے درخواست دے رکھی ہے ۔ اجتماعی دفتر والے ان لسٹوں کی پبلسٹی کے لیے انہیں انٹر نیٹ میں بھی شائع کر دیتے ہیں ۔ ان لسٹوں کو سی پی آئی دفتروں میں ٹیلی میٹک طریقے سے روانہ کیا جاتا ہے ۔ اجتماعی دفتر ان لسٹوں کی اشاعت کے لیے تمام ہتھکنڈے استعمال کرتا ہے ۔ اجتماعی دفتر درخواست جمع کرنے کے بعد 40 دنوں میں اس پر یوں کام کرتا ہے  ۔ دفتر والے تھانے کے ڈائریکٹر کا جواب طلب کرتے ہیں ۔ ڈائریکٹر غیر ملکی ملازم اور کام کے مالک کی چھان بین کرتا ہے ۔ اب نئے قانون کے مطابق کام کے مالک کی  نلا اوستا یا اجازت نامہ حاصل کرنے کے لیے چھان بین ختم کر دی گئی ہے ۔  ۔ اس کے صوبے کے کام کے دفتر کے دفتر کی اجازت حاصل کی جاتی ہے ۔ اس دفتر میں کام کے کنٹریکٹ کی قسم دیکھی جاتی اور یہ دیکھا جاتا ہے کہ اگر مالک نے کنٹریکٹ کے تمام لوازمات پورے کیے ہیں یا نہیں۔ اس کے علاوہ مالک کی سالانہ بچت کا حساب لگایا جاتا ہے ۔ اگر ان دفاتر میں سے کوئی ایک درخواست کو منظور نہ کرے ، تو اس صورت میں اجتماعی دفتر والے اس درخواست کو نا منظور کر دیتے ہیں ۔ اگر درخواست کو منظور کر لیا جائے تو اس صورت میں

۔ مالک کو اطلاع کی جاتی ہے کہ وہ نلا اوستا یا اجازت نامہ حاصل کرے اور کنٹریکٹ کے کاغذات پر دستخط کرے۔

۔ ٹیلی میٹک طریقے سے اٹالین کونصلیٹ کو اس نلا اوستا کے لیے مطلع کیا جاتا ہے ۔

یاد رہے کہ ملازمت کے اجازت نامہ  کی مدت اس کے جاری ہونے کے بعد  صرف 6 ماہ ہوتی ہے ۔ ان 6 مہینوں میں غیر ملکی ملازم کا فرض ہوتا ہے کہ وہ اپنے ملک کی اٹالین کونصلیٹ یا ایمبیسی میں جا کر کام کا ویزہ حاصل کر لے ۔

مالک کا فرض ہوتا ہے کہ وہ ملازم کو اجازت نامہ کی ایک کاپی روانہ کر دے۔ اجازت نامہ کی کاپی حاصل کرنے کے بعد ملازم اپنے ملک میں موجود اٹالین کونصلیٹ یا ایمبیسی میں جائے گا اور ایک اپوائنٹمنٹ یا ملاقات کا دن حاصل کرے گا ۔ ملازم کےملاقات کا دن وقف کرنے سے قبل ایمبیسی کو ٹیلی میٹک طریقے سے اجازت نامے کے بارے میں مطلع کر دیا جاتا ہے ۔ اس کے بعد ایمبیسی والے ملازم کو کنٹریکٹ کے متعلق بتاتے ہیں اور 30 دنوں کے اندر ویزہ جاری کر دیتے ہیں ۔ اس کے علاوہ ایمبیسی والے اٹالین وزارت داخلہ، کام کی وزارت اور سوشل ادارے انپس اور اینائل کو بھی ویزے کی اطلاع کر دیتے ہیں ۔ اس کے بعد غیر ملکی ملازم اٹلی میں آتا ہے اور پہلے 8 دنوں کے اندر اجتماعی دفتر میں جا کر کنٹریکٹ پر دستخط کرتا ہے اور اس کے علاوہ پر میسو دی سوجورنو حاصل کرنے کے لیے بھی درخواست دیتا ہے ۔ اگر غیر ملکی 8 دنوں کے اندر اجتماعی دفتر میں نہ جائے تو اسے اٹلی میں غیر قانونی شہری تصور کیا جائے گا ۔ وزیر داخلہ نے 20 فروری 2007 کو ایک قانون بنایا ہے ، جس کے مطابق غیر ملکی پہلی سوجورنو حاصل کرنے سے قبل ڈاک کی رسید کے ساتھ کام تبدیل کر سکتا ہے۔ وزارت کو اس بات کا علم ہے کہ پہلی پر میسو دی سوجورنو حاصل کرنے کے لیے ایک غیر ملکی کو سال تک کا انتظار کرنا پڑتا ہے اور اس دوران اگر اس کا کام ختم ہو جائے تو وہ دوبارہ کام کا کنٹریکٹ کر سکتا ہے ۔ اس صورت میں اسے دوبارہ سوجورنو کا کنٹریکٹ کرنا ہو گا اور اس کے بعد روزگار کے دفتر میں دوبارہ بتانا ہو گا ۔ سوشل ویلفئر کے وزیر نے استرانیری ان اطالیہ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ غیر ملکی اپنی پہلی سوجورنو کا انتظار کرتے ہوئے کام بدل سکتا ہے ۔ یاد رہے کہ وزارت داخلہ نے ایک قانون کے مطابق یہ ثابت کر دیا ہے کہ سوجورنو کو جمع کروانے کے بعد حاصل ہونے والی ڈاک کی رسید سوجورنو کے برابر ہے ۔ یعنی اس سے نیا کام تلاش کیا جا سکتا ہے ، صحت کا کارڈ بنوایا جا سکتا ہے اور اپنے ملک واپس جایا جا سکتا ہے ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

اٹالین شہریت حاصل کرنے کا قانون

 

اٹالین شہریت حاصل کرنے کا نیا قانون بدل گیا ہے ۔ نئے قانون کا نام 15 luglio 2009 n. 94  ہے ۔ اس قانون میں چند معاملات میں اضافے کے علاوہ کچھ تبدیلیاں لائی گئی ہیں ۔ اس قانون  پر8 اگست 2009 سے عملدرآمد شروع ہو رہا ہے ۔ اس قانون سے قبل ایک غیر ملکی کسی اٹالین سے شادی کرنے کے 6 ماہ بعد اپنے ریذیڈنس یا کمونے میں رجسٹریشن کے ساتھ اٹالین شہریت حاصل کرنے کی درخواست دے سکتا تھا ۔ اس شادی کے دوران اگر ان دونوں میں طلاق ہو جاتی تھی تو اس صورت میں بھی غیر ملکی کی اٹالین شہریت کی درخواست کینسل نہیں کی جاتی تھی ۔ طلاق ہونے کی صورت میں بھی غیر ملکی شہریت حاصل کرنے والے دن تمام کوائف پورے کرتے ہوئے شہریت حاصل کر لیتا تھا ۔ یعنی شادی کے بعد شہریت حاصل کرنا ایک حق تصور کیا جاتا تھا ۔ اٹالین شہریت حاصل کرنے کے لیے ایک نیا ٹیکس لگایا گیا ہے ۔ اسکے علاوہ شادی کے بعد شہریت کی درخواست شادی کے 2 سال بعد دی جائے گی اگر آپ کسی دوسرے ملک میں آباد ہیں اور ایک اٹالین سے شادی کرتے ہیں تو اس صورت میں شادی کے 3 سال بعد اٹالین شہریت کی درخواست دی جائے گی ۔ موجودہ قانون کے مطابق شادی کے 6 ماہ بعد شہریت کی درخواست دی جاتی تھی۔ شہریت کی درخواست جمع کرواتے وقت 200 یورو کا ٹیکس جمع کروایا جائے گا ۔ پہلے قانون کے مطابق تمام کاغذات کا حلفیہ بیان دیا جا سکتا تھا لیکن اب تمام کاغذات یعنی فیملی کا سرٹفیکٹ، ریذیڈنس وغیرہ اصل ہونے ضروری ہیں اور یہ تمام درخواست کےساتھ نتھی کرنا لازمی ہیں ۔ تمام کاغذات کا اصل ہونا ان غیر ملکیوں کے لیے بھی ضروری قرار دے دیا گیا ہے جو کہ یورپین کمونٹی کے شہری ہیں ۔ 200 یورو جمع کروانے کا قانون بنا دیا گیا ہے لیکن ابھی تک یہ واضع نہیں کیا گیا کہ یہ رقم کہاں اور کیسے جمع کروائی جائے گی ، البتہ یہ کہا گیا ہے کہ کب درخواستیں اس ٹیکس کے بغیر جمع کروائی جا سکتی ہیں جب تک کہ نئے حکم جاری نہیں ہو جاتے ۔ وہ غیر ملکی جنہوں نے اٹالین شہریت حاصل کرنے کی درخواست دے رکھی ہے ۔ ان کے لیے بھی بری خبر ہے ۔ نیا قانون 2009/94 ان لوگوں پر بھی اثر کرے گا ۔ نئے قانون کے مطابق وہ غیر ملکی جنہوں نے اٹالین سے شادی کرنے کے بعد اٹالین شہریت حاصل کرنے کی درخواست دے رکھی ہے ۔ اگر انہوں نے یہ درخواست 2 سال قبل دی تھی تو یہ اٹالین شہریت پرانے قانون کے تحت حاصل کر سکتے ہیں لیکن اگر ان کی درخواست دو سال سے کم عرصے کے لیے جمع ہے تو اس صورت میں ان پر نیا قانون لاگو ہو گا ۔ یعنی انہیں ثابت کرنا ہو گا کہ یہ اس عرصے کے دوران اٹلی میں قانونی طور پر رہائش پذیر ہیں اور انکے پاس اپنے کمونے کا ریذیڈنس بھی ہے ۔ انہیں اپنی درخواست کے ساتھ تمام اصل کاغذات یعنی فیملی کا سرٹفیکٹ اور ریذیڈنس کا سرٹیفکٹ نتھی کرنا ہو گا ۔ لوازمات نہ پورے کرنے کی صورت میں ان کی درخواست کینسل کر دی جائے گی ۔ یاد رہے کہ نئے قانون کے مطابق اب اٹلی میں موجود غیر ملکی اگر کسی اٹالین شہری سے شادی کرنا چاہتا ہے تو اس کے لیے اسے اٹلی میں ریگولر ہونا لازمی ہے ۔ اس کے علاوہ اسے یہ بھی ثابت کرنا ہو گا کہ یہ اپنی بیوی یا خاوند کے ساتھ ایک ہی جگہ پر رہ رہا ہے اور انکی شادی صرف کاغذی نہیں ۔ یہ قانون ان غیر ملکیوں کے لیے ضروری قرار دے دیا گیا ہے ، جنہوں نے دو سال کے کم عرصے سے شہریت کی درخواست دے رکھی ہے ۔ نئے قانون کے مطابق شہریت کی درخواست کے ساتھ یہ دو فارم نتھی کرنا لازمی قرار دے دیے گئے ہیں ۔

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com