Monday, Jul 15th

Last update12:39:09 AM GMT

RSS

اٹلی میں اڑھائی لاکھ غیر ملکی ووٹ ڈالیں گے

روم، 24 فروری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کی قومی اسمبلی اور سینٹ کے الیکشن میں اڑھائی لاکھ غیر ملکی ووٹ ڈالیں گے ۔ اگر امریکہ میں لیٹن امریکن اوبامہ کو کامیاب کرواسکتے ہیں تو اسی طرح اٹلی میں بھی اڑھائی لاکھ غیر ملکی اپنا ووٹ کاسٹ کرتے ہوئے الکیشن میں اپنا وزن بنا سکتے ہیں ۔ یاد رہے کہ گزشتہ الکیشن میں اٹالین شہریت رکھنے والے غیر ملکی بہت کم تھے اور کسی بھی پارٹی نے غیر ملکیوں کے ووٹ پر توجہ نہیں دی تھی لیکن اس الیکشن میں غیر ملکیوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔ اڑھائی لاکھ غیر ملکیوں میں 20 فیصد وہ غیر ملکیوں کے بچے ہیں ، جنہوں نے 18 سال کی عمر پوری کرنے پر شہریت حاصل کی ہے ۔ اٹلی کے زون لومبردیا میں اٹلی کی قل تعداد میں سے 25 فیصد غیر ملکی آباد ہیں اور اسی وجہ سے اس زون میں شہریت رکھنے والے غیر ملکی بھی کافی تعداد میں آباد ہیں ۔ لومبردیا میں 60 ہزار غیر ملکیوں کے پاس اٹالین شہریت موجود ہے اور اس زون کے الیکشن میں چند غیر ملکی الیکشن میں حصہ بھی لے رہے ہیں ۔ استرانیری ان اطالیہ کے ڈائریکٹر لوچیانو نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ آج کا اٹلی بدل چکا ہے اور وہ سیاسی پارٹیاں جو کہ غیر ملکیوں کو کمتر سمجھتے ہوئے انکے حقوق کی استحصالی کرتی ہیں ، انہیں جلد پتا چل جائے گا کہ اب یہ غیر ملکی اٹلی کی سیاست کو دور سے دیکھنے والے تماشائی نہیں بلکہ اس سیاست کا حصہ بن چکے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار برائے صوبائی اسمبلی صوبہ لومبردیا

ریجو امیلیا ( مسعود شیرازی سے ) سید ریاض تنویر ایڈووکیٹ 13 جون 1984 پاکستان میں پیدا ہوئے اورانہوں نے مارچ 2012 میں اٹلی کی شہریت حاصل کی ۔ آٹھ سال کی عمر میں اٹلی میں امیگرنٹ ہوئے ۔ ابتدائی تعلیم حاصل کرنے کے بعد انہوں نے 2009 میں وکالت کی ڈگری حاصل کی  اور اپنی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کی بدولت جلد ہی شہرت حاصل کر گئے ۔ اٹلی میں سول سروس صرف اٹالین شہریت رکھنے والے کرسکتے ہیں ، سید ریاض تنویر نے عدالت میں کیس کردیا اور اپنے دلائل کی روشنی میں غیر ملکیوں کو بھی سول سروس کرنے کی درخواست کی ۔ عدالت نے انکی درخواست قبول کرلی اور یہ خبر پورے اٹلی میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی اور پاکستان کا نام روشن ہوا ۔ ہر جگہ یہی کہا جا رہا تھا کہ ایک پاکستانی نے سالوں پرانا قانون تبدیل کروا دیا ۔ سید ریاض تنویر نے 2013 میں سیاست میں قدم رکھا اور اب وہ 24 اور 25 فروری کو ہونے والے الیکشن میں ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار برائے صوبائی اسمبلی صوبہ لومبردیا میں کونصلر کی سیٹ پر الکیشن لڑ رہے ہیں ۔

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

پاکستانی جوانیتی کو ووٹ دیں ، عبدالرحمان

روم، 17 فروری 2013 ۔۔۔۔ آج کل اٹلی میں ریجنل اور قومی الکیشنوں کی کمپین کے سلسلے میں پورے ملک میں گہما گہمی ہے ۔ اسی سلسلے میں روم میں آباد پاکستانی بھی اس سرگرمی میں حصہ لے رہے ہیں ۔ روم کی مشہور شخصیت عبدالرحمان نے اٹلی کے سنٹرل بائیں بازو کے ممبر Giovannettiکے لیے کمپین کا عہد کیا ہے ۔ الکیشن کمپین کے سلسلے میں گزشتہ روز روم کے پاکستانی ریسٹورنٹ کمشیر میں جوانیتی کو ایک شاندار اعشائیہ دیا گیا اور انہوں نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر وہ لاسیو ریجن کے کونصلر منتخب ہوگئے تو انکی کوشش ہوگی کہ وہ غیر ملکیوں کے لیے عمدہ قانون بنائیں اور خاص طور پر پاکستانی کمونٹی کے مسائل حل کریں ۔ میزبان عبدالرحمان نے اپنے اثر و رسوخ کے ساتھ روم میں آباد مختلف ممالک کے ان غیر ملکیوں کو دعوت دی جو کہ اٹلی میں کافی عرصے سے آباد ہیں اور اٹالین شہریت رکھتے ہوئے ووٹ کاسٹ کرتے ہیں ۔ عبدالرحمان نے کہا کہ ہم بعض پاکستانی ووٹ تو ڈالتے ہیں لیکن اب وقت آگیا ہے کہ کمونٹی کے تمام اٹالین شہری اپنے آپ کو منظم کریں اور اپنی آواز پیدا کریں ۔ ضروری ہے کہ ہم اس ملک میں سیاسی طور پر بھی ایکٹو ہوں ۔ عام طور پر ہماری کمونٹی پاکستان کے معاملات میں مصروف رہتی ہے اور اٹالین معاملات کو نظر انداز کردیتی ہے ۔ اسی سلسلے میں ہم نے روم میں آباد پاکستانیوں کو دعوت دیتے ہیں کہ وہ جوانیتی کو ووٹ دیں کیونکہ یہ ایسے لیڈر ہیں ، جنہوں نے پاکستانی کمونٹی کی دعوت قبول کی ہے اور ساتھ دینے کا عہد کیا ہے ۔ جوانیتی روم کے ایک گاؤں روکا پریورا میں سرجیکل ڈاکٹر ہیں اور اپنے علاقے میں کئی بار کونصلر اور میئر منتخب ہو چکے ہیں ۔ انکی ایمانداری، خلوص اور عوام سے محبت کے جذبے کی بدولت ہم نے انہیں ووٹ دینے کا عہد کیا ہے ۔ کشمیر ریسٹورنٹ کی اس دعوت میں مراکش ، یوکرائن، مصر، مونتے نیگرو اور دوسرے ممالک کے اٹالین شہری موجود تھے ۔ پاکستانی کمونٹی کی جانب سے نصیر راؤ، جعفر حسین اور اعجاز احمد کے علاوہ دوسرے اٹالین مہمانان گرامی موجود تھے ۔ جوانیتی کو ووٹ ڈالنے کے لیے آپ کو سیاسی پارٹی Centro Democratico per Zingarettiپر کراس لگانا ہوگا اور اسکے بعد ساتھ ہی جوانیتی کا نام Giovannettiلکھنا ہوگا ۔اگر آپ چاہیں تو براہ راست جوانیتی سے رابطہ کرسکتے ہیں اور انکی سیاسی سرگرمیوں کے بارے میں اور ان سے تعاون کرنے کے سلسلے میں خود بات چیت کرسکتے ہیں ۔ انکا ای میل اور موبائل درج زیل ہے ۔

Giovannetti Mob: 335.6789326  email: یہ ای میل پتہ اسپیم بوٹس سے محفوظ کیا جارہا ہے، اسے دیکھنے کیلیے جاوا اسکرپٹ کا فعّال ہونا ضروری ہے

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

وزارت داخلہ نے امیگریشن کی درخواستوں کی نوعیت بیان کردی

روم۔ 11 فروری 2013 ۔۔۔۔ اٹلی کے کافی پاکستانی جنہوں نے امیگریشن میں درخواستیں جمع کروا رکھی ہیں ، وہ امیگریشن کی نوعیت کے بارے میں کافی سوالات کرتے رہتے ہیں ، ان کے جواب کے لیے وزارت داخلہ کی امیگریشن کی خبر حاضر ہے ۔ اب تک 10 ہزار غیر ملکیوں کی درخواست قبول کرلی گئی ہے اور وہ جیب میں پرمیسو دی سوجورنو ڈال سکتے ہیں ۔ اسکے بعد وہ مالکان اور نجی ادارے جنہوں نے لوازمات پورے نہیں کیے ، ان کے غیر ملکی ملازموں کی درخواستیں مسترد کردی گئی ہیں اور انکی تعداد بھی 10 ہزار کے قریب ہے ۔ یاد رہے کہ 15 اکتوبر 2012 تک ایک لاکھ 35 ہزار درخواستیں جمع کروائی گئی تھیں ، وزارت داخلہ نے 4 مہینوں بعد پہلی رپورٹ شائع کی ہے ۔ کل تک 50 ہزار درخواستوں پر کام مکمل ہو چکا تھا ، اس رپورٹ کو آپ خبر کے آخر میں بھی پڑہ سکتے ہیں ۔ اب تک 10 ہزار درخواستوں کے مالک اور ملازم تھانے میں جا کر contratto di soggiornoپر دستخط کر چکے ہیں اور انکی پرمیسو دی سوجورنو بننے کے لیے چلی گئی ہے ۔ یہ غیر ملکی اب ریگولر غیر ملکی بن گئے ہیں ، جن کے پاس اٹلی میں رہنے کے لیے قانونی جواز موجود ہے ۔ اب تھانے نے 8 ہزار دوسری درخواستوں والوں کو بھی حاضر ہونے کے لیے کہا ہے ، اس کے علاوہ 20 ہزار غیر ملکیوں کو convocazioneیعنی حاضر ہونے کے لیے کہا گیا ہے اور جلد انہیں ملاقات کی تاریخ بھی جاری کردی جائے گی ۔ 6 ہزار غیر ملکیوں کو درخواست کے لوازمات پورے کرنے کے لیے کہا گیا ہے ، جن کی قسمت آزمائی ابھی ہونی ہے ۔ ان مالکان اور ملازمین کے لیے لازمی ہو گا کہ یہ Sportello Unicoیا تھانے کے لوازمات پورے کریں ورنہ انکی درخواست مسترد یا کینسل کردی جائے گی ۔ اب تک 50 ہزار درخواستوں پر کام مکمل ہوا ہے اور ان میں سے 10 ہزار درخواستیں مسترد کردی گئی ہیں ، اس سے پتا چلتا ہے کہ اس امیگریشن میں درخواستیں مسترد ہونے کا رجحان بلند ہے ۔ جب مزید درخواستوں پر کام کیا جائے گا تو صاف ظاہر ہے کہ مسترد ہونے والے کافی ہونگے ۔ یاد رہے کہ اس امیگریشن میں اکثر ایسے لوازمات تھے ، جن کیوجہ سے درخواستیں مسترد ہونی لازمی ہیں ۔ اس امیگریشن نے اٹلی میں موجود غیر قانونی امیگرنٹس کو ختم کرنے کے لیے کوئی اہم کردار ادا نہیں کیا ۔ وزارت داخلہ کی یہ رپورٹ قومی لیول پر مبنی ہے لیکن جب صوبوں اور شہروں کا اندازہ لگایا جائے گا تو صورت حال مختلف ہو گی ۔ روم کے تھانے کے ڈائریکٹر Fernando Santorielloنے کہا کہ تھانے اور صوبے کے دفتر Direzione Territorialeنے اب تک ساڑھے تین ہزار درخواستوں پر اپنی رائے دی ہے ۔ ڈیڑہ ہزار درخواستوں کو ہم نے قبول کرتے ہوئے انکے لیے پرمیسو دی سوجورنو جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، ایک ہزار درخواستوں پر لوازمات پورے کرنے کے لیے کہا گیا ہے اور یا پھر انکی درخواست مسترد کرنے کے لیے کہا ہے ۔ باقی مانندہ درخواستوں کے لیے حاضر ہونے کا حکم جاری کردیا گیا ہے ۔ تھانے کے ڈائریکٹر نے کہا کہ ہم نے اب تک کسی بھی درخواست کو مکمل طور پر مسترد کرنے کے لیے نہیں کہا ۔ تمام درخواستوں پر یہ حکم لکھا گيا ہے کہ آپ اپنے لوازمات پورے کریں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ درخواستیں جو کہ مکمل ہیں ، ان پر کام جلد کیا جا رہا ہے لیکن تمام درخواستوں پر کام ختم کرنے کے لیے کافی وقت لگ جائے گا ۔ تحریر، ایلویو پاسکا

 

 

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com

پاکستان ایمبیسی روم جانے کا طریقہ کار

روم۔ 18 مارچ 2012 ۔۔۔ وہ پاکستانی خواتین و حضرات جو کہ روم میں موجود پاکستانی ایمبیسی میں اسٹیشن سے تشریف لانا چاہتے ہیں ، ان سے گزارش ہے کہ وہ مندرجہ زیل طریقہ کار استعمال کریں ۔

اسٹیشن Terminiسے پیاسا منچینی یا Piazza Manciniتک آپ بس نمبر 910 حاصل کریں گے ۔ اسکے بعد پیاسا منچینی سے بس نمبر 446،301،911 ( ان میں سے ایک بس حاصل کرتے ہوئے ) آپ پیاسا جوکی دیلفیچی یا Piazza Giochi Delficiپر اتریں گے ۔ اسکے بعد 7 منٹوں کا پیدل سفر کرتے ہوئے آپ ایمبیسی کے گیٹ پر پہنچ جائیں گے ۔ ایمبیسی کی سڑک کا نام Via Riccardo Zandonai 84  ہے ۔ یاد رہے کہ 2005 تک ایمبیسی کا گیٹ دوسری سڑک Via Della Camilluccia 682  کی طرف ہوا کرتا تھا ، چند ناگزیر وجوہات کی بنا پراسے بند کر دیا گیا تھا ۔ اس لیے آپ سے گزارش ہے کہ آپ ہمیشہ قونصلر سیکشن کے معاملات کے لیے Via Riccardo Zandonai 84پر تشریف لائیں ۔ وہ خواتین و حضرات جو کہ گاڑی کے زریعے آئيں گے ، انہیں اسی سڑک پر پارکنگ بھی مل جائے گی ۔ یہاں پارکنگ کرنے کی کوئی قیمت ادا نہیں کی جاتی ۔ تصویر میں پاکستانی ایمبیسی کا ایک منظر

 

Joomla Templates and Joomla Extensions by ZooTemplate.Com